Today: Wednesday, November, 14, 2018 Last Update: 11:32 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

زہریلی شراب پینے سے پانچ افراد کی موت

 

محکمہ آبکاری اور پولس کے 11ملازمین معطل ،دو شراب تاجر گرفتار

بھدوہی ؍لکھنؤ، 26 نومبر (یو این آئی) اترپردیش میں بھدوہی کے اورئی علاقے میں زہریلی شراب پینے سے پانچ افراد کی موت ہوجانے کے معاملے میں آبکاری اور پولیس محکمے کے گیارہ ملازمین کو معطل کرکے شراب کے دو ناجائز تاجروں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔بھدوہی کے اورئی علاقے کے بجلی آشا پور گاؤں گذشتہ 48 گھنٹے کے دوران زہریلی شراب پینے سے پانچ افراد کی موت ہوگئی۔پولیس سپرنٹنڈنٹ وکرم آدتیہ سچان نے آج بتایا کہ گاؤں کے کچھ لوگوں نے ناجائز طریقے پر بنائی گئی شراب دو دن پہلے پی تھی۔ شراب پینے کے کچھ دیر بعد ہی تین افراد کی موت ہوگئی جبکہ دو دیگر نے کل دم توڑ دیا۔مسٹر سچان نے بتایا کہ اس معاملے میں ناجائز شراب کے تاجر منی لال کلواری اور اس کے دو بیٹوں کے خلاف رپورٹ درج ہوئی تھی جس کے تحت باپ اور بیٹے کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ علاقے میں ناجائز شراب کا دھندہ بند کرانے کیلئے مسلسل چھاپے مارے جارہے ہیں۔ گرفتار کلواری سے پوچھ تاچھ کرکے ناجائز شراب کے کاروبار کا پتہ لگایا جارہا ہے۔ شراب کی دو بھٹیاں بھی تباہ کردی گئی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اس سلسلے میں سخت کارروائی کرتے ہوئے متعلقہ حلقے کے دروغہ سگریو یادو اور تین سپاہیوں کو معطل کردیا گیا ہے۔دوسری طرف آبکاری محکمے کے کمشنر انل گرگ نے اس معاملے میں سخت موقف اختیار کرتے ہوئے آبکاری محکمے کے انسپکٹر اجے سنگھ، ہیڈ کانسٹبل (آبکاری )، سبھاش چندر شکلا اور رجت رام شکلا اور چار دیگر سپاہیوں کو معطل کردیا۔ مسٹر گرگ نے بھدوہی کے ڈسٹرکٹ آبکاری افسر کے خلاف بھی کارروائی کی سفارش کی ہے۔مسٹر سچان نے بتایا کہ یہ معاملہ کافی سنگین ہے۔ اس لئے اسے سنجیدگی سے لیا گیا ہے۔ شراب کے ناجائز کاروبار کرنے والوں کے خلاف مہم چلائی جارہی ہے۔دوسری طرف اس معاملے میں سیاست شروع ہوگئی ہے۔ بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی) اور کانگریس نے اس معاملے پر ریاستی حکومت پر سوال کھڑے کردیئے ہیں۔بی جے پی کے ترجمان وجے بہادر پاٹھک نے کہا کہ آبکاری محکمہ وزیراعلی کے پاس ہے۔ اس سے پہلے بھی اس طرح کے واقعات ہوئے ہیں تو ان واقعات کیلئے کسے ذمہ دار ٹھہرایا جائے گا۔کانگریس کے ریاستی ترجمان امرناتھ اگروال نے کہا کہ شراب کے ناجائز کاروبار نے کئی جانیں لے لی ہیں۔ اس طرح کے واقعات کو ہر حال میں روکا جانا چاہئے۔مسٹر اگروال نے کہا کہ ناجائز شراب کی فروغ جاری رہنے کی اصل وجہ بدعنوانی ہے۔ آبکاری اور پولیس کی ملی بھگت کے بغیر یہ دھندہ چل ہی نہیں سکتا اس لئے اس کا کاروبار کرنے والوں کے ساتھ ساتھ پولیس اور آبکاری محکمے کے خلاف بھی سخت کارروائی کی جانی چاہئے۔
 

...


Advertisment

Advertisment