Today: Thursday, November, 15, 2018 Last Update: 03:35 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

کجریوال کے اعلان پر اب ستیندر جین کی مہر

 

پاور سیکٹر میں وہائٹ پیپر لا کر روکیں گے بجلی چوری، وزیر توانائی نے بجلی کی نجکاری کو بھی ختم کرنے کا دیا اشارہ

نئی دہلی، 5مارچ (ایس ٹی بیورو)پاور سیکٹر میں دہلی سرکار وہائٹ پیپر لائے گی۔وہائٹ پیپر کے ذریعہ عوا م کو یہ بتایاجائے گا کہ بجلی کمپنیوں کی موجودہ صورتحال کیاہے اور کانگریس کے دور اقتدار میں بجلی کمپنیوں سے معاہدہ کس شکل میں ہوا تھا۔ یہ باتیں آج کجریوال سرکار میں وزیر توانائی ستیندر جین نے دہلی سکریٹریٹ میں منعقدہ پریس کانفرنس کے دوران کہیں۔ حالانکہ پاور سیکٹر میں وہائٹ پیپر لانے کا اعلان وزیراعلیٰ اروند کجریوال خود چھٹے اسمبلی اجلاس کے پہلے سیشن میں لیفٹیننٹ گورنر نجیب جنگ کے خطاب پر اظہار تشکرکے دوران کرچکے ہیں۔ اس طرح سے ستیندر جین نے وزیراعلیٰ کے اعلان کو صرف دوہرانے کا کام کیاہے۔ انہوں نے کہاکہ جب کانگریس سرکار نے بجلی کی نجکاری کرنے کا فیصلہ کیاتھا، تب بہت سی باتیں کہی گئی تھیں۔ اس وقت یہ بھی کہا گیاتھا کہ بجلی کی 55فیصد چوری کو روکنے میں مدد ملے گی اور قیمتیں نصف ہوجائیں گی، مگر ایسا نہیں ہوا اور چوری پر بھی قابو نہیں پایاجاسکا۔چنانچہ انہیں باتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے سرکار نے وہائٹ پیپر لانے کافیصلہ کیاہے۔ ستیندر جین نے بجلی کمپنیوں پر دباؤ بنانے کیلئے کہاکہ اس میں یہ بھی دیکھاجائے گا کہ بجلی کو پرائیویٹ رکھنا ہے یا نہیں۔ سی اے جی سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں مسٹر جین نے کہاکہ سی اے جی کی رپورٹ کو سامنے رکھ کرکارروائی تو نہیں کی جارہی ہے؟ اس پر وزیر توانائی ستیندر جین نے کہاکہ یہ دونوں الگ الگ مسئلے ہیں، اس کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ بجلی کمپنیوں کے کورٹ جانے سے متعلق انہوں نے کہاکہ ہمیں نہیں معلوم کہ وہ کورٹ کیوں گئی ہیں، لیکن کورٹ کا فیصلہ بہت جلد آجائے گا، اس لئے ہمیں اس کا انتظار کرنا چاہئے۔ واضح رہے کہ بجلی کمپنیوں کو فائدہ پہنچانے کا مسلسل الزام عائد کیاجاتارہا ہے۔ عام آدمی پارٹی نے بجلی میں کمپنیوں کے ذریعہ چوری کرنے کاالزام مسلسل عائد کیاہے اور قیمتوں میں کمی کرنے کا ایشو پارٹی کے ابتدائی دنوں سے رہا ہے۔ حالیہ اسمبلی الیکشن میں واضح اکثریت ملنے کے بعد کجریوال سرکار نے 400یونٹ تک بجلی نصف قیمتوں پر دینے کا وعدہ کیاہے، جو یکم مارچ سے نافذ بھی ہوگیاہے جبکہ اب مسئلہ بجلی کمپنیوں پر لگام لگانے کا ہے، اس لئے سرکا مختلف حربے استعمال کررہی ہے۔ حالانکہ دیکھنے کی بات یہ ہوگی کہ کورٹ کا فیصلہ کیا آتا ہے اور کجریوال سرکار سے عوام کو کتنا فائدہ ہوتا ہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment