Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 10:34 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

عدالت کا دروازہ کھٹکھٹا سکتے ہیںیوگیندر یادو اور بھوشن

 

آپ کے چیف ترجمان کے عہدہ سے ہٹائے جا سکتے ہیں یوگیندریادو
نئی دہلی30مارچ (آئی این ایس انڈیا)عام آدمی پارٹی (آپ)کی سیاسی معاملات کی کمیٹی، مجلس عاملہ اور اہم عہدوں سے ہٹائے گئے یوگیندر یادو اور پرشانت بھوشن گزشتہ دنوں پارٹی کے واقعات کو لے کر کورٹ اور الیکشن کمیشن کا دروازہ کھٹکھٹانے کی تیاری کر رہے ہیں۔اتوار کو انہوں نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ کی میٹنگ کی ہے، جس میں آگے کی حکمت عملی پر بحث ہوئی۔ان لیڈروں کے قریبی لوگوں کاکہناہے کہ میٹنگ میں تمام اختیارات پر غور کیا گیا۔اگلے کچھ دنوں میں بڑا اعلان کیا جا سکتا ہے۔دوسری طرف کجریوال خیمہ پرشانت اور یوگیندر کے ساتھیوں اور ان سے ہمدردی رکھنے والے رہنماؤں اور کارکنوں کو بھی پارٹی سے باہر کا راستہ دکھانے کی حکمت عملی پر آگے بڑھ رہا ہے۔ قریبی ذرائع نے بتایا کہ اجلاس میں یوگیندر یادو نے آگے کے سیاسی امکانات پر تفصیل سے اپنی رائے رکھی، جبکہ پرشانت بھوشن نے قانونی پہلو پر گفتگو کی۔بتایا گیا کہ پرشانت بھوشن نے قومی کونسل کے اجلاس کو غیر آئینی قرار دیتے ہوئے معاملے کو عدالت یا الیکشن کمیشن میں لے جانے کی بات کہی۔یوگیندر یادو نے آگے کی سیاسی حکمت عملی پر گفتگو کی۔خاص زور اس بات پر رہا کہ آپ کے زیادہ سے زیادہ کارکنوں اور غیر جانبدار رہنماؤں تک پیغام پہنچایا جائے کہ دوسرا گروہ مخالف آوازکوسننے کو تیار نہیں ہے۔ایک بار اگر وہ دہلی سمیت ملک بھر کے کارکنوں اور لیڈروں کو اپنے مسائل کو سمجھانے میں کامیاب رہے تو آپ کی سیاسی زمین ان حق میں ہوگی۔یوگیندریادو، پرشانت بھوشن، پروفیسر آنندکمار، اجیت جھا کو قومی مجلس عاملہ سے نکالے جانے کے بعد دو رکن اسمبلی کرنل دیویندر سہراوت اور پنکج پشکر ان لیڈروں کے ساتھ دکھائی دیئے تھے۔ان کے علاوہ پنجاب سے رکن پارلیمنٹ دھرم ویر گاندھی بھی ان کے ساتھ تھے۔دہلی کے دونوں رکن اسمبلی یوگیندر یادو اور پرشانت بھوشن کوایگزیکٹیو اور اہم عہدوں سے ہٹائے جانے کی مخالفت میں پارٹی سے تحریری شکایت کر سکتے ہیں۔تاہم، پارٹی چاروں کو اہم ذمہ داریاں ہٹانے کے بعد ان کے ساتھیوں کو ٹارگیٹ کرنے کی تیاری کی جا رہی ہے۔آ پ ذرائع کا کہنا ہے کہ یوگیندر یادو اور پرشانت بھوشن نے پارٹی کو بہت نقصان پہنچایا ہے۔انہیں جلد ہی پارٹی سے بھی نکالاجا سکتا ہے ۔ان کے جانے کے بعد ان کے ساتھی یا ان سے ہمدردی رکھنے والے رہنما اور کارکن پارٹی کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔یہ لیڈر کبھی بھی مخالفت کے سر بلند کر سکتے ہیں۔پارٹی کی دوبارہ کوئی راز فاش نہ ہو ۔ اس لئے ایسے تمام لوگوں کو بھی اہم ذمہ داریوں سے ہٹا دیا جائے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ دہلی سمیت ملک بھر میں ان لیڈروں سے جڑے کارکنوں اور لیڈروں کی شناخت کرکے ان کے خلاف تادیبی کارروائی کرتے ہوئے انہیں پارٹی سے باہر نکالا جائے گا۔پارٹی نے اراکین اسمبلی کومشورہ دیا ہے کہ وہ اپنی اسمبلی کے بارے میں ہی میڈیا سے بات کر سکتے ہیں۔دوسرے کسی مسئلے پر میڈیا سے بات کرنے کی انہیں اجازت نہیں ہے۔بغیر پارٹی کی اجازت کے وہ میڈیا سے بات نہیں کریں گے۔آپ لیڈر آشوتوش کے مطابق اس طرح کے معاملے ڈسپلن کے دائرے میں آئیں گے۔قومی کونسل نے قرارداد منظور کی ہے کہ کوئی لیڈر اگر پارٹی لائن سے ہٹ کر بات کرتا ہے کہ اس پر کارروائی کا حق پی اے سی کو ہوگا۔ذرائع بتاتے ہیں کہ سینئر رہنماؤں میں شماریوگیندریادواورپرشانت بھوشن کے قریبیوں کی پارٹی میں اچھی گرفت ہے۔ممکن ہے کہ آنے والے وقت میں وہ دونوں رہنماؤں کے اشارے پر مخالفت کے سر بلند کریں۔ایسا ہونے پر ایک دن کی نوٹس پر پی اے سی انہیں پارٹی سے نکال سکتی ہے۔

