Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 10:05 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

ہندوستان میں سرمایہ کاروں کا اعتماد بڑھا

 

عالمی سرمایہ کاروں میں سے 77 فیصد نے ایسوچم کے سروے تسلیم کیا کہ مودی کے دورہ سے یہ پیش رفت ہوئی
نئی دہلی، 8 دسمبر (یو این آئی) وزیراعظم نریندر مودی کے امریکہ آسٹریلیا اور جاپان کے دوروں سے ہندستان کے بارے میں سرمایہ کاروں کے خیالات میں تبدیلی آئی ہے اور وہ ہندستان کو سرمایہ کاری کے لئے فائدے مند اور مستحکم ملک سمجھنے لگے ہیں۔عالمی سرمایہ کاروں میں سے 77 فیصد نے ایسوچم کے سروے میں یہ بات کہی ہے۔ ایسوچم نے کثیر قومی کمپنیوں کا موڈ جاننے کے لئے غیر ممالک میں نئے دفاتر کھولے ہیں ان میں امریکہ اور آسٹریلیا بھی شامل ہے۔ یہ کمپنیاں وہ ہیں جو پہلے سے ہندستان میں موجود ہیں یا پھر سنجیدگی سے اس ملک میں سرمایہ لگانے پر غور کررہی ہیں۔ سروے میں کہا گیا ہے کہ 147ان فرموں کے اعلی سطحی عہدیداروں میں سے 71 فیصد نے ہندستان کو سرمایہ کاری کے لئے ابھرتے ہوئے مقامات میں سرفہرست رکھا ہے۔سروے میں 53 فیصد نے کہا کہ ہندستان سرمایہ کاری کے فروغ کے معاملہ میں چین سے بھی آگے نکل جائے گا کیونکہ چین سست پڑ رہا ہے اور ہندستان آگے نکل رہا ہے۔ جواب دینے والے 89 فیصد نے کہا کہ یہ ساری تبدیلی ہندستانی قیادت کی وجہ سے آئی ہے کیونکہ عالمی سرمایہ کاروں میں اعتماد پیدا ہوا ہے۔ ملک کے اندر مسلسل ترقی سے بھی یہ فضا بہتر ہوئی ہے۔اس میں کہا گیا ہے اس بات پر سبھی متفق ہیں کہ وزیراعظم نریندر مودی اپنی بات لوگوں تک پہنچانے کی صلاحیت کے حامل ہیں اور جو عالمی برادری کے ساتھ اس طرح باآسانی رابطہ قائم کرلیتے ہیں جس طرح کے اپنے ملک میں۔اسی طرح ان کے وعدوں پر بھی سرمایہ کاروں کو بہت بھروسہ ہے۔ 161 میں سے 73 فیصد نے جن کا تعلق امریکہ جاپان ، آسٹریلیا، سنگاپور، ملیشیا اور مشرقی وسطی سے ہے، کہا کہ مسٹر مودی نے تجارت کرنے کو سہل بنانے ، بنیادی ڈھانچے کو بہتر بنانے اور پالیسی کی رکاوٹیں دور کرنے کے جو وعدے کئے ہیں وہ انہیں پورا کریں گے۔جس طرح وہ ہر چھوٹی سے چھوٹی چیز پر توجہ دیتے ہیں اور جلد فیصلے کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اس سے بہت فرق پڑا ہے اور ہندستان پرکشش مقام بن گیا ہے۔جس طرح مسٹر مودی نے تجارتی سہولیات اور غذائی سلامتی کے بارے میں عالمی تجارتی تنظیم کے معاہدوں پر امریکہ کے ساتھ اختلافات کو دور کیا اس کی امریکہ میں بہت تعریف ہوئی۔ مسٹر مودی نے جس طرح امریکہ اور آسٹریلیا میں غیر مقیم ہندستانیوں کے ساتھ گہرا رابطہ قائم کیا اس سے ہندستان کے تارکین وطن ملک کے برانڈ ایمبسڈر بن گئے ہیں۔جاپان میں وزیراعظم کی قیادت کے بارے میں جن چیزوں کو سراہا گیا وہ بنیادی ڈھانچہ کے پروجیکٹوں کی ترجیحات ہیں جس میں ریلوے کی جدیدکاری شامل ہے۔ ریلوے کی وزارت میں سریش پربھو کے باعمل ہونے کی امیج بھی قائم ہوئی ہے۔آسٹریلیا سے ملی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آسٹریلیا وزیراعظم کے اسمارٹ شہر، گنگا کی صفائی اور شہری بنیادی ڈھانچہ کو بہتر بنانے جیسے مایہ ناز پروگرام میں شرکت کرنا چاہتے ہیں۔ مختلف ممالک کو جو پیغام ملا ہے وہ یہ ہے کہ نئی دہلی کی نئی حکومت دنیا کے ساتھ وسیع پیمانہ پر تعاون چاہتی ہے اور ہندستان کی کامیابی کی کہانی کو پھیلانا چاہتی ہے۔ آئندہ چند ماہ کے دوران یہ نتائج زیادہ واضح شکل میں سامنے آئیں گے تاہم مالیاتی منڈیوں میں اس کے نتائج پہلے ہی نظر آنے لگے ہیں۔ غیر ملکی سرمایہ آنے سے سینسیکس نئی بلندیوں کو چھورہا ہے دوسری طرف ڈالر یان جیسی بین الاقوامی کرنسیوں سے آگے نکل رہا ہے ہندستان کی روپیہ کی قیمت کم نہیں ہورہی ہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment