Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 11:16 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

فرانس کی مدد سے ملٹی ماڈل ریلوے اسٹیشن بنیں گے


نئی دہلی، 24نومبر(یو این ا ئی) فرانس ہندوستان میں ہائی اسپیڈ و سیمی ہائی اسپیڈ ریلوے کے ساتھ اب بڑے شہروں میں ایسے ملٹی ماڈل ریلوے اسٹیشنوں کے ڈولپمنٹ میں تعاون کرے گا جہاں روایتی اور ہائی اسپیڈ ٹرینوں کے ساتھ چھوٹے شہروں میں چلنے والی ٹرینوں، میٹرو و مونو ریل جیسے مقامی ا مدو رفت کے ذرائع ایک ساتھ حاصل ہوں گے۔ فرانس اس کے لئے اقتصادی ماڈل کی تجویز بھی پیش کرنے والا ہے۔وزیراریل سریش پربھو اور ہندوستان میں فرانس کے سفیر فرانکوئس ریشیر کی موجودگی میں ہندوستان ریل نے ا ج یہاں ہند۔ فرانس ریل سیمینار میں فرانسیسی سفیر کے ساتھ مل کر ریلوے کی تجدید کاری کے اس بڑے ماڈل اور اس پر خرچ ہونے والے تخمینے واقتصا دی معاملات پر بات چیت شروع کی ہے۔سیمینار میں ہائی اسپیڈ و سیمی ہائی اسپیڈ ریلوے، ملٹی ماڈل اسٹیشن، اخراجات ودیگر امور پر تبادلہ خیال کیا۔ موقع پر فرانسیسی ماہرین نے اس کے تعلق سے کئی تجاویز بھی پیش کیں۔سیمینار میں ریلوے بورڈ کے صدر ارونیندر کمار، بور ڈ کے انجینئرنگ سیکشن کے ممبر وی کے گپتا، میکینکل ممبر ا لوک جوہری بھی موجود تھے۔سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر پربھو نے کہا کہ ملک میں ریلوے کی توسیع اور تجدید کاری مسافرین کی امیدوں اور توقعات کے مطابق ہونی چاہئے۔انہوں نے کہا کہ ا نے والے کل میں بڑے شہروں میں لوگوں کے سفر کرنے کے طور طریقے میں تبدیلی ا ئے گی۔
انہوں نے کہا کہ لوگوں کو ا مدورفت کے ذرائع جیسے روایتی ٹرینیں، ہائی اسپیڈ ٹرینیں،چھوٹے شہروں میں جانے والی گاڑیاں، میٹرو ، مونو ریل سمیت دیگر ذرائع ایک ہی چھت کے نیچے مہیا کرانے ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے کو نہ صرف نئے اور جدید اسٹیشن بنانے ہوں گے بلکہ پرانے اسٹیشنوں کو بھی سنوارنا ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ اس کے لئے دنیا کے کئی ممالک کے ساتھ بات چیت جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے کو ہائی ٹیک کرنے کے ئے چین، جاپان، جرمنی، فرانس سمیت کئی ممالک سے مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا جا رہا ہے لیکن ملٹی ماڈل اسٹیشنوں کے ڈولپمنٹ کے لئے ہندوستان ریل نے فرانس پر اپنی توجہ مرکوز کی ہے۔انہوں نے اسٹیشنوں کے نئے ماڈلوں میں قابل توجہ باتوں کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ مسافر جہاں سب سے زیادہ وقت گزارتے ہیں وہ جگہ پلیٹ فارم ، ویٹنگ روم اور کمپارٹمنٹ۔ انہوں نے کہا کہ ان مقامات کو صاف ستھرا بنانے کے ساتھ ساتھ یہاں تمام سہولیات کو یکجا کر نا ہوگا۔مسٹر پربھو نے ریلوے میں سرمایہ کاری کے تمام مواقع کی تفصیلی جانکاری فراہم کی اور فرانسیسی کمپنیوں سے ہندوستان میں سرمایہ کاری سے قبل ہندوستان و یہاں کے لوگوں کو اچھی طرح سمجھنے پر زور دیا۔انہوں نے کہا کہ دور سے جو پریشانیاں نظر ا تی ہیں کام شروع ہونے کے بعد وہ خو دبخود ختم ہوجاتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت اس بات کے لئے پابند عہد ہے کہ ہم مل کر ایک ساتھ کام کریں گے اور ا پ کو کسی طرح کی بھی تکلیف نہیں پہنچنے دیں گے۔ریلوے بورڈ کے صدر ارونیندر کمار نے ریلوے میں راست غیر ملکی سرمایہ کاری(ایف ڈی ا ئی) کے مواقع کی وضاحت کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ اس سیمینار میں فرانس کے ساتھ تعاون کر کے اس کا فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے۔سیمینار میں ریسرچ ، ڈیزائن اینڈ اسٹینڈرڈرس ا رگنائزیشن( ا ر ڈی ایس او) سمیت محکمہ ریل سے ملحق کئی اداروں اور فرانس کی تقریبا ایک درجن کمپنیوں نے حصہ لیا جن میں نمایاں طور سے السٹام،ای ٹی ایف، گیز مار، ایس این سی ایف، سسٹرا، ریل ٹیک انٹر نیشنل شامل تھیں۔ہندوستان اور فرانس کے مابین ریلوے کے میدان میں تعاون نیا نہیں ہے۔ دونوں ملکوں نے مل کر ممبئی۔ احمد ا باد کے درمیان 500کیلومیٹر لمبی لائن پر ہائی اسپیڈ ریلوے لائن پر نتیجہ خیزتحقیق اور اس کے بعد بزنس ڈولپمنٹ پر تحقیق پورا کر کے اپنی رپورٹ ہندوستانی ریل کے حوالے کر دی ہے۔ جاپان نیبھی اسی ریل لائن پر الگ سے بلیٹ ٹرین چلانے کے لئے تحقیق کر رہا ہے جس کی رپورٹ ا ئندہ برس مئی یا جون میں ا نے کی توقع ہے۔ہندوستان نے فرانس سے اپنی میٹرو پروجکٹ میں ٹرین ریک میں تعاون لیا ہے۔ہندوستان نے ہائی اسپیڈ ٹرینوں کے ہیرک چتر بھوج پروجکٹ کی 6 لائنوں کے ساتھ 7الگ الگ لائنوں پر بھی کام کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان لائنوں میں پونے، ممبئی، احمد ا باد، دہلی، چنڈی گڑھ، امرتسر، حیدر ا باد، دورناکل، وجے واڑہ، چننئی کے ساتھ ساتھ چننئی ۔ بینگلور، کوئمبٹور۔ ارنا کولم، ہاوڑہ۔ ہلدیہ، دہلی ۔ ا گرہ، لکھنؤ ۔ وارانسی، پٹنہ و دہلی، جے پور ، جودھپور شامل ہیں۔حکومت نے ہائی اسپیڈ ریلوے و ملٹی ماڈل اسٹیشنوں کے ڈولپمنٹ سمیت کئی میدانوں میں راست غیر ملکی سرمایہ کاری(ایف ڈی ا ئی) کی اجازت دی ہے اور سرمایہ کاری کے ماڈلوں پر معاہدے کے لئے فارمیٹ بھی جاری کئے ہیں تاکہ سرمایہ کار ہندوستانی ریلوے کے قواعدو ضوابط اور قوانین و شرطوں کے مطابق اپنا قرارنامہ تیار کر کے لائیں جسے فوری طور پر منظوری دلائی جا سکے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment