Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 01:23 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

بی جے پی مغربی بنگال میں بد امنی پیدا کرنے کی کوشش کر رہی ہے:پرتھا چٹرجی

 

ممتا بنرجی دہشت گردو ں کی پشت پناہی نہیں کررہی ہیں:بنگلہ دیشی وزیر

کولکاتہ،03نومبر(یو این ا ئی) ترنمول کانگریس کے جنرل سکریٹری پرتھا چٹرجی نے ا ج بی جے پی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ریاست میں بد امنی پید ا کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ریاست کی اپوزیشن پارٹیوں کے ذریعہ بھی یہاں بدامنی کو ہوا دے رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ریاست کی اپوزیشن پارٹیاں جیسے سی پی ا ئی اور کانگریس بھی الزامات اور تشدد کی سیاست کر رہی ہیں ۔ڈاکٹر چٹرجی نے کہا کہ اپوزیشن پارٹیاں بی جے پی کو ا گے رکھ کر بد امنی پھیلانے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ یہ ساری پارٹیاں ریاست کے ماحول کو خراب کرنے پر ا مادہ ہیں۔انہوں نے واضح لفظوں میں کہا کہ بنگال میں تشدد کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی مغربی بنگال ممتا بنرجی کے ذریعہ کرائے جارہے ترقیاتی پروگراموں کو بھی یہ روکنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ پارٹیاں بنگال کی فضا کو خراب کر رہی ہیں۔ یہاں عدم استحکام کی کوششیں کر رہی ہیں۔ لیکن بنگال کی عوام انہیں ایسا نہیں کرنے دیں گے اور وہ اپنے مقصد میں کامیاب نہیں ہوسکتے ہیں۔مسٹر چٹر جی نے کہا کہ بی جے پی یہاں سیاسی کھیل کھیل رہی ہے۔وہ مکھرا کے متاثرین تک راحتی اشیا جیسے کھانے کی چیزیں اور کمبل وغیرہ پہنچا رہے ہیں جہاں گزشتہ چند دنوں سے دفعہ 144نافذ کیا گیا ہے تاکہ وہاں کے صورتحال پر قابو پایا جا سکے۔انہوں نے بی جے پی سے سوال کرتے ہوئے کہا کہ ان چند سالوں میں وہ کہاں تھے۔ میں نے کبھی بھی اس سے قبل انہیں بنگال کے لوگوں کو ایک چاول کا دانہ بھی دیتے ہوئے نہیں دیکھا۔ اب ان کی ہمدردیاں کیوں جاگ گئی ہیں۔دریں اثنا بردوان بم دھماکہ کے بعد سے بی جے پی اور میڈیا کے ایک حلقہ کی طرف سے تنقیدوں کا سامنا کرنے والی مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی سے متعلق بنگلہ دیش کے ایک سینئر وزیر حسان الحق اننونے کہا کہ مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے بنگلہ دیش کی دہشت گرد تنظیموں کی حوصلہ افزائی نہیں کررہی ہیں ۔ایک مشہور انگریزی اخبار کو انٹر ویو دیتے ہوئے بنگلہ دیش کے سینئر وزیرحسان الحق نے ان کے پاس ایسی کورپورٹ نہیں ہے کہ مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی یا پھر ان کی پارٹی ترنمول کانگریس جماعت المجاہدین جیسی انتہا تنظیم کی حوصلہ افزائی کی ہے ۔بنگلہ دیشی وزیر نے اس کے ساتھ یہ بھی کہا کہ بنگلہ دیش کی جماعت اسلامی انتہا پسندانہ سرگرمیوں کو فروغ نہیں دیتی ہے اور اس کا تعلق وہابی اور خلافت گروپ سے نہیں ہے۔