Today: Sunday, September, 23, 2018 Last Update: 12:55 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

اے ایم یو کے ویمنس کالج میں یوم بانیان کی تقریب منعقد

 

وائس چانسلر لیفٹیننٹ جنرل ضمیرا لدین شاہ ( ریٹائرڈ) نے کالج کی سب بہترین بی اے کی طالبہ فاکہہ ایوب زنجانی کو پاپا میاں پدم بھوشن اور شبینہ فاطمہ کو ایم جے حیدر یادگاری انعام سے سرفراز کیا
فہمیدہ پروین
علی گڑھ23؍مارچ(ایس ٹی بیورو ) علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ویمنس کالج میں آج یومِ بانیان کی تقریب نہایت جوش و خروش کے ساتھ منعقد کی گئی۔اس موقعہ پر وائس چانسلر لیفٹیننٹ جنرل ضمیرا لدین شاہ ( ریٹائرڈ) نے کالج کی سب بہترین بی اے کی طالبہ فاکہہ ایوب زنجانی کو پاپا میاں پدم بھوشن اور شبینہ فاطمہ کو ایم جے حیدر یادگاری انعام سے سرفراز کیا۔شیخ عبداللہ کی1902میں وحید جہاں سے دہلی کے زینت محل میں شادی ہوئی تھی۔ اس شادی کی سالگرہ کو یومِ بانیان کے طور پر منایا جاتا ہے۔ساتھ ہی پرو وائس چانسلر برگیڈیئر ایس احمد علی نے بیڈ منٹن میں اتر پردیش کی چیمپئین اور عالمی کھیلوں میں اس ادارہ کا نام روشن کرنے و الی سارا نقوی اور بیڈ منٹن میں ہی کنور جیت سنگھ کو سرفراز کیا۔ ساتھ ہی ا ین سی سی میں چھ تمغات جیتنے والی طالبہ کلثوم صلاح الدین کو بھی سرفراز کیاگیا۔وائس چانسلر جنرل شاہ نے انگریزی کی پروفیسر عفت آراء اور ڈاکٹر احسان اللہ فہد کی کتاب کا بھی اجراء کیا۔ ساتھ ہی کالج میگزین کا بھی اجراء کیا۔اس موقعہ پر طالبات کی طرف سے جاری نیوز لیٹر کا اجراء بھی عمل میں آیا۔وائس چانسلر جنرل شاہ نے ا س موقعہ پر ایک اسمارٹ کلاس روم کا بھی افتتاح کیا۔ یہ ا سمارٹ کلاس روم یونیورسٹی کورٹ کے رکن سید ندیم احمد نے اپنی والدہ کے نام پر سفینہ گروپ کی جانب سے بنوایا ہے۔وائس چانسلر جنرل شاہ نے یومِ بانیان تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاپا میاں نے یہ کالج قائم کرکے انسانیت اور خصوصی طور پر خواتین کی خود مختاری کی سمت اہم رول ادا کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ عبداللہ لاج اب یونیورسٹی کی ملکیت ہوگیا ہے اور وہاں خالی پڑی زمین پر اسپورٹس کمپلیکس اور سوئمنگ پول بنایا جا رہا ہے۔ ساتھ ہی لڑکیوں کے سرپرستوں کے لئے و زیٹر روم بھی تعمیر کرایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ لڑکیوں کا نیا اقامتی ہال بن جانے پر اندرا گاندھی ہال کو ویمنس کالج کو دے دیا جائے گا تاکہ یہاں کی طالبات کو اقامت کی بہتر سہولت مہیا ہوسکے۔ وائس چانسلر جنرل شاہ نے کہا کہ سلیشکن کمیٹیوں کا پہلا دور مکمل ہونے پر دوسرے دور میں ا ساتذہ کی تقرری کرتے و قت یونیورسٹی کی صحت و ترقی کے لئے پروجیکٹ پر بھی توجہ دی جائے گی اور جن ا ساتذہ نے زیادہ پروجیکٹ کئے ہیں انہیں تقرری میں ترجیح دی جائے گی۔جنرل شاہ نے کہا کہ شدید مخالفتوں کے باوجود بھی پاپا میاں نے وہ عظیم کام انجام دیا جسے فراموش نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے یہ بھی ہدایت کی کہ کالج لائبریری اور مولانا آزاد لائبریری سے طالبات زیادہ سے زیادہ استفادہ کریں تاکہ بڑی سرکاری ملازمتوں اور ایڈمنسٹریٹو سروسیز میں بھی یہاں کی طالبات منتخب ہوسکیں۔پرو وائس چانسلر برگیڈیئر ایس احمد علی نے کہا کہ یہ کالج شیخ عبداللہ کی سخت محنت اور قربانی کا نتیجہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ کالج ہمیشہ ان کے دل کے قریب ہے۔برگیڈیئر علی نے کہا کہ پاپا میاں اور ان کی بیگم اعلیٰ بی نے عورتوں کی تعلیمی ترقی کا جو خواب دیکھا تھا وہ اس کالج کی شکل میں آج موجود ہے۔ ان کے جانشینوں نے جو قربانیاں دیں انہیں کبھی فراموش نہیں کیا جا سکتا۔ویمنس کالج کی پرنسپل پروفیسر نعیمہ گلریز نے کہا کہ موجودہ وائس چانسلر جنرل شاہ اس کالج کی توسیع و ترقی میں اہم رول ادا کر رہے ہیں۔ دو بسیں مہیا کرائی گئیں، پانچ کروڑ کی لاگت سے اسپورٹس کامپلیکس تیار ہوگا، دس لاکھ روپیہ لائبریری کی توسیع کے لئے مہیا کرایا ساتھ ہی چارا سمارٹ کلاس روم بھی بن گئے ہیں۔ڈاکٹر رومانہ صدیقی نے نظامت کے فرائض انجام دئے، فیمیل ایجوکیشن سوسائٹی کی سکریٹری پروفیسر ذکیہ اطہر صدیقی نے بھی طالبات کو سرٹیفکیٹس پیش کئے۔ کالج کی ا ستانی ڈاکٹر نازیہ حسن نے گیت، طالبات نے کالج ترانہ، گروپ سونگ، یونیورسٹی ترانہ اورقومی ترانہ پیش کیا۔ پروفیسر عمرانہ نسیم نے حاضرین کا شکریہ ا دا کیا۔

...


Advertisment

Advertisment