Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 04:54 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

بجلی بحران وکسانوں کی خودکشی کو لے کر ہنگامہ

 

تلگو دیشم پارٹی سے تعلق رکھنے والے10 اراکین کو تلنگانہ اسمبلی سے ایک دن کے لئے معطل کیا گیا

حیدرآباد۔7 نومبر (یو این آئی) تلگو دیشم پارٹی سے تعلق رکھنے والے دس ارکان کو تلنگانہ اسمبلی سے ایک دن کے لئے معطل کردیا گیا۔ یہ معطلی ایوان کی کسی بھی کارروائی سے پہلے عمل میں آئی کیونکہ یہ ارکان اسمبلی وزیر زراعت پوچارم سرینواس ریڈی کے ریمارکس پر انہیں بر طرف کرنے کامطالبہ کرتے ہوئے ایوان کی کارروائی میں رکاوٹ پیدا کر رہے تھے اور ایوان میں احتجاج کر رہے تھے۔ سرینواس ریڈی نے ایوان میں کسانوں کی خودکشی کے معاملہ پر کہا تھا کہ خودکشی کرنے والوں میں سے زیادہ تر حقیقی کسان نہیں ہیں۔ ان کے اس ریمارک پر تلگو دیشم اور بی جے پی کے ارکان ایوان کے وسط میں پہنچ گئے اور پلے کارڈس کے ساتھ مظاہرہ کیا۔ ان ارکان نے وزیر کے خلاف نعرہ بازی بھی کی۔ کانگریس کے ارکان بھی اس احتجاج میں شامل ہوگئے اور کسانوں کی خودکشی کے واقعات کے علاوہ تلنگانہ میں بجلی کے بحران پر ان کی جانب سے پیش کردہ تحریک التوا پر بحث کا مطالبہ کیا۔ اسپیکر مدھو سدن چاری نے ان جماعتوں کے ارکان کے احتجاج کے باوجود وقفہ سوالات شروع کیا۔ انہوں نے اس احتجاج کو دیکھتے ہوئے ایوان کی کارروائی کے آغاز کے دس منٹ کے اندر ہی دس منٹ کے لئے کارروائی کو ملتوی کردیا۔ انہوں نے کارروائی کواس وقت ملتوی کیا جب وزیر اعلیٰ چندرشیکھر راو وقفہ سوالات کے پہلے سوال کا جواب دے رہے تھے۔ تلگو دیشم ارکان نے اس معاملہ پر سرینواس ریڈی کو بر طرف کرنے اور معذرت کرنے کا مطالبہ کیا جبکہ حکمران جماعت ٹی آر ایس کے ارکان نے الزام لگایا کہ تلگو دیشم کے ارکان ایوان کی کارروائی میں رکاوٹ پیدا کرنا چاہتے ہیں اسے یہ خوف ہے کہ کسانوں کی خودکشی اور بجلی کے بحران پر بحث سے آندھرا پردیش کی تلگو دیشم حکومت بے نقاب ہوجائے گی جو بجلی کے حصے سے تلنگانہ کو محروم کر رہی ہے۔ دو مرتبہ کارروائی کے التوا کے بعد جب دوبارہ کارروائی شروع ہوئی تو وزیر پارلیمانی امور ہریش راو نے حزب اختلاف کی جماعتوں کے ارکان کو یاد دلایا کہ وہ وقفہ سوالات کو چلانے اور تحریک التوا پر بحث کے لئے ر اضی ہوئے تھے لیکن ایسا محسوس ہوتا ہے کہ یہ ارکان ایوان کی کارروائی میں رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ اس موقع پر ایم آئی ایم کے فلور لیڈر اکبر اویسی نے کہا کہ حزب اختلاف کی جماعتوں کے بعض ارکان ان مسائل پر بحث میں دلچسپی نہیں رکھتے اور وہ ڈرامے و تماشے کر رہے ہیں۔ کسانوں کی خودکشی اور بجلی کے بحران کے واقعات پر ان ارکان کے پاس کہنے کے لئے کچھ بھی نہیں ہے۔ تلگو دیشم پارٹی سے تعلق رکھنے والے دس ارکان کو تلنگانہ اسمبلی سے ایک دن کے لئے معطل کردیا گیا۔تلگو دیشم کے ارکان کا احتجاج جاری رہا جس پر ہریش راو نے احتجاجی ارکان دیاکر ر او، ریونت ریڈی، کشن ریڈی ، جی سائنا، وینکٹ ویریا، پرکاش گوڑ، اے گاندھی ، کرشنا راو، گوپی ناتھ اور راجندر ریڈی کو معطل کرنے کی تحریک پڑھ کر سنائی۔ اس تحریک کو اسپیکر نے قبول کرلیا اور معطل ارکان کو مارشلس کے ذریعہ ایوان کے باہر کردیا گیا کیونکہ یہ ارکان ایوان چھوڑنے کے لئے راضی نہیں تھے۔ تلگو دیشم ارکان کو ایوان سے باہر کرنے کے بعد وزیر اعلیٰ چندرشیکھر راو نے اعادہ کیا کہ حکومت اس مسئلہ پر بحث کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ آندھرا پردیش حکومت نے تلنگانہ کو 1186 میگا واٹ بجلی مہیا کرنے سے انکار کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلگو دیشم ارکان کی معطلی افسوسناک ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ ارکان اسمبلی اس معاملہ پر ان کی بات سننے کے لئے تیار نہیں تھے۔ ایوان میں اس گڑ بڑ سے دو گھنٹے ضائع ہوئے۔

...


Advertisment

Advertisment