Today: Thursday, November, 15, 2018 Last Update: 02:52 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

لیٹ لطیف بھاجپائی ممبران کی خیر نہیں

 

پارلیمنٹ کے اجلاس کے دوران بی جے پی پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں وقت سے نہیں پہونچنے والے ممبران کے داخلہ پر پابندی ، وزیراعظم کے فیصلہ کا وینکیانائیڈو نے کیا اعلان

محمداحمد

نئی دہلی:بی جے پی پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں لیٹ لطیف ممبران پارلیمنٹ کو انٹری نہیں ملے گی! وزیر اعظم نریندر مودی نے سخت حکم دیا ہے کہ پارلیمنٹ ہاؤس کے بال یو گی آڈیٹوریم کا دروازہ ہر منگل کو صبح 9.35 بجے بند کر دیا جائے۔ پارلیمنٹ سیشن کے دوران سالوں سے بی جے پی پارلیمانی کمیٹی کی میٹنگ ہر منگل کو بال یوگی آڈیٹوریم میں ساڑھے نو بجے ہوتی رہی ہے۔ذرائع بتاتے ہیں کہ پی ایم مودی نے منگل کو بی جے پی کے 320 ممبران پارلیمنٹ میں سے 20 کے تاخیر سے پہنچنے کے بعد یہ حکم دیا ہے۔ میٹنگ ختم ہونے کے فوراً بعد پارلیمانی امور کے وزیر وینکیا نائیڈو نے اعلان کر دیا کہ اگلی میٹنگ سے یہ اصول نافذ کر دیا جائیگا کہ پارلیمنٹ کے احاطہ میں واقع بال یوگی آڈیٹوریم کا دروازہ 9.35 پر بند کر دیا جائے ۔ اس سے تاخیر سے پہنچنے والے ایم پی اندر نہیں آ پائیں گے۔پارلیمنٹ کا اجلاس جاری ہے رہنے کے دوران بی جے پی پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس ہر منگل کو صبح 9.30 پر شروع ہو جایا کرتا ہے ۔پہلی بار لوک سبھا پہنچے وزیراعظم نریندر مودی ہر منگل کو طے وقت سے 10 منٹ پہلے یعنی 9.20 بجے ہی میٹنگ میں پہنچ جاتے ہیں۔تاہم،بیرون ملک اور کئی انتخابی ریلیوں میں مصروف ہونے کی وجہ سے پی ایم ایک ہفتے کے وقفہ کے بعد گزشتہ منگل کو اجلاس میں شامل ہوئے تھے۔ تب انہوں نے ارکان کی لیٹ لطیفی پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے ہر حال میں تمام سے صحیح وقت پر اجلاس میں حاضر ہونے کی ہدایت دی ۔ تاہم، بی جے پی صدر امت شاہ مہینے میں ایک بار اس میٹنگ میں شامل ہوتے ہیں۔وزیر اعظم نے جب سے ڈسپلن کو اہمیت دینا شروع کیا ہے تب سے بی جے پی لیڈروں کیلئے بنیادی اصول نافذ کئے جا چکے ہیں۔ پارٹی کے ممبران پارلیمنٹ سے صاف صاف کہہ دیا گیا ہے کہ وہ اہم اجلاس سے غیر حاضر نہیں رہ سکتے۔ساتھ ہی یہ بھی کہہ دیا گیا ہے کہ ان کی حاضری رپورٹ وزیر اعظم کو بھیجی جائیگی۔ اتنا ہی نہیں پارلیمنٹ سیشن کے دوران وزیر دورے کی اجازت بھی نہیں مانگ سکتے۔ دراصل، مرکز میں بی جے پی کی حکومت بننے کے فوراً بعد وزیر اعظم نریندر مودی نے پارٹی ممبران پارلیمنٹ کو کیا کریں اور کیا نہ کریں سے متعلق دستاویزات تھما دیئے تھے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment