Today: Wednesday, September, 26, 2018 Last Update: 09:52 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

انتخابات کی جانب راجدھانی نے بڑھائے مزید دو قدم

 

جوڑ توڑ کی سیاست میں یقین نہیں رکھتی بی جے پی

پارٹی لیڈر نند کشور گرگ کا بیان ، الیکشن کی صورت میں زبردست کارکردگی کامظاہرہ کرے گی کانگریس: آصف محمدخان کادعویٰ

نثاراحمدخان

نئی دہلی،21اکتوبر(ایس ٹی بیورو) ہریانہ اور مہاراشٹر میں شاندار کارکردگی کے بعد بی جے پی اب دہلی میں انتخابات کا سامنا کرنے کیلئے کمر کستی نظر آرہی ہے، وہیں کانگریس بھی دہلی میں انتخابات کیلئے تیار ہونے کا دعویٰ کررہی ہے۔ جہاں بی جے پی دعویٰ کررہی ہے کہ ریاست میں اسمبلی انتخابات ہونے کے بعد بی جے پی کو مکمل اکثریت حاصل ہوگی وہیں کانگریس کاکہناہے کہ پارٹی ریاست میں کافی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرے گی اور انتخابات کے نتائج چونکانے والے ہوں گے۔ دوسری جانب عام آدمی پارٹی نے بی جے پی کو دیئے گئے چیلنج کو دوہراتے ہوئے کہاہے کہ بی جے پی کو جلدازجلد دہلی میں انتخابات کرانے کیلئے اعلان کرنا چاہئے۔ عام آدمی پارٹی کے سربراہ اروند کجریوال کے ذریعہ انتخابات کرانے کے چیلنج پر بی جے پی کے سینئر لیڈر اور ممبر اسمبلی نند کشور گرگ نے روزنامہ ’’سیاسی تقدیر‘‘ سے فون پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ہم انتخابات کیلئے پوری طرح تیار ہیں۔ انہوں نے کہاکہ الیکشن کامطالبہ کرنے والی دوسری پارٹیوں کے لوگ شاید یہ سمجھ رہے ہیں کہ ہم توڑ جوڑ کے ذریعہ سرکار بنانا چاہتے ہیں جبکہ بی جے پی توڑ جوڑ کی سرکار میں بالکل یقین نہیں رکھتی۔ انہوں نے کہاکہ دہلی میں مجبوری کی سرکار کامیاب نہیں ہوسکتی اس لئے بی جے پی نے دوسروں کی حمایت لے کر سرکار بنانے کی کوشش نہیں کی۔ تری نگر کے ممبراسمبلی نندکشور گرگ نے انتہائی بیباکی کے ساتھ کہاکہ اب پارٹی سے مسلمانوں کو جوڑنے کیلئے پارٹی اقدامات کرے گی کیونکہ بی جے پی مذہب کے نام پر سیاست نہیں کرتی ہے بلکہ وہ سبھی مذاہب کو ساتھ لے کر چلنا چاہتی ہے۔ انہوں نے وزیراعظم نریندر مودی کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ وہ کبھی ہندومسلم کی بات نہیں کرتے ہیں بلکہ وہ 125کروڑ ہندوستانیوں کی بات کرتے ہیں اورسب کو ترقی کی پٹری پر لانا چاہتے ہیں۔ دوسری جانب اوکھلا اسمبلی حلقہ سے کانگریس کے ٹکٹ پر کامیاب ہونے والے آصف محمدخان کا ماننا ہے کہ اگر دہلی میں اسمبلی انتخابات ہوتے ہیں تو کانگریس کی کاردگی بہتر ہوگی کیونکہ لوگ کانگریس کے دوراقتدار کو یاد کررہے ہیں۔ انہوں نے دہلی میں ’مودی لہر‘کو خارج ازامکان قرار دیتے ہوئے کہاکہ مجھے نہیں لگتا کہ دہلی میں کوئی مودی لہر کام کرے گی بلکہ دہلی میں لوگ کانگریس کو ایک بار پھر لانا چاہتے ہیں۔ مسٹرخان نے یہ تسلیم کیاکہ ہوسکتا ہے کہ کانگریس کو مکمل اکثریت نہ ملے، مگر پارٹی کی کارکردگی میں زبردست بہتری آئے گی اور دوسری سیاسی پارٹیوں کے لوگ حیران رہ جائیں گے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کانگریس پہلے ہی دہلی میں انتخابات کرانے کا مطالبہ کرتی رہی ہے۔ دہلی میں انتخابات کرایا جانا چاہئے اور نیا مینڈیٹ حاصل کرکے غیر یقینی صورتحال کو ختم کی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ گذشتہ سال ہوئے دہلی اسمبلی انتخابات اور لوک سبھا میں بی جے پی کی مکمل اکثریت کے بعد دہلی کے لوگ دیکھ رہے ہیں اور وہ بی جے پی سرکار سے مطمئن نہیں ہیں، اس لئے ہمیں امید ہے کہ لوگ ایک بار پھر کانگریس پر بھروسہ جتائیں گے۔ آصف محمدخان نے یہ بھی کہاکہ الیکشن میں ایک بار پھر کامیابی کاخواب دیکھنے والی عام آدمی پارٹی کو لوگ اس بار خارج کردیں گے۔ بی جے پی کے ممبراسمبلی نندکشورگرگ نے کہاکہ دہلی کے لوگوں کا بی جے پی سے لگاؤ بڑھا ہے اس لئے ہمیں قوی امید ہے کہ بی جے پی مکمل اکثریت حاصل کرکے سرکار بنائے گی۔ مسٹر گرگ نے یہ بھی کہا کہ ہم ہریانہ انتخابات کو دہلی کی پریکٹس کے طور پر مانتے ہیں، کیونکہ ہریانہ کی سرحد دہلی سے منسلک ہے اور سیاسی اعتبار سے بھی کافی حدتک قربت ہے۔ جبکہ دہلی کے پارٹی کارکنان نے ہریانہ میں کافی کام کیا ہے اور ہم مکمل طور پر انتخابات کیلئے تیار ہیں ۔

...


Advertisment

Advertisment