Today: Wednesday, September, 19, 2018 Last Update: 10:28 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

بردوان دھماکہ :مغربی بنگال کے مدارس سیکورٹی ایجنسیوں کے نشانے پر

 

این آئی اے کے بعد این ایس جی نے سنبھالی کمان، مدرسوں کی تلاشی شروع ،این آئی اے نے برداون دھماکے کی ابتدائی رپورٹ مرکز کو بھیجی

بردوان16کتوبر(یو این آئی)بردوان دھماکہ کی جانچ کیلئے این آئی اے سے مدد طلب کیے جانے بعد نیشنل سیکورٹی گارڈ(این ایس جی)نے آج دھماکہ خیز اشیاء کا پتہ لگانے کیلئے کئی مدرسہ کی تلاشی لی ہے ۔
این آئی اے کے مطابق اس دھماکہ کا کلیدی مجرم قادر شیخ کے استعمال میں ایک لال کلر کی موٹر سائیکل ضبط کی گئی ہے ۔شیخ قادر دھماکہ کے بعد سے ہی فرار ہے ۔این آئی اے کے مطابق قادر دھماکہ کے بعد آش گرام میں 4سے پانچ دن تک ٹھہرا رہا ۔قادر جماعت المجاہدین کا مبینہ دہشت گرد ہے ۔این آئی اے نے مشتبہ دہشت گردحبیب الرحمن شیخ کو گرفتار کرنے کے ایک دن بعد موٹر سائیکل برآمد کی ہے۔ حبیب کو بیر بھوم ضلع کے بولپور شہر کے مولوک سے گرفتار کیا گیا تھا ۔تلاشی کتا سمیت این ایس جی کی 13رکنی ٹیم بردوان ضلع کے منگل کوٹ بلاک میں واقع سموئیلا مدرسہ کی تلاشی لی۔این ایس جی کے ہتھیار بردار جوانوں کی مدد سے بیٹری، کیمیکل اور کتابیں ضبط کی ہیں ۔یہاں سے این آئی اے ٹیم بھی کچھ سامان برآمد کرچکی ہے۔این آئی اے نے اپنی رپورٹ میں منگل کورٹ کے شیموئیلامدرسہ سمیت کئی مدرسوں سے متعلق کہا ہے کہ وہاں جہادی سرگرمیاں انجام د ی جارہی ہیں ۔ٹریننگ اور بم بھی بنائے جاتے ہیں ۔ذرائع کے مطابق اب تک ہندوستان بنگلہ دیش سے یہ شکایت کرتا رہا ہے کہ شمال مشرقی ریاستوں کے ملٹی ٹینٹوں کو اپنی زمین فراہم کرتا رہا ہے مگر اب صورت حال بدل چکی ہے اب غیر دہشت گردان اضلاع میں اپنی سرگرمی بڑھارہے ہیں ۔این آئی اے نے بردوان ددھماکہ کی جانچ سی آئی ڈی سے لے کر کررہی ہے ۔بردوان دھماکہ میں دو مشتبہ دہشت گردکی موت ہوگئی تھی اور ایک شخص زخمی ہوگیا تھا جس کا علاج کلکتہ کے ایس ایس کے ایم اسپتال میں چل رہا ہے۔دوسری جانب بردوان دھماکہ کی جانچ کی ذمہ داری لینے کے 6دن بعد این آئی اے نے مرکزی وزارت داخلہ کو پرائمری رپورٹ بھیج دی ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس دھماکہ کے پیچھے بنگلہ دیش کی جماعت المجاہدین اور انڈین مجاہدین کا ہاتھ ہے ۔ اس کے علاوہ مغربی بنگال کے چار اضلاع مذہی انتہا پسندی اور دہشت گردی میں اضافہ کی یہ علامت ہے ۔خصوصی ذرائع کے مطابق یہ رپورٹ مرکزی وزارت داخلہ کو کل بھیجی گئی ہے ۔رپورٹ کے مطابق جماعت المجاہدین بنگلہ دیش پر 2005سے ہی بنگلہ دیش حکومت نے پابندی عائد کررکھی ہے ۔یہ جماعت اپنی سرگرمیوں کی توسیع کیلئے ہندوستان کی سرزمین کو انڈین مجاہدین کی مدد سے استعمال کررہی ہے ۔جہادی سرگرمیوں میں اضافہ کیلئے 7غیر منظورشدہ مدارس کا بھی استعمال کیا گیا ہے ۔جماعت المجاہدین کو بنگلہ دیش میں 2005میں 300مقامات پر بم دھماکہ کا ذمہ دار ٹھہرایا جاتا ہے ۔این آئی اے نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ جماعت المجاہدین بنگلہ دیش کی جماعت اسلامی کی ایک تنظیم ہے۔بنگلہ دیش کی جماعت اسلامی نظام کے نفاذ کیلئے کوشش کرتی ہے ۔این آئی اے کی رپورٹ کے مطابق جماعت المجاہدین اور انڈین مجاہدین بنگال کے چار اضلاع بردوان، مالدہ ، مرشد آباد اور ندیا مشترکہ طور پر جہادی سرگرمیوں میں مصروف ہے ۔مالدہ ، مرشد آباد اور ندیا بنگلہ دیش کی سرحد سے متصل ہے ۔این آئی اے رپورٹ کے مطابق جماعت المجاہدین کے چار سے پانچ لیڈر گزشتہ 6سے سات مہینہ میں ان اضلاع کا متعدد مرتبہ دورہ کیا ہے ۔ذرائع کے مطابق آسام کا نچلی علاقہ بھی ان دنوں جہادی سرگرمیوں کا مرکز بنا ہوا ہے ۔این آئی اے نے اپنی رپورٹ میں منگل کورٹ کے شیموئیلامدرسہ سمیت کئی مدرسوں سے متعلق کہا ہے کہ وہاں جہادی سرگرمیاں انجام د ی جارہی ہیں ۔ٹریننگ اور بم بھی بنائے جاتے ہیں ۔ذرائع کے مطابق اب تک ہندوستان بنگلہ دیش سے یہ شکایت کرتا رہا ہے کہ شمال مشرقی ریاستوں کے ملٹی ٹینٹوں کو اپنی زمین فراہم کرتا رہا ہے مگر اب صورت حال بدل چکی ہے اب غیر دہشت گردان اضلاع میں اپنی سرگرمی بڑھارہے ہیں ۔این آئی اے نے بردوان ددھماکہ کی جانچ سی آئی ڈی سے لے کر کررہی ہے ۔بردوان دھماکہ میں دو مشتبہ دہشت گردکی موت ہوگئی تھی اور ایک شحص زخمی ہوگیا تھا جس کا علاج کلکتہ کے ایس ایس کے ایم اسپتال میں چل رہا ہے۔ذرائع کے مطابق این آئی اے نے مختلف مقامات پر چھاپہ مارکر کئی دستاویز اور اردو وعربی کی کتابیں ضبط کی ہیں۔ این آئی اے نے عربی و اردو کی کتابوں کا ترجمہ کرنے کیلئے مرکز سے مدد طلب کی ہے ۔حکمراں جماعت ترنمول کانگریس اپوزیشن جماعتوں کی تنقیدوں کی زد میں ہے ۔

...


Advertisment

Advertisment