Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 11:17 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سری نگر میں دیوالی منائیں گے نریندر مودی

 

ریاست کے عوام وزیراعظم سے ' دیوالی کا تحفہ'  بھی چاہتے ہیں، وزیراعظم کے دورہ کا وادی میں ملا جلا ردعمل

نئی دہلی،21اکتوبر(یو این آئی) وزیر اعظم نریندر مودی جموں کشمیر کی راجدھانی سرینگر میں سیلاب متاثرین کے ساتھ دیوالی منائیں گے۔مسٹر مودی نے ٹوئیٹر پر خود یہ اطلاع دی ہے۔ انھوں نے کہا کہ وہ 23اکتوبر کو سری نگر میں رہیں گے اور بدترین سیلاب سے متاثر بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ پورا دن گزاریں گے۔دوسری جانب وزیراعظم نریندر مودی جمعرات کو دیوالی کے موقع پر سری نگر کے دورہ پر ہوں گے اور پورا دن حال ہی میں آئے زبردست سیلاب سے بری طرح متاثر افراد کے ساتھ گزاریں گے۔ مسٹر مودی کے اس فیصلے کا سیاسی اور علاحدگی پسند تنظیموں اور سیلاب زدہ افراد کا ملا جلا ردعمل سامنے آیا ہے۔ وزیراعظم نے ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا کہ میں 23 اکتوبر کو دیوالی کے دن سری نگر میں رہوں گے اور سیلاب سے متاثر اپنے بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ وقت گزاروں گا۔ پچھلے مہینے وادی میں آئے تباہ کن سیلاب کے بعد یہ وزیراعظم کا سری نگر کا دوسرا دورہ ہوگا۔وزیراعظم نے سیلاب کے فوراً بعد اس کی تباہ کاریوں کا سری نگر میں فضائی جائزہ بھی لیا تھا۔ مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے رہنما محمد یوسف تاریگامی نے کہاکہ یہ خوش آئند قدم ہے۔ یو این آئی سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ یہ فیصلہ بہت اچھا ہے اور ہم یہاں مسٹرمودی کا خیرمقدم کریں گے۔ تاہم انہوں نے یہ بھی کہا کہ ریاست کے عوام وزیراعظم سےدیوالی کا تحفہ‘ بھی چاہتے ہیں۔ سی پی آئی کے رہنما نے کہا کہ وزیراعظم کو دیوالی مبارک ہو لیکن انہیں سیلاب زدہ افراد کی حالت زار کی طرف بھی توجہ دینی ہوگی۔ انہوں نے مزید کہاکہ اس تباہ کن سیلاب کو جس سے لاکھوں افراد متاثر ہوئے ہیں جن کے مکانات ، گھر کا ساز و سامان ، فصلیں اور دیگر چیزیں تباہ ہوگئی ہیں، قدرتی آفت قرار دیا جائے۔اصل اپوزیشن پارٹی پپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے ترجمان اعلی نعیم اختر نے کہاکہ دیوالی کے موقع پر یہاں آنے کا فیصلہ وزیراعظم کا ہے جسے ہم ایک مثبت قدم مانتے ہیں ۔ تاہم اگر وہ عیدالاضحی کے موقع پر جب یہاں کے لوگ سیلاب کی تباہ کاری سے نبردآزما تھے، یہاں آتے تو یہ زیادہ بہتر ہوتا۔سخت گیر حریت کانفرنس کے ترجمان ایاز اکبر نے کہاکہ اس دورے کا عوام کی زندگی پر بمشکل ہی کوئی اثر پڑے گا جو ابھی تک سیلاب کی تباہ کاریوں سے سنبھل نہیں سکے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اس کے بجائے وزیراعظم کو سیلاب سے متاثر افراد کے لئے غیرملکی امداد کی اجازت دینی چاہئے۔مسٹر ایاز نے کہاکہ تباہ کن سیلاب کے 45 دن کے بعد بھی مرکز نے ابھی تک کسی پیکج کا اعلانہیں کیا ہے جبکہ اس نے ہدہد سمندری طوفان کے متاثرین کے لئے راحتی پیکج منظور کرنے میں ذرا بھی تاخیر نہیں کی تھی۔

 

...


Advertisment

Advertisment