Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 05:00 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

دہلی میٹرو نے پانچویں مرحلے میں 103کلومیٹر طویل لائن بنانے کی پیشکش کی

 

2022 تک منصوبہ کی تکمیل متوقع

نئی دہلی18اکتوبر (آئی این ایس انڈیا) میٹرو کے تیسرے مرحلے پر کام چل رہا ہے اور دہلی میٹرو ریل کارپوریشن نے پانچویں مرحلے میں 103.93کلومیٹر طویل لائن بنانے تجویز دی ہے جس کے سال 2022 تک تیار ہونے کی توقع ہے۔ڈی ایم آر سی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ پانچویں مرحلے کے لئے ایک وسیع منصوبہ رپورٹ تیار کرکے منظوری کے لئے دہلی حکومت اور مرکزی شہری ترقی کی وزارت کو سونپی جا چکی ہے۔رپورٹ کے مطابق پانچویں مرحلے کے تحت جو کریڈور مجوزہ ہیں وہ بالترتیب رٹھالا سے نریلا 21.73 کلومیٹر، جنک پوری ویسٹ سے آر کے آشرم تک28.92 کلومیٹر، مکندپور سے موج پور12.54کلومیٹر، اندرلوک سے اندرپرستھ 12.58 کلومیٹر،ا یرو سٹی سے تغلق آباد20.20 کلومیٹراور لاجپت نگر سے ساکیت جی بلاک7.96 کلومیٹرہیں۔ یہ گزرگاہ رٹھالا سے بروالا اور بوانا ہوتے ہوئے نریلا، مغربی جنک پوری سے پیراگڑھی چوک ہوتے ہوئے آر کے آشرم، مکندپور سے وزیر آباد اور کھجوری خاص ہوتے ہوئے موج پور، تغلق آباد سے ساکیت جی بلاک، مہرولی، مہپال پور، لاجپت نگر، ساکیت جی بلاک ہوتے ہوئے اییروسٹی، ادرلوک سے دیابستی، نئی دہلی ریلوے اسٹیشن، دہلی گیٹ اور دہلی سیکرٹریٹ ہوتے ہوئے اندرپرستھ پر محیط ہے۔ترجمان نے بتایاکہ جس طرح کا تجربہ رہا ہے اس بنیاد پر کام شروع ہونے کی تاریخ سے 72 ماہ کا وقت اس میں لگ سکتا ہے۔کام اپریل 2016 میں شروع ہوگا اور 31 مارچ 2022 تک مختلف مراحل میں مختلف حصوں کو کھولا جا سکے گا۔انہوں نے مزید بتایاکہ فرید آباد کو جوڑنے والے روٹ کا کام ستمبر 2011میں شروع ہوا تھا اور اگلے سال مئی میں اس کا کام مکمل ہو جائے گا۔اس سیکشن میں 88 فیصد کام مکمل ہو گیا ہے۔منڈی ہاؤس کشمیری گیٹ کے 9.37 کلومیٹر حصے میں 78 فیصد کام ہوا ہے اور دسمبر 2015تک اس کے مکمل ہونے کا امکان ہے۔اس حصے کا کام مئی 2011 میں شروع ہوا تھا۔سب سے طویل 55.697 کلومیٹر کے مکندپور-شووہار گزرگاہ کے مارچ 2016 تک کھلنے کی توقع ہے اور گزشتہ ماہ تک55فیصد کام ہوا ہے۔اس کا کام ستمبر 2011 میں شروع ہوا تھا ۔

 

...


Advertisment

Advertisment