دوسری جانب پرشانت بھوشن کو آپ کی قومی انتظامی کمیٹی کے سربراہ کے عہدے سے ہٹائے جانے کے بعد اگلا نشانہ یوگیندریادو بن سکتے ہیں جنہیں پارٹی کے چیف ترجمان عہدے سے ہٹایا جا سکتا ہے۔عام آدمی پارٹی کے ذرائع نے کہا کہ پارٹی جلد ہی ترجمانوں کی نئی فہرست جاری کرے گی جس یادو کا نام نہیں ہو گا۔ایک سینئر پارٹی لیڈر نے نام ظاہر نہ کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہاکہ ہم جلد ہی پارٹی ترجمانوں کی نئی فہرست لائیں گے۔ شک ہے کہ یادوکا نام فہرست میں نہیں ہو گا۔پارٹی کی سیاسی معاملات کی کمیٹی اور قومی مجلس عاملہ سے پرشانت بھوشن کے ساتھ ہٹائے جانے کے بعد یادو کو چیف ترجمان عہدے سے ہٹائے جانے کا امکان ہے۔بھوشن اور یادو کو اہم کمیٹیوں سے ہٹائے جانے کو انہیں پارٹی سے باہر کرنے کے اشارہ کے طور پر سمجھا جا رہا ہے۔یہ دیکھنادلچسپ ہے کہ یادو ہی وہ واحد لیڈر تھے جنہیں پارٹی کے ترجمان کا پینل بنائے جانے کے وقت اہم ترجمان بنایاگیاتھا۔پارٹی نے کل بھوشن کو انتظامی کمیٹی سے برخواست کردیاتھااور ان کی جگہ تین ارکان کا ایک پینل تشکیل دیا ہے۔یہ رکن آپ کنوینر کیجریوال کے قریبی مانے جاتے ہیں۔پارٹی قیادت کی تنقید کی وجہ سے آپ کے اندرونی لوک پال ایڈمرل(بال)ایل رام داس کو بھی باہر کا راستہ دکھا دیا گیا تھا۔ان کی جگہ تین رکنی لوک پال پینل بنایا گیا ہے جس میں دو سابق آئی پی ایس اور ایک ماہرتعلیم شامل ہیں۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment