Today: Wednesday, September, 26, 2018 Last Update: 09:51 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سکھ فساد متاثرین کو انصاف دلانے کیلئے پیدل مارچ واحتجاج

 

فساد کے مجرمین کو سزادیناتو دور اعزاز سے نوازتی ہیں حکومتیں: شاہد علی*فسادیوں کو سخت سزا کیلئے مضبوط بل انتہائی ضروری: پرشانت بھوشن* سکھ متاثرین کو معاوضہ دینا سیاسی عمل: انجینئرمحمدسلیم

شمس آغاز شمسی

نئی دہلی، یکم نومبر (ایس ٹی بیورو)1984 کے سکھ فساد متاثرین کو انصاف دلانے کیلئے مختلف جماعتوں و تنظیموں نے مل کرآج صبح 10 بجے منڈی ہاؤس سے جنتر منتر تک ایک مارچ نکالا، جس میں کثیر تعداد میں تنظیموں کے لوگوں نے شرکت کی اور اور متحد ہوکر ہندوستانی حکومت سے مطالبہ کیا کہ مختلف تنظیمیں و جماعتیں مل کر مسلسل اس کوشش میں ہیں اور احتجاج کررہی ہیں کہ انہیں انصاف دیا جائے، لیکن سکھ فساد کو ہوئے 30 سال گزر چکے ہیں آج تک انہیں انصاف نہیں ملا،یہ کون سا جمہوری ملک ہے جہاں پر انصاف کی مانگ کرتے ہوئے اتنا عرصہ گرز گیا، لیکن انصاف نہیں ۔احتجاج کے بعد جنتر منتر پر ایک جلسہ کا بھی انعقاد کیا جس میں مختلف تنظیموں کے ذمہ داران نے عوام سے خطاب بھی کیا۔ اس موقع پر یونائٹیڈ مسلمس فرنٹ کے صدر ایڈوکیٹ شاہد علی نے اپنے خطاب میں کہا آج ہمیں افسوس ہوتا ہے کہ کھلے عام جو لوگ فساد کرواتے ہیں اورایک کمرے میں میں بیٹھ کر فساد کروانے کا منصوبہ بناتے ہیں انہیں حکومتیں اعزازسے اور اہم عہدوں سے نوازتی ہیں، جس کی ہمیں مذمت کرنی چاہئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایسے لوگوں کو کتنے بھی عہدے مل جائیں یاکتنے بھی اعزازات سے نواز دیاجائے، مگران پر جو کبھی نہ مٹنے والا داغ لگا ہے، وہ ختم نہیں ہوگا اور دنیا انہیں ہمیشہ فسادی اور دنگائی کہے گی۔ اس موقع پر انہوں نے سکھ فساد کے حوالہ سے کہا کہ اس میں جو لوگ ملوث تھے، اگر انہیں سزا ہو گئی ہوتی تو شاید 1992 کا سانحہ نہیں پیش آتا، گجرات فساد نہیں ہوتا، مظفر نگراور میرٹھ جیسے واقعات سامنے نہیں آتے۔ یہی نہیں دارالحکومت دہلی کے ترلوک پوری میں بھی فساد نہیں ہوتا ۔اایڈوکیٹ شاہد علی نے کہا کہ جب تک ان تمام فساد میں ملوث لوگوں کو سزا نہیں ملے گی جب تک یہ فساد بھی ختم نہیں ہوگا اور نہ ہی کسی کو انصاف ملے گا ۔لوک راج کے راگھون نے کہا کہ ہمارے ملک کے وزیر اعظم فساد میں جان گنوانے والے لوگوں کے رشتہ داروں کو معاضہ دے رہے ہیں،ایسا کر کے وہ جلے ہوئے پر نمک پاشی کررہے ہیں۔ اس موقع پر عام آدمی پارٹی کے لیڈر اور معروف وکیل پرشانت بھوشن نے بھی خطاب کرتے ہوئے بی جے پی سرکار کے معاوضے کے رقم پر تنقید کی۔انہوں نے کہاکہ فساد کے مجرمین کو سزا دینے کیلئے ایک مضبوط بل پاس ہونا انتہائی ضروری ہے کیونکہ اس سے ہی انہیں سزا مل پائے گی۔ جماعت اسلامی ہند کے قیم جماعت انجینئر محمد سلیم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سکھ فساد متاثرین کے مجرمین کو پہلے سزا دی جائے۔ انہوں نے بی جے پی سرکار پر سوالیہ نشان لگاتے ہوئے کہا کہ مودی نے جو معاوضہ کا اعلان کیا وہ سیاسی عمل ہے او ر انتخاب میں اس کا فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں۔ اس کے علاوہ جسٹس وی آر کرشنا ، قاسم رسول الیاس، این ڈی پنچولی، ارچنا کور،ایس فلکا،جرنیل سنگھ، شونالی ،روندر سنگھ اور خلاق احمد نے خطاب کیا۔ قابل ذکر ہے کہ اس پروگرام کا انعقاد لوک راج تنظیم اور یونائیٹڈ مسلمس فرنٹ کے مشترکہ تعاون سے کیاگیاتھا۔ یونائیٹڈ مسلمس فرنٹ کے نائب صدر ایڈکیٹ انور خلیل،سکریٹری ضیا انصاری ،نائب سکریٹری عمر دراز اور دوسرے ممبران بھی موجود تھے ۔

 

...


Advertisment

Advertisment