Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 10:26 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

ہندوستان کو توانائی سے پاک بنانا ہمارا خواب

 

اے ایم یو کے فزکس شعبہ میں ’’ نیوکلیائی تکنالوجی ‘‘ پر منعقدہ سیمینار کابھابھا نیوکلیائی ریسرچ سینٹر کے میڈیا ریلیشنز ہیڈ ڈاکٹر آر کے سنگھ کے ہاتھوں افتتاح
فہمیدہ پروین
علی گڑھ12؍مارچ،ایس ٹی بیورو: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے فزکس شعبہ میں ’’ نیوکلیائی تکنالوجی ‘‘ پر منعقدہ سیمینار کا افتتاح کرتے ہوئے بھابھا نیوکلیائی ریسرچ سینٹر کے میڈیا ریلیشنز ہیڈ ڈاکٹر آر کے سنگھ نے کہا کہ ہندوستان کو توانائی سے پاک بنانا ہمارا خواب ہے جس کے لئے ہم نے ٹینالوجی کو فروغ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملکی ترقی کے لئے توانائی بہت ضروری ہے اور توانائی سے ہی ملک کی جی ڈی پی کی شرح میں اضافہ ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں آج بھی لوگوں کو آلودہ پانی پینا پڑتا ہے۔ پانی میں آر سینک، آئرن کی مقدار پائی جاتی ہے اور پنجاب کے کچھ حصوں میں گراؤنڈ واٹر میں یورینئیم بھی پایا گیا ہے۔ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ نیوکلیائی توانائی کا استعمال علاج میں بھی کیا جاتا ہے اور ملک کا قومی تحفظ بھی نیوکلیائی توانائی سے وابستہ ہے۔ ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ بھابھا نیوکلیائی سینٹر کے کچھ سائنسداں اے ایم یو کے فزکس شعبہ کے تعلیم یافتہ ہیں تاکہ ملک کی تعمیر میں ان سے تعاون حاصل ہوسکے۔ وی اے آر سی میں یہاں سے تعلیم یافتہ طلبأ بھی کام کر رہے ہیں اور اے ایم یو کی پارٹنر شپ میں ’’ میگا سائنس پروجیکٹ ‘‘ شروع کیاگیا ہے۔ ہم نے نیوکلیائی توانائی کے میدان میں عالمی ریکارڈ توڑا ہے۔نرورا نیوکلیائی بجلی گھر کے اسٹیشن ڈائرکٹر مسٹر دلباغ سنگھ چودھری نے کہا کہ کسی بھی ملک کی ترقی میں توانائی پہلی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستانی یونیورسٹیوں کے تحقیقی کاموں کا فائدہ ٹیکنالوجی کو فروغ دینے میں نہیں حاصل ہوپاتا جبکہ ترقی یافتہ ممالک میںیونیورسٹیوں میں معیاری تحقیقی کام ہوتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ فی الوقت ہندوستان میں اکیس پاور ریئکٹر ہیں جن کی ٹیکنالوجی خود ہمارے سائنس دانوں نے ہی فروغ دی ہے جبکہ ملک میں پہلا پاور ریئکٹر روس کی مدد سے تیار ہوا تھا۔انہوں نے کہا کہ نرورا نیوکلیائی بجلی گھر 2روپیہ 48پیسہ فی یونٹ بجلی تیار کرتا ہے اور ٹیکنالوجی کے فروغ سے ہی افلاس کو دور کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے علی گڑھ کے طلبأ کو نرورا کے دورہ کی دعوت بھی دی۔انجینئرنگ فیکلٹی کے ڈین پروفیسر محب اللہ نے افتتاحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان ایک تہائی لوگوں کی بجلی کی ضروریات کو پورا کر رہا ہے اور بیشتر دیہاتوں میں بجلی کی یقینی سپلائی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں نیوکلئیر ٹیکنالوجی کو بہتر طور پر فروغ دیا گیا ہے۔پروفیسر محب اللہ نے کہا کہ ہمیں متبادل توانائی کے وسائل پر بھی توجہ دینی چاہئیے۔ شمسی توانائی سے ماحولیات کو آلودگی سے پاک بنایا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ توانائی کے میدان میں ہم ابھی خود کفیل نہیں ہوئے ہیں۔ انہوں نے میگنیٹک ہائیڈرو جینریشن ( ایم ایچ ڈی ) کو فروغ دینے پر بھی ز ور دیا۔مہمانوں کا خیر مقدم کرتے ہوئے فزکس شعبہ کے سربراہ پروفیسر رحیم اللہ خاں نے کہا کہ ہندوستان میں نیوکلیئر توانائی کے باوا آدم ڈاکٹر ہومی جہانگیر بھابھا نے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے پروفیسر پی ایس گل کے ساتھ مل کر ہندوستانیوں کے معیارِ زندگی کو بلند کرنے اور توانائی کے میدان میں خود کفیل بنانے کے لئے کام کیا۔ انہوں نے کہا کہ ڈپارٹمنٹ آف ایٹومک انرجی اپنے قیام کی پچاسویں سالگرہ منا رہا ہے اور اسی کے تحت یہ سیمینار منعقد کیاگیا ہے جس میں گورو شرما، وائی پی گوتم حصہ لے رہے ہیں اور وی اے آر سی ٹیکنالوجی کی ایک نمائش بھی لگائی گئی ہے۔سیمینار کے کنوینر پروفیسر ایم افضال انصاری نے افتتاحی اجلاس کی نظامت کے فرائض انجام دئے اور حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔

...


Advertisment

Advertisment