بنگلہ دیشی وزیر کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں آیاہے جب سیاسی پارٹیاں اور ایک بڑا حلقہ ممتا بنرجی پر الزام عاید کررہی ہے کہ ممتا بنرجی اور ان کی سیاسی جماعت ترنمول کانگریس سیاسی فائدہ حاصل کرنے کیلئے عسکریت پسندوں کو ٹھکانہ فراہم کررہی ہیں ۔ترنمول کانگریس کی طرف سے مسلسل یہ کہا جاتا رہے کہ بنگلہ دیش سے دراندازی روکنے کی ذمہ داری مرکزی حکومت کی ہے ۔بنگلہ دیشی وزیر نے کہا کہ انتہا پسند گروپ کئی برسوں سے ہندوستان میں سرگرم ہیں ۔مغربی بنگال کو عسکریت پسند طبقہ ٹھکانہ کے طور پر استعمال کررہے ہیں ۔مسٹرحسان الحق نے کہا کہ عسکریت پسند ہندوستان میں آنے کیلئے دو راستے استعمال کرتے ہیں ایک جموں کشمیر دوسرا آسام اور تری پورہ کے ذریعہ ہندوستان میں داخل ہوتے ہیں ۔یہ کوئی آج سے نہیں ہورہا ہے ۔اس لیے در اندازی کیلئے ممتا بنرجی کو ذمہ دار ٹھہرانا صحیح نہیں ہے ۔بنگلہ دیشی وزیر نے بنگلہ دیش کی موجودہ صورت حال پر کہا کہ بنگلہ دیش میں 1971میں جنگی جرائم میں ملوث ہونے پر جماعت اسلامی کے سینئر لیڈروں کے خلاف مقدمات چل رہے ہیں ۔بنگلہ دیش کی جماعت اسلامی عدالت کے فیصلوں کے خلاف ایک بات پھر تشدد برپا کرسکتی ہے اور اس کیلئے جماعت اسلامی بنگلہ دیش پاکستان سے ہندوستان کے راستوں ہتھیار منگواسکتی ہے ۔اس لیے حکومت ہند کو اس پر توجہ دینی چاہیے۔بنگلہ دیشی وزیر نے کہا کہ بنگلہ دیش کی خفیہ ایجنسی کو خدشہ ہے کہ پاکستان سے ہندوستان کے راستہ بنگلہ دیش میں ہتھیار برآمد کیے جاسکتے ہیں اسی وجہ سے ڈھاکہ اور دہلی مسلسل رابطے میں ہیں ۔مسٹرحسان الحق نے کہا کہ 2011میں ہندوستان کے سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ اور بنگلہ دیشی وزیر اعظم شیخ حسینہ کے درمیان ملاقات کے بعد سے ہی ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان خفیہ معلومات کا تبادلہ ہوتا رہا ہے۔بنگلہ دیش سے دراندازی کے ایشو پر سینئر وزیر حسان الحق نے کہا کہ کام کیلئے دراندازی اور دہشت گردی کیلئے دراندازی دو علاحد علاحدہ مسئلہ ہے ۔دہشت گردی کیلئے دراندازی کی اجازت نہیں دی جا سکتی ہے ۔جہاں تک کام کیلئے در اندازی کا سوال ہے تو ہمیں اس کودو ملکوں کے درمیان تجارتی تعلقات میں اضافہ کے تناظر میں دیکھنا چاہیے۔اس کے ساتھ ہی بنگلہ دیشی وزیر نے کہا کہ بنگلہ دیش کی جماعت اسلامی وہابی یا خلافت والی آئیڈولوجی پر یقین نہیں رکھتی ہے ۔حسان الحق نے گزشتہ ہفتہ جماعت اسلامی کے سینئر رہنما جنہیں جنگی جرائم میں ملوث ہونے پر پہلے سزائے موت دی گئی تھی مگر بعد میں ضعیف العمری کا حوالہ دے کر 90سالہ رہنماکو 90سال قیدکی سزا سنائی گئی تھی کے نماز جنازہ جم غفیر کو جماعت اسلامی کا حامی تسلیم کرنے سے انکار کیا ۔بنگلہ دیشی وزیر نے انگریزی اخبار سے کہا کہ بنگلہ دیش کی جماعت اسلامی کیڈر پیس پارٹی ہے مگر وہ اپنے ورکروں جو انتہا پسندانہ سرگرمیوں میں ملوث ہونے کی ترغیب نہیں دیتی ہے ۔

...


Advertisment

Advertisment