Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 01:30 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

کجریوال ایک بار پھردہلی کے عوام کی حمایت حاصل کرنے کیلئے کوشاں

 

کرسی چھوڑنے کے بعد تنقیدکا سامنا کررہے اروند کجریوال نے کہاکہ اب5 سے 10برسوں تک راجدھانی پر توجہ مرکوز کروں گا

نثاراحمدخان

نئی دہلی ،6نومبر( ایس ٹی بیورو) دارالحکومت دہلی میں اسمبلی تحلیل کئے جانے کے بعد جلد ہی اسمبلی انتخابات کیلئے نو ٹیفکیشن جاری ہونے کاامکان ہے۔ ایسے میں اب عوام لبھانے کا دور شروع ہوگیاہے۔ فروری میں دہلی کی کرسی چھوڑ کر لوک سبھا انتخابات میں قسمت آزمانے والے اروند کجریوال نے تنقیدوں کا سامنا کرنے کے بعد آج عوامی ہمدردی کی خاطر کہاہے کہ وہ اگلے پانچ سے 10برسوں تک دہلی پر توجہ مرکوز کریں گے اور دوسری ریاستوں میں انتخاب لڑنے کا فیصلہ قومی دارالحکومت میں مینڈیٹ کے بعد ہی کیا جائے گا۔واضح رہے کہ فروری میں وزیر اعلیٰ کے عہدے سے استعفیٰ دینے کی وجہ سے انہیں کافی تنقید کا سامنا کر ناپڑا ہے۔ انہوں نے کہاکہ عام آدمی پارٹی الیکشن کیلئے مکمل طور پر تیار ہے اور بی جے پی اس کی اہم مدمقابل ہے۔انہوں نے کہاکہ اب ہم صرف دہلی پر توجہ دے رہے ہیں،جہاں تک میرا سوال ہے، میں اگلے پانچ سے 10سال تک دہلی پر توجہ مرکوز کرنے جا رہا ہوں۔ پارٹی کی ترقی کیلئے قومی دارالحکومت میں مضبوط بنیاد کی ضرورت کی ترجمانی کرتے ہوئے کجریوال نے کہا کہ کہیں اور الیکشن لڑنے کے بارے میں فیصلہ دہلی میں انتخابات کے بعد ہی لیا جائے گا۔کجریوال نے کہاکہ دہلی انتخابات تک ہم کہیں اور انتخاب نہیں لڑیں گے۔انتخابات کے بعد پارٹی طے کرے گی کہ کہاں الیکشن لڑنا ہے، کہاں نہیں؟ ۔‘’آپ‘ کے سربراہ نے ان نکتہ چینیوں کو سرے سے مسترد کر دیا جس میں کہا گیا تھا کہ انہیں حکومت چلانا نہیں آتا ہے۔کجریوال نے کہا کہ جس رفتار سے ’آپ‘ حکومت نے فیصلے لیے اور لوگوں کو راحت پہنچائی، اسے دیکھ کر لوگ حیران تھے۔انہوں نے کہاکہ ہم اپنی جیت کے تئیں پُراعتماد ہیں،جس رفتار سے ہماری حکومت نے کام کیا تھا اور فیصلے کئے تھے، اسے دیکھ کر لوگ حیران تھے،ہم اقتدار میں واپسی کے حوالے سے پُراعتماد ہیں۔‘آپ لیڈر نے کہا کہ بی جے پی ایک پروپیگنڈہ چلا رہی ہے کہ آپ کو حکومت کرنا نہیں آتا ہے۔کجریوال نے کہا، ’وہ کہتے ہیں کہ ہمیں حکومت کرنا نہیں آتا ہے،میں ان سے پوچھنا چاہتا ہوں کہ حکومت کیا ہوتی ہے،گزشتہ سالوں میں بی جے پی کئی ریاستوں میں اقتدار میں رہی،کیا آپ ایک بھی ریاست کا ذکر کر سکتے ہیں، جہاں کرپشن میں بڑے پیمانے پر کمی آئی ہو۔‘انہوں نے کہا، ’کانگریس 65 سالوں میں مرکز اور ریاستوں میں اقتدار میں رہی، وہ بدعنوانی پر لگام نہیں لگا سکی،ہم نے ایسا 49 دنوں میں کیا،ہم حکومت کرنا جانتے ہیں،وہ نہیں جانتے۔‘کیجریوال نے کہا کہ ووٹروں کا سامنا کرنے کے معاملے میں یقین اور اعتماد کی کمی کی وجہ سے بی جے پی نے وزیر اعلی کے عہدے کا امیدوار پیش نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ انتخابات میں لوگ ا بی جے پی کومسترد کر دیں گے۔کجریوال نے کہاکہ بی جے پی نے شہر کیلئے کچھ نہیں کیا،وہ بڑھتی ہوئی قیمتوں پر قابو نہیں کر سکی،کانگریس بڑھتی قیمتوں پر لگام نہیں لگا سکی،لیکن ہم نے ایسا کیا۔‘انہوں نے کانگریس کو اسمبلی انتخابات میں مقابلے سے باہر قرار دیتے ہوئے کہاکہ لڑائی آپ اور بی جے پی کے درمیان ہے۔دہلی کے کچھ علاقوں میں فرقہ وارانہ فساد کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کسی پارٹی کا نام لئے بغیر کہا کہ انتخابات سے قبل فسادات کو ہوا دینے کا چلن شروع ہوا ہے۔لوک سبھا انتخابات میں نریندر مودی کی بدعنوانی کے مسئلے کو اٹھانے کے بارے میں ایک سوال پر کجریوال سیدھا کچھ بھی کہنے سے بچتے نظرآئے۔

...


Advertisment

Advertisment