Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 10:43 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

متنازعہ بیانات دینے والوں کو کابینہ سے برخواست کریں وزیراعظم

 

ایس سی کمیشن کے قومی رابطہ کار ڈاکٹر تاج الدین انصاری کا مطالبہ*شسما کا بیان ملک کے آئین پر بدنما داغ : مولانا معظم

نئی دہلی،8دسمبر( ایس ٹی بیورو ) بھگود گیتا کو قومی کتاب کا درجہ دئے جانے کے مرکزی وزیرخارجہ شسما سوراج کے مطالبہ پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے شاہی جامع مسجد فتحپوری کے نائب امام، سنٹرل حج کمیٹی و دہلی وقف بورڈ کے سابق رکن مولانا محمدمعظم احمد نے آج کہا ہے کہ شسما سوراج کی امیج ایک صاف ستھری سیاست داں کیساتھ ساتھ ایک سیکولر اور غیر متنازعہ سیاست داں کی رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ’مجھے حیرت ہورہی ہے کہ ایک سیکولر ملک کی ایک سیکولر سیاست داں شسما سوراج کے منہ سے ایک ایسا بیان آیا ہے جس نے لوگوں کو دانتوں تلے انگلی دبانے کیلئے مجبور کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا شسما سوراج اچھی طرح جانتی ہیں کہ ہندوستان ایک سیکولر ملک ہے ۔ یہاں ایسی کسی بھی چیز کیلئے کوئی جگہ نہیں ہے جو اس کے سیکولر ڈھانچہ پر بدنما داغ اور دھبہ ہو ۔انہوں نے کہا کہ آج شسما سوراج گیتا کو قومی کتاب کا درجہ دینے کا مطالبہ کررہی ہیں ، کل کوئی قرآن کو قومی کتاب کا درجہ دینے کا مطالبہ کرسکتا ہے ۔ اسی طرح کوئی بائبل تو کوئی کسی دوسری مذہبی کتاب کو قومی کتاب کا درجہ دینے کا مطالبہ کرسکتاہے ۔ انہوں نے کہا کہ مذہبی کتابوں کی روح پامال کرنے اور ان پر سیاست کرنے کی کسی کو اجازت نہیں ہونی چاہئے ۔او ر اس کیخلاف سخت سے سخت قانون بننا چاہئے ۔
مولانا معظم احمد نے کہا کہ جب بی جے پی مرکز میں آئی تھی تبھی اس بات کا خدشہ ظاہر کیا جارہا تھاکہ یہ ملک کے سیکولر ڈھانچہ سے چھیڑ چھاڑ کریں گے ۔ انہو ں نے کہا کہ کہیں شسما جی کا یہ بیان اسی کی شروعات تو نہیں ہے ۔ مولانا معظم نے کہا کہ اس سے قبل سادھوی نرنجن جیوتی رام زادہ اور حرام زادہ جیسا بیان دے کر ملک کے وقار کو ٹھینس پہونچا چکی ہیں ۔ مولانا کا کہناتھا کہ وزیراعظم کو فوراً اس مسئلہ پر صفائی پیش کرنی چاہئے اور وزیر کو وجہ بتاؤ نوٹس جاری کیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر آئینی عہدوں پر بیٹھے لوگ ہی آئین کے وقار کو ٹھینس پہونچائیں گے تو پھر ملک کے مستقبل کے بارے میں بہ آسانی اندازہ لگایا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ’ وزیراعظم نے اپنے غیر ملکی دوروں میں گیتا دینے کی جو شروعات کی ہے وہ بھی سیکولر ملک کے وقار پر بدنما داغ ہے ۔ انہیں بھی چاہئے کہ اس پر اپنا موقف پیش کریں ۔اور مذہبی کتابوں کو تنازعات سے دور رکھیں ۔ادھر ایس سی کمیشن کے قومی رابطہ کار ڈاکٹر تاج الدین انصاری نے شسما سوراج سے معافی مانگنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’ وزیراعظم کو چاہئے کہ ایسے تمام لوگوں کو اپنی کابینہ سے برخواست کردیں جو اپنے بیانوں سے تناؤ پھیلا رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کو فوراً اس مسئلہ پر اپنا موقف رکھتے ہوئے ملک کو یہ بھی بتانا چاہئے کہ انہوں نے اپنے بیرون ممالک سفر میں سربراہان مملکت کو بھگود گیتا کیوں پیش کیا ‘۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment