Today: Sunday, September, 23, 2018 Last Update: 12:03 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

گھنے کہرے اور سردی سے اترپردیش کے معمولات زندگی ٹھپ

 
لکھن¶،8 دسمبر (یو این آئی) اتراکھنڈ کی پہاڑیوں پر ہونے والی برف باری سے اترپردیش کے میدانی علاقے میں ٹھنڈ میں اضافہ ہونے اور پوری ریاست میں پھیلے گھنے کہرے کی چادر نے جہاں سڑکوں پر موٹر گاڑیوں کو رینگنے پر مجبور کردیا ہے وہیں لوگ شام ہوتے ہی گھر میں قید ہونے پر مجبور ہورہے ہیں۔ریاست میں کہرے کی وجہ سے ہونے والے حادثات میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 16 افراد ہلاک اور 51 دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔بریلی اور آس پاس کے علاقوں میں جاری برفیلی سرد ہوا¶ں اور شدید کہرے کی وجہ سے آج بھی لوگ شدید سردی میں کپکپاتے رہے ہیں۔علاقے میں آج بھی کہرا چھایا رہا ۔ درجہ حرارت میں گراوٹ آنے سے پڑنے والی شدید سردی کی وجہ سے پورے علاقے میں معمولات زندگی درہم برہم رہے اور لوگ شام ہوتے ہی اپنے گھروں میں دبکنے پر مجبور ہوگئے ۔بری طرح سے کپکپا دینے والی سردی نے پورے علاقے میں ریل اور سڑک ٹریفک کی رفتار پر روک لگادی ہے ۔ بریلی جنگشن اسٹیشن سے گزرنے والی طویل مسافت کی بیشتر ٹرینیں آج بھی اپنے مقررہ وقت سے کئی گھنٹے تاخیر سے چل رہی ہیں۔دریں اثنا محکمہ موسمیات کے ذرائع نے آج یہاں بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران بریلی میں دن کا کم از کم درجہ حرارت 12.9 ڈگری سینسیلس درج کیاگیا جب کہ اس دوران یہاں موسم عام طور پر خشک رہا ۔کہرے کی شدت نے ریلوے ، ہوائی اور سڑک ٹریفک نظام کی رفتار پر لگام لگائے رکھی ۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سردی سے سات افراد کی موت ہوئی جب کہ کہرے کی وجہ سے ہونے والے حادثوں میں سولہ افراد مارے گئے اور 51 دیگر زخمی ہوگئے ۔گھنے کہرے کی وجہ سے ہونے والے حادثوں میں رام پور ، سنبھل ، پرتاپ گڑھ اور فیض آباد میں دو ،دو اور اوریا ،حمیر پور، بریلی، مہوبہ، مراد آباد، بجنور، متھرا اور علی گڑھ میں ایک ایک شخص کی موت ہوگئی۔ کہرے کی وجہ سے ریاستی راجدانی لکھن¶ میں واقع چودھری چرن سنگھ انٹرنیشنل ایرپورٹ سے طیاروں کی پروازوں میں بھی رخنہ پڑا ۔ گھنے کہرے کی وجہ سے صبح طیارہ نہیں اترسکا اسی طرح سے طیاروں کے پرواز بھرنے میں بھی پریشانی ہوئی۔
 
...


Advertisment

Advertisment