Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 01:55 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

انڈیا گیٹ سے وزیر اعظم صاف ہندوستان مہم کا آغاز کریں گے

 

وزیر اعظم نریندر مودی دو اکتوبر کو مہاتما گاندھی کی سالگرہ کے موقع پر دارالحکومت کے انڈیا گیٹ سے سوچھ بھارت مہم (صاف ہندوستان مہم) کا آغاز کریں گے، اسے عوامی تحریک بنانے کیلئے بچوں کے ساتھ پیدل مارچ بھی کریں گے اور لوگوں کو حلف بھی دلائیں گے

نئی دہلی، 25 ستمبر (یواین آئی) وزیر اعظم نریندر مودی دو اکتوبر کو مہاتما گاندھی کی سالگرہ کے موقع پر دارالحکومت کے انڈیا گیٹ سے سوچھ بھارت مہم (صاف ہندوستان مہم) کا آغاز کریں گے اور اسے عوامی تحریک بنانے کے لئے بچوں کے ساتھ پیدل مارچ بھی کریں گے اور لوگوں کو حلف بھی دلائیں گے۔اس موقع پر ملک بھر میں مرکزی حکومت کے دفتروں میں افسران اور اہلکاروں کو بھی صفائی مہم کے لئے حلف دلایاجائے گا۔ ریاستوں کو بھی اس دن اس مہم میں شامل ہونے کے لئے کہا گیا مگر ان کے لئے حلف لینے کو لازمی نہیں قرار دیا گیا ہے۔ شہری ترقیات کے مرکزی وزیر ایم ونیکیا نائیڈو نے آج یہاں صحافیوں کو صاف ہندوستان مہم کی علامت کا لوگوجاری کرتے ہوئے یہ اطلاع دی۔ اس لوگو میں مہاتما گاندھی جی کے عینک کو دکھایا گیا ہے جس میں 147سوچھ بھارت148 لکھا گیا ہے اور ساتھ ہی قومی ترنگے کو عینک سے جوڑا گیا ہے جس کے نیچے نعرہ 147 ایک قدم صفائی کی جانب لکھا گیا ہے۔ لوگوں کیلئے ایک ہزار 637 اندراجات اور نعرے کیلئے 5168 اندراجات موصول ہوئی تھیں۔ ان میں مہاراشٹر کے اننت کھسربردار کے لوگو کوسب سے اچھا لوگو قرار دیا کیا گیا اور گجرات کے راجدور کی محترمہ بھاگیہ شری سیٹھ کے نعرے کو عمدہ نعرہ قرار دیا کیا گیا۔ انہیں بالترتیب 50 ہزار اور 25 ہزار روپے کے انعام دیئے گئے۔مسٹر نائیڈو نے بتایا کہ 147سوچھ بھارت مشن148 کو پورے ملک میں عوامی تحریک کے طور پر چلایا جائے گا اور پہلے مرحلے میں دو اکتوبر سے 31 اکتوبر تک یہ مہم گاؤں اور شہروں میں چلے گی۔ انہوں نے بتایا کہ وزیر اعظم دو اکتوبر کو پہلے راج گھاٹ جائیں گے اور وہاں سے لوٹ کر انڈیا گیٹ پر اس مہم کو شروع کریں گے اور وہیں سے وہ لوگوں کو حلف بھی دلائیں گے اور بچوں کے ساتھ گاندھی جی کی طرح پیدل مارچ بھی کریں گے۔ انہوں نے بتایا کہ اس مہم کو شروع کرنے کی تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں اور آج سے دو اکتوبر تک اس مہم کو کامیاب بنانے کی سمت میں کام شروع ہو جائے گا۔مسٹر نائیڈو نے بتایا کہ تمام 740 رکن پارلیمان ، ریاستوں کے وزرائے اعلی، گورنروں اور میئر وغیرہ کو خط لکھ کر اس مہم میں شامل ہونے کی درخواست کی گئی ہے۔ دہلی میں ڈی ڈی اے، جل بورڈ، این ڈی ایم سی، پولیس، ریلوے، این ایس ایس اور این سی سی کو بھی اس مہم میں شامل ہونے کو کہا گیا ہے۔ اس کے علاوہ ہندوستان کے ایوان صنعت و تجارت (فکی) روٹری کلب، لائینس کلب۔ گایتری خاندان، رام رش مشن، پتنجلی یوگ، اچی ام وٹی پیٹھ جماعت ہند اور وشپ انڈیا، شریشری روی شنکر اور دھرما چاریوں، ش راچاریوں اور روحاگنی گروؤں کو بھی اس مہم میں شامل کیا گیا ہے۔مسٹر نائیڈو نے بتایا کہ ملک کے 4031 شہروں کے میئر کو اور مقامی اداروں کے چیئر مین کو بھی خط اور ای میل کیے گئے ہیں اور ضلع مجسٹریٹ کوبھی ہدایت دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ طالب علموں سے بھی کہا گیا ہے مگر جموں شمیر میں سیلاب کی وجہ اور ہریانہ اور مہاراشٹر میں الیکشن کی وجہ سے ضابطہ اخلاق نافذ ہونے کی وجہ سے ان ریاستوں کو اس مہم سے فی الحال الگ رکھا گیا ہے۔مسٹر نائیڈو نے بتایا کہ دو اکتوبر کو تمام مرکزی وزیر اپنے اپنے صوبوں میں انتخابی حلقوں میں صفائی مہم پر حلفیہ پروگرام میں حصہ لیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ شہروں میں اس مہم پر کل 66 ہزار کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ انہوں نے بتایا کہ اس مہم کے لئے ایک صفائی مہم فنڈ بھی بنایا گیا ہے جس میں کارپوریٹ دنیا، مرکزی حکومت اور ریاستی حکومتیں اور مقامی بلدیاتی اداریبھی خرچ کریں گے۔مرکزی دیہی ترقی کے وزیر نتن گڈکری نے کہا کہ 11 کروڑ 11 لاکھ گھروں میں اس مہم کے تحت بیت الخلا بنائے جائیں گے۔ پانچ سال میں اس صفائی مہم پر کل ایک لاکھ 34 ہزار کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ ہر گاؤں، پنچایتوں میں صفائی کی تحریک چلے گی اور 45000 گاؤں میں شمسی توانائی سے پانی دستیاب کرائی گئی ہے تاکہ ٹوائلٹ کام کر سکیں۔

...


Advertisment

Advertisment