Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 10:26 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

اے آئی آئی ایس ایچ جیسے 5نئے اداروں کے قیام کا اعلان

 

وزارت صحت کا اندھے پن پر قابو پانے سے متعلق اسکیم کی پیش رفت کا جائزہ لے گا:ڈاکٹر ہرش وردھن

میسور؍بنگلور،17اکتوبر(آئی این ایس انڈیا)مرکزی وزیر صحت، ڈاکٹر ہرش وردھن نے، قومی سطح پر آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف اسپیچ اینڈ ہیئرنگ اداروں (اے آئی آئی ایس ایچ) یہاں کا پہلا مرکز جواب اپنا گولڈن جوبلی سال منارہا ہے، کی طرز پر 5نئے اداروں کے قیام کے منصوبوں کا اعلان کیا۔مسٹر وردھن جلد ہی ان نئے مراکزکے لئے جگہ کا تعین کرنے کی خاطر ایک کمیٹی مقررکریں گے۔ اسی کے ساتھ ایک اور کوشش کے تحت ملک کے تمام میڈیکل کالجوں میں اسپیچ اور آڈیولوجی ڈیپمارٹمنٹ کے قیام کا بھی منصوبہ ہے۔ وزارت کی اس تجویز میں متعدد کالج دلچسپی رکھتے ہیں۔ میسورمیں آج، اے آئی آئی ایس ایچ کے طلباء اورفیکلٹی سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر ہرش وردھن نے کہا کہ صحت مند ہندوستان کے ان کے خواب میں مواصلاتی خامیوں کی روک تھام اور مریضوں کی بازآبادکاری ایک اہم میدان ہے۔ انہوں نے اے آئی آئی ایس ایچ کی ڈائریکٹر ڈاکٹر ایس آر ساوِتھری کے زیر قیادت تجربے کا رفیکلٹی سے درخواست کی کہ وہ اپنی وسیع معلومات کا استعمال کر کے ملک بھر میں نافذالعمل کیاجاسکنے والا ایکشن پلان تیارکریں۔ ڈاکٹر ہرش وردھن نے کل دہلی انتظامیہ کو ’’ خاموش دیوالی‘‘ منانے کے لئے ایک مراسلہ تحریر کیاتھا، آج پھر اس پر زوردیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے 2005 کے حکم کو ملک بھر میں نافذ کرنے اور پڑوسی علاقوں میں خطرناک آوازوالے پٹاخوں کوممنوع قراردینے کی ضرورت پر زور دیا۔ اس موقع پرکرناٹک کے وزیر محصول، وی سری نواس پرساد، کرناٹک کے وزیرصحت یوٹی کھادر،میسوراورکوڈا گوکے ممبرپارلیمنٹ پرتاپ سمہا، ایم ایل اے واسو، اے آئی آئی ایس ایچ کے ڈائریکٹر ایس آر ساوِتھری، مرکزی صحت سکریٹری جناب لو ورمااوردیگر سینئرحکام نے شرکت کی۔ مرکزی وزیر صحت ڈاکٹر ہرش وردھن نے اندھے پن پر قابو پانے سے متعلق قومی پروگرام (این پی سی بی) کی پیش رفت کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کا مقصد اس کے نفاذ میں تیزی لانا ہے۔ عالمی یوم بینائی کے موقع پر بنگلور میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر صحت نے کہا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ بارہویں منصوبہ (2012-17) کے لیے این پی سی بی سے متعلق مختص کردہ فنڈ کا صحیح استعمال کیا جاسکے اور انہوں نے کہا کہ وہ ریاستی حکومتوں کے سامنے اس مسئلے کو اٹھائیں گے۔ وزیر نے کہا کہ 100فیصد مرکزی امداد یافتہ اسکیم کے طور پر 1974 میں این پی سی بی کا افتتاح کیا گیا تھا اور اس کا مقصد اندھے پن میں تخفیف لانا تھا۔ تاہم 28سال گزر جانے کے باوجود بھی اس کی شرح میں کوئی قابل ذکرفرق نظر نہیں آیا۔2006-07 میں کرائے گئے ’’ریپڈ سروے آن اوائیڈیبل بلائنڈ نیس‘‘ میں 2000 میں ایک اعشاریہ ایک فیصد سے 2006 میں ایک فیصد تک اوائیڈیبل بلائنڈ نیس میں تخفیف دکھائی گئی ہے۔ این پی سی بی کا ہدف موجودہ ایک فیصد سے 2020تک اندھے پن کے واقعات میںِ صفر اعشاریہ تین فیصد تک کمی لانا ہے۔ وزیر جنہوں نے کہ خود اپنے پورے جسم کے عطیہ کا وعدہ کیا ہے کہا کہ حکومت آنکھوں کے عطیہ کے تصور کو فروغ دینے کے لیے غیر سرکاری تنظیموں کے ساتھ مل جل کر کام کررہی ہے۔

 

...


Advertisment

Advertisment