Today: Wednesday, November, 14, 2018 Last Update: 11:10 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

آگرہ تبدیلئ مذہب معاملہ

 

دھرم جاگریتی منچ کاکلیدی ملزم نند کشور والمیکی گرفتار

آگرہ، لکھنؤ، 16 دسمبر (یو این آئی) اترپردیش پولس نے آگرہ تبدیلی مذہب معاملہ کے کلیدی ملزم نند کشور والمیکی کو آج گرفتار کرلیا۔ اس کا تعلق دھرم جاگریتی منچ سے ہے اور وہ گزشتہ ہفتہ سے مفرر تھا۔ آگرہ کے سینئر پولس سپرنٹنڈنٹ (ایس ایس پی) شالبھ ماتھر نے آج یہاں کشور والمیکی کو گرفتار کئے جانے کی تصدیق کی ۔انہوں نے بتایا کہ فی الحال کشور والمیکی کو ہری پروت تھانہ میں رکھا گیا ہے اور آج اس کو عدالت کے سامنے پیش کیا جائے گا۔ تاہم، دھرم جاگریتی منچ کے دوسرے لیڈروں نے دعوی کیا کہ والمیکی نے پولس کے سامنے خودسپردگی کی ہے۔ اطلاعات کے مطابق ریاستی پولس نے ایٹہ اور یوپی بہار سرحد پر واقع ضلع کشی نگر کے متعدد مقامات پر دھرم جاگریتی منچ کی سرگرمیوں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے اس کے دو لیڈروں کو گرفتار کیا ہے۔ مسٹر ماتھر نے بتایا کہ نند کشور والمیکی کے علاوہ چند دیگر لوگوں کو بھی گرفتار کیا ہے۔ لیکن انہوں نے ان کا نام ظاہر کرنے سے انکار کردیا۔ واضح رہے کہ نند کشور والمیکی اور دھرم جاگریتی منچ کے علاقائی صدر راجیشور سنگھ جنہوں نے مل کر گزشتہ 7 دسمبر کو آگرہ میں تبدیلی مذہب کا پروگرام گھر واپسی کا ہتمام کیا تھا، وہ پچھلے کئی دنوں سے فرار تھے۔ ریاستی پولس نے والمیکی پر 12 ہزار روپے انعام کا اعلان کیا تھا اور اس کی جائدادیں بھی ضبط کرلیا تھا۔ دریں اثناء وشو ہندو پریشد (وی ایچ پی) اور دیگر ہندو تنظیموں نے علی گڑھ، کشی نگر، غازی پور اور ریاست کیدیگر مقامات پر اس ماہ ہونے تبدیلی مذہب کے پروگراموں گھرواپسی مہم کو ملتوی کرنے کا اعلان کیا ہے۔ دوسری جانب ریاستی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی ریاستی اکائی نے دھرم جاگریتی منچ کے رضاکاروں کے خلاف حکومت کی کارروائی پر محتاط رد عمل ظاہر کیا ہے۔ بی جے پی کے ترجمان وجے بہادر پاٹھک نے آج یہاں کہا کہ ریاستی حکومت کو اس سلسلے میں کسی کے خلاف کارروائی کرتے وقت قانون کی پابندی کرنی چاہئے، تاہم، اس مسئلے کا سیاسی فائدہ اٹھانے کیلئے حکومت کو ئی جانبداری نہیں کرنی چاہئے۔ پولس نے نند کشور والمیکی اور راجیشور کو دبوچنے کے لئے 14 دسمبر کو ضلع ایٹہ کے متعدد مقامات پر چھاپہ ماری کی مگر اس کو گرفتار نہ کرسکی، تاہم، پولس نے اس کے 19 سالہ بیٹے راہل اور آر ایس ایس کے کارکن کرشنا کمار کو گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کرلی تھی۔ اس دورا ن پولس کو پتہ چلا ہے کہ نند کشور والمیکی کا پس منظر ایک ہسٹری شیٹر کا ہے اور وہ شراب کی کالا بازاری کے الزام جیل بھی جاچکا ہے اور 2011 میں ضلع شاہ گنج میں اس کے خلاف گینگسٹر ایکٹ کے تحت کیس بھی درج کیا گیا ہے۔ پولس کیمطابق نند کشور والمیکی بی جے پی کے براج علاقائی یونٹ کا رکن ہے اور وہ 2012 میں پنچایتی الیکشن بھی لڑا تھا۔ آگرہ میں 7 دسمبر کو تبدیلی مذہب کا پروگرام منعقد کرانے پر اس کیخلاف تعزیرات ہند (آئی پی سی) کی دفعہ 153 اور 415 کے تحت مقدمہ درج کرایا گیا ہے۔

 

...


Advertisment

Advertisment