Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 12:38 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سہارنپور میں آر ٹی او دفتر پر دلالی کا بازار گرم

 

لائسنس بنوانے کے خواہش مند پریشان،محکمہ کے موجودہ حالات انتہائی خراب ہونے سے عوام کو پریشانیوں کا سامنا ، انتظامیہ افسران انجان

ایس ایچ حسین

سہارنپور،26ستمبر(ایس ٹی بیورو)سہارنپور آر ٹی او محکمہ میں بدعنوانی کے چلتے عوام کو روزانہ دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے نئے گاڑی رجسٹریشن اور وی آئی پی نمبر حاصل کرنے کے علاوہ ڈرائیونگ لائسنس بنوانے کے لئے لوگوں کو ایجنٹ کی مدد لینا پڑ رہی ہے ۔ بغیر پیسہ کے آر ٹی او میں کوئی کام نہیں کیا جاتا افسر غیر قانونی دھندے کو فروغ دینے میں لگے ہیں۔ افسران کی لاپرواہی اور محکمہ میں رشوت خوری عام ہونے کی وجہ سے عام آدمی سخت پریشان ہیں افسران کی من مانی کی وجہ سے لوگوں کے درمیان آر ٹی او دفتر کے بارے میں مختلف رائے ہیں زیادہ تر کا کہنا ہے کہ آرٹی او دفتر میں کسی بھی کام کا کوئی اصول نہیں رہ گیا ہے وہاں صرف پیسہ اور ایجنٹ ہی چلتے ہیں۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ بدعنوانی کی وجہ سے آر ٹی او دفتر میں کوئی کام وقت پر نہیں ہوتا ہے ۔ انکا کہنا ہے کہ دفتر میں کوئی کام بغیر سہولت فیس کے نہیں ہوتا ہے افسر رسم پوری کرنے کے باوجود کاغذات چیک کرنے تک کو تیار نہیں ہوتے ہیں لرنگ لائسنس بنوانے میں تقریبا 500 روپے خرچ ہو رہے ہیں جبکہ مکمل لائسنس کی فیس ایجنٹ 1500 سے 2000 وصول رہے ہیں ڈرائیونگ لائسنس کا سادہ فارم تک باہر دلال سے 10 روپے میں لینا پڑتا ہے پتہ نہیں حکومت یہاں کے بدعنوانی پر روک لگانے کو کوئی قدم کیوں نہیں اٹھاتی ہے۔ غورطلب رہے کہ حکومت آر ٹی او دفاتر میں بدعنوانی کو ختم کرنے کے مقصد سے نئی نظام شروع کرنے کی تیاری میں ہے نظام کو لاگو کئے جانے کی شکل بھی تیار ہو رہی ہے، اس سے قبل ٹرانسپورٹ محکمہ کی موجودہ طریقہ کار کا معائنہ کرنے پر اتنے انکشافات ہو رہے ہیں کہ لگتا ہے کہ مکمل محکمہ ہی اوپر سے نیچے تک بدعنوانیوں کے دلدل میں ڈوبا ہوا ہے ۔ ٹرانسپورٹ محکمہ کی کارکردگی کا معائنہ کرنے پر پتہ چلا کہ محکمہ نہ صرف حکومت کو کروڑوں کا چونا لگا رہا بلکہ غیر قانونی کاموں کو فروغ دینے کے ساتھ گاڑی مالکان کا بھی جم کر استحصال کر رہا ہے محکمہ کا آن لائن نظام آج تک صحیح نہیں ہو پایا ہے اور عام آدمی کے محکمہ کے چکر کاٹنے پر مجبور ہو کر رہ گیا ہے ۔ محکمہ میں افسر و ملازم کی پہنچ سیاست سے لے کر حکومت کی انتظامیہ میں اتنی مضبوط ہے کہ چھونے تک کی ہمت نہیں کی جاتی ہے یہی وجہ ہے کہ محکمہ میں پھیلی بدعنوانی پر آج تک روک نہیں لگ پائی ہے ۔ گاڑیوں کے ٹیکس اور دیگر الزامات کے علاوہ رجسٹریشن والا شروع کئے گئے آن لائن نظام بیکار ہو کر رہ گیا ہے کئی ماہ قبل شروع کئے گئے اس نظام میں کوئی بھی درخواست نہیں کی گئی ہے عوام کا تو یہاں تک کہنا ہے کہ محکمہ کی ویب سائٹ ہی نہیں کھل پاتی ہے۔ جبکہ محکمہ میں کسی بھی قسم کی گاڑی کی فیس اور رجسٹریشن ہونے والے کام مکمل کرنے کا وقت مقرر ہے گاڑی فیس، این او سی، ڈی ایل ، نئے اور وی آئی پی نمبر رجسٹریشن مقرر وقت کی مدت میں کرنے کی تجویز ہے لیکن کسی بھی صورت میں اسے مکمل نہیں کیا جا رہا ہے ۔ قریب 5 سال قبل تمام گاڑیوں کو آن لائن کرنے کا منصوبہ شروع کیا گیا تھا لیکن سہارنپور آر ٹی او دفتر میں آج تک رجسٹرڈ گاڑیوں کو اپ کرنے کا کام مکمل نہیں کیا گیا ہے محض نئے رجسٹرڈ ہونے والے گاڑیوں کا ہی ریکارڈ ہی کمپیوٹرائزڈ کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں نئے آر ٹی او رام لال کا کہنا ہے کہ ہیڈکوارٹر کی منصوبوں پر عمل کرایا جا رہا ہے وہ ابھی نئے آئے ہے اس لئے کہاں کمی آ رہی ہے، اس کی جانچ کرا بہتر کرانے کے ہر ممکن کوشش کی جائے گی ۔

...


Advertisment

Advertisment