Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 09:07 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

وزیر اعظم نے آرایس ایس کے قریبی لوگوں کے پر کترے دئے

 

سدا نند گوڑا اور ڈاکٹر ہرش وردھن کی تنزلی، دونوں کے کام کاج سے خوش نہیں تھا پی ایم او : ذرائع ،اگلے چند ماہ میں کابینہ میں پھر ہوسکتی ہے ردو بدل

محمداحمد

نئی دہلی ،10نومبر ( ایس ٹی بیورو) مرکزی کابینہ میں کل ہوئے رد و بد ل کے بارے میں سیاسی گلیاروں، خاص طور پر بی جے پی کے گلیاروں میں کچھ معاملات کو لے کر کئی طرح کی چرچے ہیں۔ سب سے زیادہ بحث دہلی میں آر ایس ایس کی سب سے پہلی پسند ڈاکٹر ہرش وردھن اور سدانند گوڑا کے محکمہ تبدیل کرنے کو لے کر ہیں۔ دونوں کو پہلے کے مقابلہ ہلکی وزارت ملنے کی وجوہات تلاش کی جا رہی ہیں۔ ہلکی وزارت ملنے کا مطلب عام طور پر یہ لگایا جاتا ہے کہ وزیر اعظم اس وزیر کے کام کاج سے زیادہ مطمئن نہیں تھے ۔ توسیع اور ردوبدل سے پہلے کی میڈیا خبروں میں کہا تو یہ جا رہا تھا کہ پی ایم اقلیتی امور کی وزیر نجمہ ہپت اللہ اور وزیر زراعت رادھا موہن سنگھ کے کام کاج سے زیادہ خوش نہیں ہیں اور دونوں کے محکمہ بدلے جا سکتے ہیں۔ ہر ش وردھن کی وزارت تبدیل کرنے کو لیکر کسی کو بھنک نہیں تھی۔ پی ایم کے اسی اسٹائل کا ایک اور نمونہ ارون جیٹلی، سریش ربھو اورجے پی نڈا کے معاملے میں بھی دیکھا جا سکتا ہے۔ بڑھتی ضروریات اور جیٹلی کے بھی درخواست پر ان سے وزارت دفاع تو لے لیا گیا، لیکن ان کی اہمیت کو اطلاعات و نشریات کی وزارت دے کر ایک بار پھر صاف کردیا ۔کیونکہ دیگر کسی وزیر کے پاس اب اتنی بڑی دو وزارت نہیں ہیں۔
برسوں سے شیوسینا کے ایک رہنما کے طور پر نام پانے والے، لیکن کئی سال تک گجرات کے وزیر اعلی مودی کے ایک طرح سے مشیر رہے سریش پربھو کو ریل کی وزارت کا ذمہ دینا بھی پی ایم کے اسی انداز کا حصہ سمجھا جا سکتا ہے۔ خبریں تھیں کہ مودی کے وزیر اعظم بننے کے بعد انکے ساتھ قریب سے کام کر رہے پربھو کو منصوبہ بندی کمیشن کی جگہ بننے والے نئے ادارے کا ذمہ سونپا جا سکتا ہے، لیکن پیشہ سے چارٹرڈ اکاؤنٹینٹ رہے پربھو کو ملک کی ریل کو تیز رفتار اورصحیح سمت میں طریقے سے دوڑانے، خسارہ کم کرنے اور محکمہ میں ایف ڈی آئی کے کام کو امید کے حساب سے بڑھانے کا ذمہ سونپا گیا ہے ۔ہرش وردھن کو ہلکا محکمہ دئے جانے کے پیچھے ایمس کے سی وی او عہدے سے سنجیو چترویدی کو ہٹانے کے فیصلے کو وجہ نہ سمجھا جائے، کیونکہ چترویدی کے شدید مخالف پارٹی جنرل سکریٹری جے پی نڈا کو ہیلتھ منسٹری دی گئی ہے۔ڈاکٹر ہرش وردھن کو سائنس، ٹیکنالوجی اور زمین سائنس وزارت دی گئی ہے۔ ڈاکٹر وردھن کے کچھ حامی کہتے ہیں کہ پی ایم اس وزارت میں تیزی سے بہتر نئے نتائج کیلئے کسی دوسرے کو وزیر بنا نا چاہتے تھے ۔کچھ حامی اسے دہلی انتخابات میں پھر سے وردھن کو ہی سی ایم امیدوار کے طور پر پیش کرنے کی تیاری کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔ اسی وجہ سے ہلکی وزارت دینے کا مقصد یہ ہے کہ وہ دہلی کو بھی اور زیادہ وقت دے سکیں۔ ڈاکٹر وردھن کے مخالف بھی کئی چیزیں ہیں۔ ان میں سنجیو چترویدی معاملے میں پی ایم او کو گمراہ کرنے ، جے پی نڈا جیسے لیڈروں اور دوسرے ناموں کا لیک ہونا، پی ایم او کو دیر سے معلومات دینا، بہت سے معاملات میں امید کے حساب سے تیز کام نہ ہو پانا، میڈیکل ورلڈ کے کئی لوگوں کی طرف سے طرح طرح کی باتیں اوپر تک پہنچانا جیسے وجہبتائے جارہے ۔ ویسے، وردھن کے حامی اور پارٹی کے کئی سینئر رہنما ان سب کو غلط بتا رہے ہیں ۔دوسری طرف، سدانند گوڑا کو ریل سے ہٹا کر وزارت قانون و انصاف دینے کے پیچھے جو کہا جا رہا ہے، اس کا نچوڑ یہ ہے کہ گوڑا پی ایم کی امیدوں کو ا سپیڈ نہیں دے پا رہے تھے۔ اتنے ماہ بعد بھی ریلوے کے افسروں پر ان کی پکڑ نہیں بن پائی تھی اور پی ایم او کیطرف سے بتائے گئے قریب 30 بڑے کاموں میں سے ایک بھی آگے نہیں بڑھ پایا تھا ۔خبروں کے مطابق اگلے چند ماہ میں کا بینہ میں رد وہ بدل کے امکانات ہیں ۔
 

...


Advertisment

Advertisment