Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 10:55 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

مظفر نگر میں پھر فرقہ وارانہ فساد کی کوشش،ایک ہلاک ،چارزخمی


ڈاکٹر غیور عالم کی موت کی خبر پاکر جمعیۃ علماء مظفرنگر کے ذمہ دارن نے حالات کا جائزہ لیا،ملزمین کی گرفتاری اور اہل کیلئے معاوضہ کا مطالبہ
مظفرنگر، 6؍نومبر(ایس ٹی بیورو)تھانہ نئی منڈی کے گاؤں تگری میں فرقہ وارانہ تنازع میں اقلیتی طبقہ کے ڈاکٹر غیور عالم کی موت کی خبر پاکر جمعیۃ علماء مظفرنگر کے ذمہ دارن نے فوری طورسے گاؤں کا دورہ کرکے پورے حالات کا جائزہ لیا ، اورخاطی دنگائیوں کی گرفتاری کا مطالبہ اعلیٰ افسران سے کرتے ہوئے مذکورہ سانحہ کو فرقہ وارانہ کاروائی میں شامل کرنے ، نیزمقتول کے اہل خانہ کو بطور معاوضہ 10لاکھ روپئے اور ایک فرد کو سرکاری ملازمت سمیت اسلحہ کا لائنسس جاری کرنے کا مطالبہ رکھا۔جمعیۃ کے وفد میں مولانا جمال الدین قاسمی ، حافظ محمد فرقان اسعدی ، مولانا محمد ذاکر شاہی امام، مفتی بن یامین قاسمی، مولانا محمد موسیٰ قاسمی، ماسٹر یامین، محمد اسلام ضلع پنچایت ممبر نے تگری گاؤں پہنچ کر پورے حالات کا جائزہ لیا۔معلوم ہوکہ تگری گاؤں میں آج علی الصبح سڑک کو بہانہ بناکر اکثریتی فرقہ کے سنجے ولد دھنی رام ، سنیل ، بابو رام ، مانگے رام ایڈوکیٹ ولد دھنی رام سمیت کئی درجن لوگوں نے ڈاکٹر غیور عالم کے مکان پر حملہ کرکے دھاردار ہتھیاروں اور لائنسس وغیر قانونی ہتھیاروں سے حملہ کردیا، جس میں ڈاکٹر غیورعالم کو پانچ گولیاں مارکر موقع پر ہی قتل کردیا، جب کہ ڈاکٹر کے بھائی حاجی یعقوب عرف کالو،محمد ایوب شدید طور سے زخمی ہوگئے۔اس سنسی خیز معاملہ سے پورے علاقہ میں افواہوں کے بازار گرم ہوگیا اور طرح طرح کی افواہیں گردش کرنے لگی ، اسی اثنا ء جمعیۃ کے وفد نے گاؤں پہنچ کر لوگوں سے امن وامان کے قیام اور بھائی چارہ کو باقی رکھنے کی اپیل کی، اور ضلع انتظامیہ کے اعلیٰ افسران سے غیر جانب دارانہ کاروائی کرنے ، مقتول کے اہل خانہ کے تحفظ کو یقینی بنانے ، ان کو معاوضہ کے طور پر 10لاکھ روپئے منظور کرانے ، نیز قاتلوں اور دنگائیوں پر فوری کاروائی کرنے جیسے مطالبات رکھے ، جس کو اعلیٰ افسران نے پورا کرنے کی یقین دہانی کرائی۔اس موقع پر مولانا جمال الدین قاسمی ، وحافظ محمدفرقان اسعدی نے کہا کہ مظفرنگر کے حالات شرپسندوں کی وجہ سے پٹری پر لوٹتے نظر نہیں آرہے ہیں، امن وامان کی بحالی میں فرقہ پرستوں کی کاروائیاں رکاوٹیں پیدا کررہی ہیں، ضلع انتظامیہ کو ایسے عناصر پر باریکی سے نظر رکھنی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ جمعیۃ علماء ہند مقتول کے اہل خانہ کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی ، انہوں نے کہا کہ قومی صدر قاری سیدعثمان منصور پوری ، اور قائد ملت مولانا سید محمود اسعدمدنی سے پورے حالات پر صلاح ومشورہ کے بعد اس سمت میں عملی اقدام کئے جائیں گے ۔معلوم ہوکہ تگری گاؤں میں پچھلے کچھ دنوں سے شرپسندوں کی سرگرمیاں چل رہی تھی، گاؤں کا ماحول خراب کی فضاء بنانے میں باہری شرپسندوں کا اہم رول مانا جارہاہے ۔گاؤں والوں کی بات اگر مانی جائے تو مقتول ڈاکٹر غیور پچھلے کچھ دنوں سے شرپسندوں کے نشانہ پر تھے ۔حیران کرنے والی بات یہ رہی کہ اقلیتی طبقہ اس حادثہ کے بعد خوف زدہ اور سہما ہواہے ، قانونی کاروائی کرنے میں بھی وہ خوف زدہ نظر آئے ، پولیس اس معاملہ میں لیپا پوتی کی کوشش میں نظر آئی کیونکہ وہ اس معاملہ کو فرقہ وارانہ تنازع میں نہ لکھ کر اس کو سڑک تنازع بنانے کی کوشش میں رہی۔جمعیۃ علماء نے پورے سانحہ پر گہرے رنح وغصہ کا اظہار کرتے ہوئے پورے حالات کی غیر جانب دارانہ کاروائی کرنے اور قاتلوں کے خلاف سخت کاروائی کا بھی مطالبہ کیا۔اس کے بعد تھانہ نئی منڈی میں پہنچ کر درج کئے گئے مقدمہ کی نوعیت کو بھی جانا۔اس موقع پر مولانا جمال الدین قاسمی، حافظ محمدفرقان اسعدی، مولانا ذاکر شاہی امام، مفتی بن یامین قاسمی، محمد اسلم ضلع پنچایت ممبر ، محمد ایوب مولانا دین محمد، مولانا موسیٰ قاسمی، ماسٹر محمد یامین وغیرہ شامل رہے ۔

...


Advertisment

Advertisment