Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 05:22 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

اترپردیش میں زبردست کہرے اور ٹھنڈسے معمولات زندگی درہم

 

لکھنؤ،10 دسمبر (یو این آئی) اترپردیش کے بیشتر علاقوں میں زبردست ٹھنڈ اور کہرہ ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ٹھنڈ سے کم از کم 11 لوگوں کی موت ہوئی ہے اور کہرے کے سبب ہونے والے حادثات میں 21 سے زائد لوگوں کے مارے جانے کی اطلاع ہے۔راجدھانی لکھنؤ،کانپور، بریلی، الہ آباد اور وارانسی سمیت ریاست کے کئی علاقوں میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت میں ایک سے چار ڈگری تک گراوٹ آئی ہے اور بیشتر علاقوں میں رات کا درجہ حرارت معمول سے 8 ڈگری تک کم ریکارڈ کیا گیا ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ 48 گھنٹوں کے دوران ٹھنڈ میں مزید شدت آنے کا اندازہ ہے ۔ بہرحال اس دوران کچھ علاقوں میں کہرے کا اثر فوری طورپر رْک سکتا ہے۔گزشتہ تقریباً ایک ہفتہ سے خاص طورپر مشرقی اترپردیش میں پھیلا کہرہ آج راجدھانی لکھنؤ سمیت کئی علاقوں میں ایک بار پھر نظر آیا۔اس درمیان صبح سویرے کی ٹھنڈ اور کہرے سے ریاست میں ریل اور سڑک آمدورفت متاثر ہوئی ہیں جبکہ طیاروں کی پرواز پر بھی کہرے کا وسیع اثر نظر آرہا ہے۔محکمہ موسمیات کے ذرائع نے آج یہاں بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران لکھنؤ، کانپور، بریلی، فیض آباد اور گورکھپور ڈویزن میں رات کے درجہ حرارت میں قابل ذکر گراوٹ آئی ہے جبکہ میرٹھ اور وارانسی میں کم از کم درجہ حرارت معمول سے کم رہا۔امروہہ سے موصول ہونے والی رپورٹ کیمطابق گجرولہ اور منڈی دھنورا علاقوں میں کہرے کی وجہ سے مختلف سڑک حادثات میں دو افراد کی موت اور دو دیگر زخمی ہوگئے۔بجنور کے نگینہ۔ دھام پور قومی شاہراہ نمبر 24 پر کل رات زبردست کہرے کی وجہ سے ایک وین اور ٹرک کی ٹکر میں سات لوگوں کی موت ہوگئی۔ایٹہ کے مرہچی علاقہ میں آج صبح روڈویز کی ایک بس اور بولیرو کی ٹکر میں تین لوگوں کی موت ہوگئی۔ بارہ بنکی کے رام سنیہی گھاٹ علاقے میں صبح کار اور نامعلوم گاڑی کے ٹکراجانے سے چار لوگوں نے موقع پر ہی دم توڑ دیا۔زبردست ٹھنڈ کی وجہ سے بستی میں دو، بلیا میں ایک، سدھارتھ نگر میں تین، امروہہ میں دو، مرزا پور ، بلند شہر اور اناؤ میں ایک ایک شخص کے مارے جانے کی خبر ہے۔ اس کے ساتھ ہی اس موسم میں ٹھنڈ کی وجہ سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 44 ہوگئی ہے۔کہرے کی وجہ سے دہلی ۔ ہوڑہ ٹرین روٹ پر طویل مسافت کی 30 سے زائد ٹرینیں 18 گھنٹے کی تاخیر سے چل رہی تھیں۔ نوچنڈی، ایکسپریس، سیالدہ ایکسپریس، شرم جیوی ایکسپریس، کاشی وشوناتھ ایکسپریس، سدبھاؤنا ایکسپریس، امرپالی ایکسپریس، فرکا ایکسپریس اور کسان میل سمیت کئی ٹرینیں آج بھی لکھنؤ کے چار باغ ریلوے اسٹیشن سے کافی تاخیر سے گزریں۔ٹرینو ں کی تاخیر سے مسافروں کو کافی پریشانی ہورہی ہے کئی مسافروں نے ریلوے پلیٹ فارموں کو ہی رین بسیرا بنا لیا ہے۔ یومیہ مسافروں کو بھی ٹرینوں کے تاخیر سے چلنے کی وجہ سے پریشانی کا سامنا ہے۔کہرے کی وجہ سے ریاست کے کئی مقامات پر سڑک آمدورفت بھی متاثر ہوئی ہے اور گاڑیاں دن میں بھی ہیڈلائٹ چلاکر آہستہ آہستہ چل رہی ہیں۔کہرے کی وجہ سے فضائی خدمات بھی بری طرح متاثر ہیں ۔

...


Advertisment

Advertisment