Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 10:43 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

25دسمبر کو اٹل جی کیلئے ہوسکتا ہے بھارت رتن کا اعلان


سرکار اور اپوزیشن دونوں نے کی وکالت ، مایا نے بڑھایا کانشی رام کا نام

نئی دہلی،10دسمبر(ایس ٹی بیورو) سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کو مرکزی حکومت بھارت رتن سے نواز سکتی ہے۔ ذرائع کے مطابق یوم جمہوریہ کے موقع پر 26 جنوری کو انہیں اس اعزاز سے نوازا جا سکتا ہے۔ ویسے بی جے پی اور اس کی حامی جماعتیں طویل عرصے سے واجپئی کو یہ اعزاز دیے جانے کا مطالبہ کرتی رہی ہیں۔ اپوزیشن کے لیڈروں نے بھی پارٹی لائن سے اوپر اٹھ کر انہیں ہندوستان کے اس اولین احترام کا مستحق قرار دیا ہے۔ذرائع کے مطابق، مرکزی حکومت 25 دسمبر کو واجپئی کے 90 ویں جنم دن کے موقع پر اس کا اعلان کر سکتی ہے۔ بی جے پی اور انکے ساتھی طویل عرصے سے اس کا مطالبہ کرتے رہے ہیں۔ مرکز میں این ڈی اے کی حکومت بننے کے بعد اس کی مانگ اور تیز ہو گئی تھی۔
بی جے پی لیڈر مرلی منوہر جوشی نے کہا کہ اٹل جی سے مناسب شخص کون ہو سکتا ہے۔ اٹل جی کو بھارت رتن کا احترام ملنا ہی چاہئے۔ شیوسینا نے بھی بھارت رتن کیلئے اٹل جی کی حمایت کی ہے۔ اننت گیتے نے کہا کہ اٹل جی کو بھارت رتن ملنا ہی چاہئے۔ شیوسینا اس کی حمایت کرتی ہے۔ اٹل بہاری واجپئی این ڈی اے کے دور اقتدار میں وزیر اعظم تھے۔ سب سے پہلے وہ مئی 1996 میں 13 دن کیلئے وزیر اعظم بنے، پھر 1998 میں 13 ماہ کیلئے اس عہدے پر فائز ہوئے۔ بعد میں انہوں نے 1998 سے 2004 تک پانچ سال تک ہندوستان کے وزیر اعظم کی کرسی سنبھالی۔واجپئی کے ہی دور حکومت میں بھارت نے ایٹمی تجربہ کیا اور ملک کو ایٹمی طاقت والے ملک کے طور پر شناخت دلائی۔
اٹل جی کے سیاسی مخالفین نے بھی ان کو ملک کے سب سے زیادہ احترام کا مستحق قرار دیا ہے۔ سماج وادی پارٹی کے لیڈر رام گوپال یادو نے کہا کہ سابق وزیر اعظم اٹل جی کو بہت پہلے بھارت رتن ملنا چاہئے تھا۔ کانگریس لیڈر موتی لال ووہرا نے کہا کہ اٹل جی کو بھارت رتن ملے، اس میں اعتراض کس کو ہے۔ اٹل جی پی ایم رہے ہیں ، سب کو ساتھ لے کر چلتے رہے ہے۔ ان میں اور بہت سی خوبی ہے۔ وہ بھارت رتن کے حقدار ہیں۔جے ڈی یو لیڈر کے سی تیاگی نے کہا کہ اٹل جی بھارت رتن کے حقدار ہیں۔ انہوں نے اپنے فرض کو انجام دیا ہے۔ ان کو بھارت رتن ملتا ہے تو مجھے بہت خوشی ہوگی۔ میں کانشی رام ، چودھری چرن سنگھ کو بھی بھارت رتن دینے کا مطالبہ کرتا ہوں۔ بی ایس پی صدر مایاوتی نے بھی واجپئی کو اس اعزاز کا حقدار قرار دیا، لیکن ساتھ ہی پارٹی کے سابق صدر کانشی رام کو بھی یہ اعزاز دینے کا مطالبہ دہرایا۔
اٹل بہاری واجپئی، بھارت کی سیاست کے ایک ایسے لیڈر جنہیں 'بھارت رتن' دیئے جانے کا کوئی مخالفت نہیں کرے گا. لیکن اسی کے ساتھ کئی اور لیڈروں کو بھی یہ اعزاز دیے کی مانگ اٹھنے لگے گی اور سب کو مطمئن کر پانا حکومت کے لئے ممکن نہیں ہوگا۔

 

...


Advertisment

Advertisment