Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 09:56 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

کجریوال کی واپسی کے بعد دہلی سرکار پر حملہ آور ہوئی بی جے پی


بی جے پی کو آئی مسلمانوں کی یاد، کجریوال پر لگایا استعمال کرنے کا الزام، ریاستی صدر ستیش اپادھیائے نے پانی اور بجلی کے معاملے پر لگایا عوام کو گمراہ کرنے کا الزام
نثاراحمدخان
نئی دہلی، 17مارچ (ایس ٹی بیورو)عام آدمی پارٹی کی سرکار نے عوام کو گمراہ کیاہے اور اس نے پانی اور بجلی کے نام پر جو وعدے کئے ہیں ا س سے دہلی کے لوگوں کوکوئی فائدہ نہیں ہونے والا ہے کیونکہ اب وہ اپنے وعدوں کو دھیرے دھیرے بھلانے کی کوشش کررہی ہے۔ یہ الزام آج بی جے پی کے ریاستی صدر ستیش اپادھیائے نے ریاستی دفتر میں منعقدہ پریس کانفرنس کے دوران عائد کیں۔ انہوں نے کہاکہ سرکار نے عوام کو خواب تو دکھائے، لیکن جب انہیں مکمل کرنے کی بات آئی تو وہ اپنا رویہ بدلتے جارہے ہیں، جس سے عوام خود کو ٹھگا ہوا محسوس کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ پانی مفت دینے کا وعدہ کرنے والی پارٹی نے سرکار بننے کے بعد سبسڈی دینے کا اعلان تو کردیا ہے، مگر 20ہزار لیٹر سے زیادہ پانی استعمال کرنے والوں کو بل کی پوری ادائیگی کرنی ہوگی، اس سے لوگ خود کو ٹھگا ہوا محسوس کررہے ہیں اور سرکار کو بتانا چاہئے کہ یہ کیسی سبسڈی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ’آپ‘ سرکار میں پانی کے 19ہزار اور 17ہزار بل آرہے ہیں جبکہ وہی پہلے 500روپئے آتے تھے۔ انہوں نے کہاکہ بجلی کے معاملے پر 400یونٹ تک سبسڈی دینے کا سرکار نے تو اعلان کردیا ہے، مگر 401یونٹ بجلی استعمال کرنے کی صورت میں پورابل ادا کرنا ہوگا، یہ کیسی سبسڈی ہے؟ انہوں نے کہاکہ اس سبسڈی سے دہلی کے صرف 25فیصد لوگوں کو راحت ملے گی۔ ستیش اپادھیائے نے وائی فائی سے متعلق کہاکہ اب سرکار کہہ رہی ہے کہ دوبارہ ڈائیلاگ ہوگا تو پھر جب مفت وائی فائی کا وعدہ کیاگیا تھاتب عام آدمی پارٹی نے کونسی حکمت عملی اختیار کی تھی اور اب ایک سال کے بعد وائی فائی مفت دینے کی بات کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ مودی سرکار نے 2016میں 20شہروں وائی فائی مفت بنانے کا اعلان کررکھاہے،چنانچہ اب لگتا ہے کہ دہلی سرکار کو مرکز کے اس اسکیم کا انتظار ہے تاکہ وہ ایک بار پھر عوام کو گمراہ کرسکے۔ ستیش اپادھیائے نے سرکارمیں 21پارلیمنٹری سکریٹری بنائے جانے پر سوال اٹھاتے ہوئے کہاکہ کم پیسے خرچ کرنے والی سرکار اب 21پارلیمنٹری سکریٹری بناکر سرکار پر بھاری بوجھ ڈال رہی ہے، چنانچہ اب وہ کیسے شفاف سرکار اور گڈ گورننس کی بات کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ایسا کبھی نہیں ہوا کہ دہلی سرکار نے ایک ایک وزیر کے تین تین پارلیمنٹری سکریٹری نامزد کئے ہوں۔ اب پارلیمنٹری سکریٹریوں کو گاڑی، دفتر اوراسٹاف چاہئے، اس کا خرچہ کہاں سے آئے گا۔ انہوں نے کہاکہ سرکار کے ذریعہ کہاجارہا ہے کہ پارلیمنٹری سکریٹریوں کو تنخواہ نہیں دی جائے گی، مگر سرکار کو معلوم ہونا چاہئے کہ کہیں بھی پارلیمنٹری سکریٹریوں کو تنخواہ نہیں دی جاتی ہے اور نہ ہی دہلی میں کبھی دی گئی ہے۔ انہوں نے ’آپ‘ کے اسٹنگ آپریشن پر طنز کرتے ہوئے کہاکہ اب تو ماسٹر ہی اسٹنگ میں پھنس گیاہے۔ انہوں نے کجریوال پر فرقہ پرستی کی سیاست کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ مسلمان بھائیوں کیساتھ کجریوال نے دھوکہ کیاہے، چنانچہ انہیں بھی اس پر غور کرنا چاہئے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment