Today: Wednesday, September, 19, 2018 Last Update: 10:54 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

کانگریسوں نے گھوٹالوں کا نیا ریکارڈ قائم کیا: مفتی محمد سعید

 

سری نگر،10 دسمبر (یو این آئی) پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے سرپرست اعلیٰ مفتی محمد سعید نے بدھ کے روز کہا کہ قومی سطح پر کانگریس نے اپنے ایجنڈہ کو طاق پر رکھ دیا تھا تو ریاست کے کانگریسی وزراء نے لوٹ کھسوٹ اور گھوٹالوں کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا جس کے نتیجہ میں بی جے پی کو جموں کشمیر میں قدم جمانے کے لئے جگہ مل گئی۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کو تاریخ کے بد ترین دور میں پہنچانے کے لئے نیشنل کانفرنس اور کانگریس برابر کے ذمہ وار ہیں ۔ مفتی سعید نے کہا کہ کانگریس نے بی جے پی کا نظریاتی طور پر مقابلہ کرنے کی کوشش کرنے کے بجائے اقتدار میں بنے رہنے کے لئے اپنے اصولوں کے ساتھ پہ در پہ سمجھوتے کئے انجام کار پارٹی قومی سطح پر زوال پذیر ہوگئی تو ریاست میں یہ عمر عبداللہ کے ہاتھوں میں کھلونا بن کر رہ گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ عمر عبداللہ راہل گاندھی کی پشت پناہی پر ذاتی طور تمام مسائل سے نکلتے رہے لیکن ریاست کی تعمیر وترقی کے لئے کوئی ٹھوس قدم نہیں اٹھایا جا سکا۔ وہ جنوبی کشمیر کے حلقہ انتخاب ڈورو میں منعقدہ عوامی ریلیوں سے خطاب کررہے تھے۔ مفتی نے کہا کہ پچھلے چھ برس کے دوران نیشنل کانفرنس اور کانگریس کارکنوں نے مل کر لوٹ کا بازار گرم کر رکھا تھا لیکن یہ حکومت پوری طور پر بے سمت تھی کیوں کہ اقتدار کی ہوس میں مخلوط سرکار میں شامل جماعتوں نے کوئی بھی کم از کم مشترکہ پروگرام تک ترتیب نہ دیا تھا۔ مفتی سعید نے اس بات کو حیران کن قرار دیا کہ حکمران اتحاد میں شامل نیشنل کانفرنس اور کانگریس ایک دوسرے کے خلاف انتخابی میدان میں صف آراء ہیں لیکن انہوں نے کابینہ کو تحلیل کرنے کے بجائے آخری دن تک انتظار کے مزے لوٹنے کا فیصلہ کر رکھا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ کانگریس اعلیٰ کمان ہی تھی جس نے 2010میں حکومت کی طرف سے سینکڑوں معصوم کشمیری نوجوانوں کے قتل عام اور ہزاروں کو جھوٹے مقدمات میں پھنسانے کے بعد بھی عمر عبداللہ کو کلین چٹ دے دی تھی۔ پی ڈی پی سرپرست نے بتایا کہ کانگریس نے بی جے پی کی لہر کے مقابلہ کے لے فرقہ پرستی کا کارڈ کھیلا اور اس کے افضل گورو کو قربانی کا بکرا بنایا گیا ، 2010اور 2011میں کانگریس کی طرف سے کئے گئے احسانات کا بدلہ چکاتے ہوئے عمر عبداللہ نے افضل گورو کو قبل از وقت پھانسی پر لٹکائے جانے میں کانگریس کو پورا تعاؤن دیا حالانکہ اس سے ہندوستان کی سیکولر شبیہہ بھی خراب ہو کر رہ گئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اور نیشنل کانفرنس نے حقیر سیاسی مفادات کے لئے نہ صرف ہندوستان کے وقار کو دھبہ لگا یا بلکہ گورو کے اہل خانہ کو آخری ملاقات کا موقعہ نہ دے کر قانون کی بھی دھجیاں اڑا دیں ٹھیک اسی طرح 2011میں حاجی یوسف قتل معاملہ میں کانگریس کے ایک وزیر نے عمر عبداللہ کی نیشنل کانفرنس لیڈروں سے بھی بڑھ کر حمایت کی تھی۔ مفتی نے کہا کہ کانگریس کے اس دعویٰ کو خام خیالی قرار دیا کہ اس کی حمایت کے بغیر کوئی بھی پارٹی ریاست میں حکومت تشکیل نہیں دے سکتی کیوں کہ اب ریاستی عوام نے کانگریس کی اس چال کو اچھی طرح سمجھ لیا ہے اسی لئے اب کی بار وہ پی ڈی پی کو واضح اکثریت دے رہے ہیں تا کہ ریاست کی ہمہ گیر ترقی کو یقینی بنایا جا سکے ۔ مفتی نے کہا کہ پی ڈی پی ایک ایسی حکومت تشکیل دینے کی خواہاں ہے جس میں سماج کے تمام طبقہ جات کی امنگوں کو شامل کیا گیا ہو۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی ایک ایسے پلیٹ فارم کے طور پر قائم ہو گئی ہے جس کے لئے انہوں نے پوری زندگی جد و جہد کی تھی تا کہ مختلف مذاہب ، خطوں اور مکاتیب فکر کے بیچ ہم آہنگی پیدا ہونے کے ساتھ ساتھ جموں کشمیر کو اس کے تشخص اور خصوصی درجہ کے ساتھ ایک فلاحی اور ماڈل ریاست بنایا جا سکے ۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست کی تعمیر و ترقی کے نئے باب کے آغاز کے لئے پی ڈی پی مختلف خطوں کے درمیان روابط کو مضبوط بنانے پر خصوصی زور دے گی اور اننت ناگ سنتھن کشتواڑ سڑک کو بارہ ماہ ٹریفک کے قابل بنانے کے ساتھ ساتھ وادء چناب کو کشمیر کے ساتھ جوڑنے کے لئے کپرن دیسہ ڈوڈہ سڑک کو ترجیحی بنیادوں پر تعمیر کیا جا ئے گا۔ اس کے علاوہ ان علاقوں کے سیاحتی وسائل کو بروئے کار لاکر لوگوں کی مالی حالت بہتر بنانے اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لئے قدم اٹھائے جائیں گے۔ اس سے قبل مفتی سعید نے بجبہاڑہ اور اننت ناگ حلقہ جات کا دورہ کر کے وہاں کئی وفود کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔اننت ناگ ضلع بار ایسو سی ایشن کے ساتھ ملاقات کے دوران انہوں نے اننت ناگ کی ہمہ جہت ترقی کا یقین دلایا ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment