Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 01:10 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

مولانا آزاد لائبریری میں طالبا ت کے جانے پر کوئی پابندی نہیں

 

انڈر گریجویٹ طالبات کو لائبریری میں مطالعہ کی اجازت نہ دینے کا صنفی امتیاز سے کوئی تعلق نہیں ،اے ایم یو انتظامیہ کی وضاحت

علی گڑھ، 11 نومبر (یو این آئی) علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی مولانا آزاد لائبریری سے ویمنس کالج کی انڈر گریجویٹ طالبات کے استفادہ حاصل کرنے کے سلسلہ میں میڈیا کے ایک سیکشن کے ذریعہ پھیلائی گئی بے بنیاد خبروں کی تردید کرتے ہوئے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی نے واضح کیا ہے کہ مولانا آزاد لائبریری میں انڈر گریجویٹ طالبات کو مطالعہ کی اجازت نہ دینے سے صنفی امتیاز کا کوئی تعلق نہیں ہے۔ یونیورسٹی نے واضح کیا کہ یونیورسٹی کی تمام خاتون ریسرچ ا سکالرس، پوسٹ گریجویٹ طالبات،پیشہ ورانہ کورسیز کی طالبات اور گریجویٹ طالبات مولانا آزاد لائبریری کی رکن ہیں اور وہ اس لائبریری کی سہولت کا بھر پور فائدہ اٹھاتی ہیں۔یونیورسٹی نے واضح کیا کہ ویمنس کالج علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اصل کیمپس سے تقریباً تین کلومیٹر کے فاصلہ پر واقع ہے اور یہ کالج لائبریری اور بک بینک سمیت ہر طرح سے خود کفیل ہے جبکہ مولانا آزاد لائبریری صبح800بجے سے رات200بجے تک کھلتی ہے۔ اس کے برخلاف اقامتی ہال کے اپنے قواعد و ضوابط ہیں۔مولانا آزاد لائبریری کا قیام1960 میں عمل میں آیا تھا جبکہ ویمنس کالج کی بنیاد1936میں رکھی گئی تھی اور یہ دونوں ادارے اپنے اپنے طورپرکام کر رہے ہیں۔ یونیورسٹی نے مولانا آزاد لائبریری کی ممبر شب سے متعلق کوئی نیا قانون نافذ نہیں کیا ہے جس کو میڈیا رپورٹس میں غلط طور پر منفی انداز میں پیش کیاگیا ہے۔یونیورسٹی اپنی تمام لائبریریوں کو ڈیجیٹلائزڈ کر رہی ہے تاکہ مولانا آزاد لائبریری میں جگہ کی تنگی کے مسئلہ سے نبرد آزما ہوا جاسکے۔
دوسری جانب علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) نے واضح کیا ہے کہ مولانا آزاد لائبریری میں طالبات کو مطالعہ کی اجازت ہے اور اس سلسلہ میں میڈیا میں آئی خبریں بے بنیاد ہیں۔ یونیورسٹی کے رابطہ عامہ افسر (پی آر او) راحت ابرار نے آج یو این آئی کو بتایا کہ مولانا آزاد لا ئبریری میں ومین کالج کی طالبات کے جانے کی اجازت نہ ہونے سے متعلق خبر گمراہ کن ہے۔ یونیورسٹی نے واضح کیا کہ یونیورسٹی کی تمام خاتون ریسرچ ا سکالرس، پوسٹ گریجویٹ طالبات،پیشہ ورانہ کورسیز کی طالبات اور گریجویٹ طالبات مولانا آزاد لائبریری کی رکن ہیں اور وہ اس لائبریری کی سہولت کا بھر پور فائدہ اٹھاتی ہیں۔یونیورسٹی نے واضح کیا کہ ویمنس کالج علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اصل کیمپس سے تقریباً تین کلومیٹر کے فاصلہ پر واقع ہے اور یہ کالج لائبریری اور بک بینک سمیت ہر طرح سے خود کفیل ہے جبکہ مولانا آزاد لائبریری صبح800بجے سے رات200بجے تک کھلتی ہے۔ اس کے برخلاف اقامتی ہال کے اپنے قواعد و ضوابط ہیں۔مولانا آزاد لائبریری کا قیام1960میں عمل میں آیا تھا جبکہ ویمنس کالج کی بنیاد1936میں رکھی گئی تھی اور یہ دونوں ادارے اپنے اپنے طورپرکام کر رہے ہیں۔ یونیورسٹی نے مولانا آزاد لائبریری کی ممبر شب سے متعلق کوئی نیا قانون نافذ نہیں کیا ہے جس کو میڈیا رپورٹس میں غلط طور پر منفی انداز میں پیش کیاگیا ہے۔یونیورسٹی اپنی تمام لائبریریوں کو ڈیجیٹلائزڈ کر رہی ہے تاکہ مولانا آزاد لائبریری میں جگہ کی تنگی کے مسئلہ سے نبرد آزما ہوا جاسکے۔

...


Advertisment

Advertisment