Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 05:09 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

ہدہد کی وجہ سے ہوا نقصان70000کروڑ روپے سے تجاوز کر سکتا ہے :نائیڈو

 

متا ثرہ علاقو ں میں راحتی مہم جاری ،بجلی اور مو اصلاتی خدما ت کی بحالی اولین تر جیح

وشاکھاپٹنم ، 15اکتوبر(آئی این ایس انڈیا )آندھرا پردیش کے وزیر اعلی این چندر ابابو نائیڈو نے آج کہا کہ ہدہد طو فان کی وجہ ہوئے نقصان کا اب تک مکمل حساب نہیں ہو پایا ہے لیکن ابتدائی اندازے کے مطابق نقصان 70000کروڑ روپے سے تجاوز کر سکتا ہے۔نائیڈو نے یہاں نامہ نگاروں کو بتایا کہ شمالی ساحلی علا قے میں صورتحال اب بھی سنگین بنی ہوئی ہے اور زندگی کو پٹری پر لانے کے لئے تمام کوششیں کی جا رہی ہیں ۔جلد سے جلد بجلی کی فراہمی کی بحالی کی بھی کوشش کی جا رہی ہے۔نائیڈو نے بتایا کہ ہد ہد کی وجہ سے ہوئے نقصان کا مکمل اندازہ کرنا بہت مشکل ہے۔ہمیں اب تک طو فان سے متاثرہ تمام اضلاع میں 60000کروڑ روپے یا پھر 70000کروڑ روپے کے متوقع نقصان کی اطلاع مل رہی ہے۔ہم فی الحال کسی اعداد و شمار پر نہیں پہنچ سکتے۔ طو فان سے متاثرہ علاقوں میں امدادی مہم کو انجام دینا ہماری فوری ترجیح ہے۔انہوں نے بتایا کہ ایک یا دو دن میں مرکزی ٹیم کے نقصان کے اندازہ لگا نے کے لئے کے آندھرا پردیش پہنچنے کا امکان ہے۔وزیر اعظم نریندر مودی نے کل وشاکھاپٹنم کا دورہ کیا اور امدادی کاموں کے لئے 1000کروڑ روپے کی عبوری امدادی رقم کا اعلان کیا۔اس کے علاوہ انہوں نے طو فان میں مارے گئے لوگوں کے اہل خانہ کے لئے ایک لاکھ روپے اور زخمیوں کے لئے 50 ہزا ر روپے کا اعلان کیا۔ہد ہد طوفان کی وجہ سے ہزاروں درختوں کے اکھڑنے اورٹرانسمیشن لائن کے گر جانے کی وجہ شری کا کو لم ، وجے نگرم اور وشاکھاپٹنم کے زیادہ تر علا قے اندھیرے کی لپیٹ میں ہیں۔نائیڈو نے بتایا کہ آج شام یا کل تک جزوی طور پر کچھ علاقوں میں بجلی کی فراہمی کا امکان ہے۔وزیر اعلی نے بتایا کہ جہاں تک مواصلات کی بات ہے تو وہ موبائل سروس فراہم کرنے والی کمپنیوں سے بات چیت کر رہے ہیں اور انہیں امید ہے کہ فوری طور پر ہی خدمت بحال کر لی جائے گی۔

...


Advertisment

Advertisment