Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 02:16 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

جموں کشمیر کی سبھی پارٹیاں لوٹ اور بدعنوانی میں ملوث

 

جموں کشمیر میں زبردست ووٹنگ سے بوکھلائے دہشت گرد:مودی

ادھم پور،28نومبر(یو این آئی) وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ جموں کشمیر میں جمہوریت کی طاقت دیکھ کر دہشت گرد بوکھلا گئے ہیں لیکن ریاست کے عوام نے بلیٹ کا جواب بیلیٹ سے دے کر پوری دنیا میں اپنا پیغام پہنچا دیا ہے۔مسٹر مودی نے آج یہاں بٹل میدان میں انتخابی ریلی کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردوں نے ہر طرح سے تباہی مچانے کی کوشش کی۔ اس کے باوجود جمہوریت کی طاقت زندہ دیکھ کر وہ بوکھلاگئے ہیں۔انھوں نے کہا کہ جموں کشمیر کے عوام نے بڑی تعداد میں ووٹنگ کر کے جمہوریت میں اپنا اعتماد ظاہر کیا ہے ۔ اس سے پوری دنیا میں اچھا پیغام گیا ہے۔مسٹر مودی نے کہا کہ یہاں بلیٹ کے زور سے بیلیٹ کو دبانے کی کوشش کی گئی لیکن عوام نے جمہوریت پر اپنے اعتماد کو ظاہر کرتے ہوئے اپنا جواب دے دیا۔ وزیرا عظم نریندر مودی نے کانگریس، نیشنل کانگریس اور پپلس ڈیموکریٹک پارٹی کے خلاف بولتے ہوئے کہا کہ گزشتہ 30برسوں میں یہ پارٹیاں ریاست میں لوٹ، بدعنوانی اور عوام کا استحصال کر رہی ہیں۔مسٹر مودی نے یہاں بٹل میدان میں انتخابی ریلی کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حزب اقتدا ر اور حزب اختلاف دونوں پارٹیوں نے یہاں باری باری سے لوٹ مار کرنے کی پالیسی اپنائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جتنا پیسہ یہاں ا یا اگر وہ عوام کے کھاتے میں گیا ہوتا تو یہاں کی عوام سب سے امیر ہوتی لیکن سارا اثاثہ چند خاندانوں کے پاس جمع ہو گیا ہے اور عوام اب بھی خالی ہاتھ ہیں۔انہوں نے لوٹ کا مال واپس لانے کے لئے انہیں ایک موقع دینے کو کہا۔مسٹر مودی نے کہا کہ مرکزی حکومت اس ریاست کو صر ف مالی مدد دے کر اپنا فرض ادا کر لیتی تھی لیکن ان کی حکومت یہ یقینی بنائے گی کہ پیسوں کا صحیح استعمال ہو اور وہ حقداروں تک پہونچ سکے۔مسٹر مودی نے کانگریس کو خاص طور سے نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اس نے عوام کے نام پر بینکوں کو نیشنلائزڈ کیا لیکن غریب عوام تک اس کی پہنچ انہوں نے کی اور اس کے لئے انہوں نے جن دھن منصوبے کاا غاز کیا۔انہوں نے کہا کہ کانگریس نے غریب عوام کو اور زیادہ غریب کرنے کی پالیسی اپنائی تھی۔انہوں نے سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی کے اس بیان کو فوکس کرتے ہوئے کانگریس پر نشانہ لگایا کہ مرکز سے جاری ایک روپیہ عوام تک پہنچتے پہنچتے 15پیسہ ہو جاتا ہے۔مسٹر مودی نے کہا کہ جب ا نجہانی گاندھی نے یہ بات کہی تھی تب پارلیمنٹ سے پنچایت تک کانگریس کی ہی حکومت تھی۔ انہوں نے عوام سے راست گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ا خر کار 85پیسے کہاں گئے۔ اس کے لئے انہوں نے باری باری سے کانگریس، نیشنل کانگریس اور پی ڈی پی کا نام لیا۔مسٹر مودی نے لوٹ کا پیسہ واپس لانے کے لئے بی جے پی کو مکمل اکثریت دلانے کی اپیل کی۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment