Today: Tuesday, September, 25, 2018 Last Update: 06:29 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

شاردا چٹ فنڈ گھوٹالہ : سرنجو بوس گرفتار

 

سی بی آئی نے کی شیاماپادامکھرجی سے بھی پوچھ گچھ

کلکتہ 21نومبر (یو این آئی)ترنمول کانگریس کے ممبر پارلیمنٹ سرنجو بوس کو آج سی بی آئی شاردا چٹ فنڈ گھوٹالہ میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کرلیا ہے ۔سرنجوبوس ترنمول کانگریس کے دوسرے ممبر پارلیمنٹ ہیں جنہیں شاردا چٹ فنڈ گھوٹالہ کے الزام میں سی بی آئی نے گرفتار کیا ہے ۔سرنجوبوس کو پوچھ تاچھ کے بعد گرفتار کیا گیا ہے ۔سی بی آئی کے ذرائع کے مطابق 6گھنٹے تک پوچھ تاچھ کرنے کے بعد گرفتاری عمل میں آئی ہے سی بی آئی کے سینئر عہدیدار نے بتایا کہ سرنجو بوس اپنے سابقہ بیانات کو تبدیل کردیا تھا اس لیے انہیں گرفتار کرلیا گیا ہے ۔انہیں کل عدالت میں پیش کیا جائے گا ۔سرنجوبوس شاردا گروپ کے چیرمین سدیپتو سین کے کافی قریبی تھی ۔ایک ویڈیومیں انہیں شاردا گروپ کے پروگرام میں ایجنٹوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا ۔گزشتہ ہفتہ ہی ترنمول کانگریس کے معطل راجیہ سبھا کے ممبر پارلیمنٹ کنال گھوش نے نیند کی زیادہ گولیاں کھاکر خودکشی کرنے کی کوشش کی تھی ۔کنال کا سی بی آئی سے مطالبہ تھا کہ وہ شاردا چٹ فنڈ گھوٹالہ کے اصل گناہ گاروں کو گرفتار ی نہیں کررہی ہے ۔دو دن قبل ہی ترنمول کانگریس کے راجیہ سبھا کے ممبر پارلیمنٹ سرنجو بوس کو سی بی آئی کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت دی گئی تھی۔ممبر پارلیمنٹ سرنجو بوس ایک بنگلہ روزنامہ کے مالک بھی ہیں ۔آج صبح سی بی آئی کے سامنے پیش ہونے سے قبل نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ مجھے بطور گواہ طلب کیا گیا ہے ۔ملک کا ایک ذمہ دار شہری ہونے کی حیثیت سے میں جانچ ایجنسی کے ساتھ مکمل تعاون کروں گا اور یہ میری ذمہ داری ہے ۔شاردا چٹ فنڈ گھوٹالہ کی جانچ کررہی سی بی آئی کی کرائم برانچ نے آج مغربی بنگال کے وزیر برائے ٹکسٹائل شیام پادا مکھرجی سے بھی پوچھ تاچھ کی ہے ۔ریاستی وزیر شیاما پادا مکھرجی کو بھی سی بی آئی نے حاضر ہونے کیلئے سمن جاری کیا تھا۔ریاستی وزیر شیامامکھرجی پر الزام ہے کہ انہوں نے سیمنٹ کمپنی کے اپنے شےئر کو شاردا گروپ کے ہاتھوں فروخت کیا تھا ۔سی بی آئی کو شبہ ہے کہ شےئر کے فروختگی میں قانون کی خلاف ورزی کی گئی ہے ۔اس لیے ریاستی وزیر طلب کیا گیا تاکہ وہ اس سلسلہ میں اپنی بات پیش کرسکیں۔ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ و کھیل کود مدن مترا کو بھی سی بی آئی نے آج پیش ہونے کی ہدات دی گئی تھی ۔مدن مترا سرکاری اسپتال ایس ایس کے ایم میں داخل ہیں انہیں کل ہی شہر کے ایک پرائیوٹ اسپتال سے یہاں منتقل کیا گیا ہے ۔سی بی آئی کے ذرائع نے بتایا کہ مترا کے معاملہ میں قانون کے مطابق کام کیا جائے گا۔سی بی آئی نے ترنمول کانگریس کے سابق ممبر پارلیمنٹ سومن مترا کوبھی سی بی آئی کے سامنے حاضر ہونے کیلئے سمن جاری کیا ہے ۔سومن مترا اس وقت کانگریس میں ہیں ۔شاردا چٹ فنڈ گھوٹالہ کی جانچ کررہی سی بی آئی کی کرائم برانچ نے آج مغربی بنگال کے وزیر برائے ٹکسٹائل شیام پادا مکھرجی اور ترنمول کانگریس کے راجیہ سبھا کے ایم پی سرنجو بوس سے شاردا گھوٹالہ معاملہ میں پوچھ گچھ کی ہے ۔ریاستی وزیر شیاما پادا مکھرجی اور ممبر پارلیمنٹ سرنجو بوس آج صبح سی بی آئی کے آفس میں پہنچے ۔ان دونوں کو سی بی آئی نے حاضر ہونے کیلئے سمن جاری کیا تھا۔ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ و کھیل کود مدن مترا کو بھی سی بی آئی نے آج پیش ہونے کی ہدات دی تھی ۔مدن مترا سرکاری اسپتال ایس ایس کے ایم میں داخل ہیں انہیں کل ہی شہر کے ایک پرائیوٹ اسپتال سے یہاں منتقل کیا گیا ہے ۔سی بی آئی کے ذرائع نے بتایا کہ مترا کے معاملہ میں قانون کے مطابق کام کیا جائے گا۔ریاستی وزیر شیامامکھرجی پر الزام ہے کہ انہوں نے سیمنٹ کمپنی کے اپنے شےئر کو شاردا گروپ کے ہاتھوں فروخت کیا تھا ۔سی بی آئی کو شبہ ہے کہ شےئر کے فروختگی میں قانون کی خلاف ورزی کی گئی ہے ۔اس لیے ریاستی وزیر طلب کیا گیا تاکہ وہ اس سلسلہ میں اپنی بات پیش کرسکیں۔ ممبر پارلیمنٹ سرنجو بوس جو ایک بنگلہ روزنامہ کے مالک ہیں نے شاردا گروپ کے ساتھ تجارتی معاملات کیا تھا ۔سی بی آئی کے سامنے پیش ہونے سے قبل سرنجوبوس نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مجھے بطور گواہ طلب کیا گیا ہے ۔ملک کا ایک ذمہ دار شہری ہونے کی حیثیت سے میں جانچ ایجنسی کے ساتھ مکمل تعاون کروں گا اور یہ میری ذمہ داری ہے ۔سی بی آئی نے ترنمول کانگریس کے سابق ممبر پارلیمنٹ سومن مترا کوبھی سی بی آئی کے سامنے حاضر ہونے کیلئے سمن جاری کیا ہے ۔سومن مترا اس وقت کانگریس میں ہیں ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment