Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 08:53 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سری نگرمیں جھڑپوں کے بعد پھر کرفیو جیسی پابندیاں نافذ


ہڑتال کے بعد معمولات زندگی جزوی طور بحال
سری نگر ، 6 نومبر (یو این آئی) سری نگر کے بالائی علاقے کے نوگام اور ملحقہ علاقوں میں احتجاجی مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے مابین تازہ جھڑپوں کے بعد ان علاقوں میں پھر سے کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کی گئیں۔ جمعرات کی صبح احتجاجی مظاہرین ایک بار پھر ٹولیوں کی شکل میں سڑکوں پر آگئے اور سکورٹی فورسز پر پتھراؤ کرنے لگے جس کے بعد سیکورٹی فورسز نے احتجاجی مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کے گولوں کا استعمال کیا جس کے نتیجے میں متعدد افراد بشمول سیکورٹی فورس اہلکار زخمی ہوگئے ۔ یاد رہے کہ 3 نومبر کی شام کو فوج نے وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام کے چھترگام علاقے میں ایک ماروتی کار پر گولیاں چلائیں جس کے نتیجے میں نوگام علاقے سے تعلق رکھنے والے دو عام شہری ہلاک جبکہ دو دیگر زخمی ہوگئے۔ واقعہ کے خلاف نوگام اور اس سے ملحقہ علاقوں میں رہائش پزیر لوگ زبردست احتجاج کر رہے ہیں اور گذشتہ دو روز کے دوران ان علاقوں میں متعدد بار سیکورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان پْرتشدد جھڑپیں بھی ہوئیں۔ نوگام اور اس سے ملحقہ علاقوں میں 4 نومبر کی صبح سے کرفیو جیسی پابندیاں عائد ہیں۔ تاہم کل بھی احتجاجی مظاہرین کرفیو جیسی پابندیوں کو توڑتے ہوئے سڑکوں پر آگئے اور سیکورٹی فورسز کے ساتھ رات دیر گئے تک جھڑپیں کیں جس کے دوران پتھراؤ ہوا اورآنسو گیس کے گولے داغے گئے ۔ احتجاجی مظاہرین ملوث فوجی اہلکاروں کی گرفتاری کا مطالبہ کررہے ہیں۔ اگرچہ جمعرات کی صبح علاقے میں لوگوں اور ٹریفک کی نقل وحرکت پر کوئی پابندی عائد نہیں تھی اور متعدد اسکول بھی کھل گئے تھے تاہم احتجاجی مظاہرین ایک بار پھر سڑکوں پر آگئے اور سیکورٹی فورسز کے خلاف اور آزادی کے حق میں نعرے بازی کرنے لگے۔ احتجاجی مظاہروں کو دیکھتے ہوئے انتظامیہ نے فوراً علاقے میں سیکورٹی فورسز اہلکاروں کو دوبارہ تعینات کردیا اور علاقے میں لوگوں کی نقل وحرکت پر پابندی عائد کردی ۔ اگرچہ سیکورٹی فورسز نے احتجاجی مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج کا استعمال کیا تاہم یہ بے اثر رہا اور مظاہرین سیکورٹی فورسز پر پتھراؤ کے مرتکب ہوگئے۔ بعد میں سیکورٹی فورسز کو آنسوگیس کے گولے داغنے پڑے۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ علاقے میں حالات بدستور کشیدہ ہیں جبکہ سیکورٹی فورسز اور احتجاجی مظاہرین کے درمیان جھڑپیں بھی جاری ہیں جن کے نتیجے میں متعدد افراد بشمول سیکورٹی فورس اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔ سیکورٹی فورسز نے مصروف نٹی پورہ نوگام بائی پاس کو گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند کردیا ہے تاہم بائی پاس پر ٹریفک معمول کے مطابق چل رہی ہے۔ قابل ذکر ہے کہ فوج نے پہلے ہی عام شہریوں کی ہلاکت کے اس واقعہ کی تحقیقات کیلئے عدالتی انکوائری کرانے کا اعلان کرتے ہوئے ملوث اہلکاروں کو فوجی ہیڈکوارٹر کے ساتھ منسلک کردیا ہے جبکہ ریاستی پولیس نے ایف آئی آر درج کی ہے۔ فوج نے واقعہ پر معذرت کا اظہار بھی کیا ہے جبکہ ریاست کی تمام سیاسی و علیحدگی پسند جماعتوں نے واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

 

...


Advertisment

Advertisment