Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 09:07 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

حکومت نے تسلیم کیا کہ تھوریم کی اسمگلنگ ہوئی ہے

نئی دہلی، 09 دسمبر (یوا ین آئی) حکومت نے جنوبی ہند کے کئی علاقوں سے جوہری ایندھن کے طور پر کام میں آنے والے تھوریم کی بڑے پیمانے پر اسمگلنگ کی بات کو آج تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ تھوریم جیسی معدنیات کی اسمگلنگ کو روکنے کے لئے خلائی تکنیک سے نگرانی کرنے اور بندرگاہوں پر ریڈیو ایکٹیو اسکینر لگانے کی منصوبہ بندی تیار کی جا رہی ہے ۔ وزیر اعظم کے دفتر میں وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے لوک سبھا میں ایک سوال کے زبانی جواب میں کہا کہ نایاب معدنیات کے کھدائی کے لائسنس اور ٹھیکے دیئے جانے کے سلسلے میں جنوبی ہند کے کچھ اخبارات میں ایسی رپورٹیں آئیں تھیں کہ تھوریم کی چوری اور اسمگلنگ ہو رہی ہے ۔ دراصل جنوبی ہند میں نایاب معدنیات میں سے سات معدنیات ایک ساتھ موجود ہوتے ہیں جن میں خام تھوریم بھی ہوتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ بعد میں تفتیش کرنے پر پتہ چلا کہ جن لوگوں کو نایاب معدنیات گارمائٹ کی کھدائی کا پٹہ دیا گیا تھا ان میں سے کچھ لوگوں نے مونو زائٹ بھی کھود کر حاصل کر لیا اور اسے باہر فروخت کردیا۔ مونازائٹ ایسا معدنیات ہے جس میں تھوریم کاعنصر موجود ہوتا ہے ۔ اس طرح گارمائٹ کے لائسنس یافتگان نے مونازائٹ کے ذریعے تھوریم کی اسمگلنگ ہے ۔ ڈاکٹر سنگھ نے بتایا کہ حکومت نے اس کے لئے خلائی تکنیک کے سہارے ملک بھر میں نایاب دھاتوں اور معدنیات کے قدرتی ذخائر کی چوبیس گھنٹے نگرانی کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور جیسے ہی کہیں غلط سرگرمی دکھائی دے گی۔ اس پر فوری طور پر کارروائی کی جائے گی۔
 اس کے علاوہ بندرگاہوں اور کنٹینر ڈپو میں ریڈیو ایکٹیو اسکینر لگانے کی منصوبہ بندی تیار کی جا رہی ہے ۔ اس طرح سے ایسی اسمگلنگ روکنے کے لئے ضروری اقدامات کئے جائیں گے ۔
 
...


Advertisment

Advertisment