Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 10:27 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سرکار آبی سلامتی کو ترجیح دینے کے تئیں عہد بستہ: کنڈاریہ

 

نئی دہلی، 17مارچ (یو این آئی) مرکزی وزیر مملکت برائے زراعت موہن بھائی کنڈاریہ نے لوک سبھا کو بتایا کہ چھوٹے ،بہت چھوٹے کسانوں کو نیشنل ایگری کلچرل انشورنس اسکیم (این اے آئی ایس ) کے تحت پریمئم پر دس فیصد رقم کی سبسڈی دی جاتی ہے ۔اس کے ساتھ ہی موڈیفائڈ نیشنل ایگریکلچرل انشورنس اسکیم (ایم این اے آئی ایس) موسم پر مبنی فصلوں کے لئے ویدر بیسڈ کراپ انشورنس اسکیم (ڈبلیو بی سی آئی ایس) اور کوکونٹ پام انشورنس اسکیم (سی پی آئی ایس ) اور نیشنل کراپ انشورنس پروگرام(این سی آئی پی) کی اسکیم کے اجزاء کے تحت ان کسانوں کو علی الترتیب 75 فیصد ،50 فیصد اور 75 فیصد سبسڈی دی جاتی ہے ، جنہوں نے اپنی اُن فصلوں کا بیمہ کرایا ہے ، جن پر مرکز اور ریاستی سرکاروں کی شراکت داری ہوتی ہے ۔مرکزی وزیر مملکت برائے زراعت موہن بھائی کنڈاریہ نے لوک سبھا کو بتایا کہ سرکار آبی سلامتی کو ترجیح دینے کے تئیں انتہائی عہد بستہ ہے اور اس کے لئے پردھان منتری کرشی سینچائی یوجنا (پی ایم کے ایس وائی ) کو روبہ عمل لانے کا عمل جاری ہے ، جس کا مقصد فصلوں پر غیر متوازن بارش کے اثرات کو کم کرنے کی غرض سے ہر زرعی فارم تک پانی کی رسائی کو یقینی بنانا ہے ۔اس سلسلے میں مرکزی وزارت برائے زراعت (ایم اواے ) ،مرکزی وزارت برائے آبی وسائل ،دریاؤں کے فروغ اوردریائے گنگا کی بازآبادکاری (ایم او ڈبلیو آر ،آر ڈی اینڈ جی آر ) اور دیہی ترقیات کی وزارت (ایم اوآر ڈی) کی متعدد میٹنگس اہتمام کی جاچکی ہیں جن میں اس پروگرام کے خاکے پر گفتگو کی گئی ہے ۔مرکزی بجٹ میں پی ایم کے ایس وائی کو ملک گیر پیمانے پر روبہ عمل لائے جانے کی غرض سے تین سو کروڑروپے مختص کئے گئے ہیں ، جبکہ ایم او ڈبلیو آر آر ڈی اینڈ جی آر کے بجٹ میں ایکسیلریٹیڈ ایری گیشن بینفٹ پروگرام (اے آئی بی پی ) کے لئے ایک ہزار کروڑروپے کا سرمایہ مختص کیا گیاہے ۔مرکزی وزیر مملکت برائے زراعت موہن بھائی کنڈاریہ نے لوک سبھا کو بتایا کہ سرکار نے ملک میں دھان کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافے کا کوئی نشانہ معین نہیں کیا ہے تاہم ایسی کوششیں کی جارہی ہیں جن کا مقصد مختلف کراپ ڈیولپمنٹ پروگراموں کے تحت ہائبریڈ دھان کی پیداوار میں اضافہ کرنا ہے ۔ان پروگراموں میں نیشنل فوڈ سکیورٹی مشن (این ایف ایس ایم ) ، برنگنگ گرین ریبیو لیشن ٹو ایسٹرن انڈیا (بی جی آر ای آئی ) اور راشٹریہ کرشی وکاس یوجنا(آر کے وی وائی )جیسی اسکیمیں شامل ہیں۔1995 میں محض دس ہزار ہیکٹئر رقبہ زمین پر ہائبریڈ دھان کی کاشت کی جاتی تھی ،جو 2006 میں دس لاکھ ہیکٹئر رقبہ زمین تک پہنچ گئی ۔ پچھلے نو برس کے دوران ہائبریڈ دھان کی مشرقی اترپردیش ، بہار ،جھارکھنڈ ،مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ میں مقبولیت کے سبب ہائبریڈ دھان کی کاشت پرتوجہ مرکوز کی گئی ہے اور اب سال 2014 میں پچیس لاکھ ہیکٹئیر رقبہ زمین پر ہائریڈ دھان کی کھیتی کی گئی ہے ۔مرکزی وزیر مملکت برائے زراعت موہن بھائی کنڈاریہ نے آج لوک سبھا میں بتایا کہ ڈپارٹمنٹ آف ایگریکلچر اینڈ کوآپریشن ، مارکیٹ انٹر وینشن اسکیم (ایم آئی ایس) پر عمل درآمد کررہا ہے ،جس کا مقصد ان زرعی اور باغبانی اشیاء کو حاصل کرنا ہے ،جن کی نوعیت انتہائی نازک ہوتی ہے ۔ایم آئی ایس کا بنیادی مقصد پیداوار کی زیادتی اور قیمتوں میں کمی آجانے کی صورت میں کسانوں کو ان کی پیداوار کی معقول قیمتیں دلانا ہے ۔
مرکزی وزیرمملکت برائے زراعت موہن بھائی کنڈاریہ نے لوک سبھا میں بتایا کہ دوستمبر 2014 کو دلی سرکار کی جانب سے پھلوں اور سبزیوں کو امپورٹنٹ ایگری کلچرپروڈیوس مارکیٹنگ کمیٹی کے دائرہ کار سے باہر کئے جانے کی ضابطہ کاری ختم کئے جانے کے اعلان کے بعد اسمال فارمرس ایگری بزنس کنسارٹے ئم (ایس ایف اے سی ) نے شمالی دہلی کے علی پور علاقے میں دہلی کسان منڈی شروع کی ہے ۔یہ منڈی کسانوں کے لئے تجارت کا راست پلیٹ فارم مہیا کرائے گی ۔ اس کے ساتھ ہی فارمرپروڈیوسرآرگنائزیشن کو بھی یہ تنظیم تجارت کے لئے راست پلیٹ فارم مہیا کرائے گی۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment