Today: Thursday, September, 20, 2018 Last Update: 01:49 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

گنا کی بقایا قیمت کو لیکر اپوزیشن کا واک آؤٹ

 

بی جے پی اور کانگریس ایک ہی سکے کے دو پہلو:اعظم خاں

لکھنؤ، 25؍فروری(آئی این ایس انڈیا )اتر پردیش کی حکومت پر گنا کسانوں کی بقایا قیمت کے تئیں غیر سنجیدہ ہونے کا الزام لگاتے ہوئے بی جے پی اور کانگریس کے ممبران اسمبلی نے آج ریاستی اسمبلی سے واک آؤٹ کیا۔بی جے پی اور کانگریس کے ممبران اسمبلی نے وقفہ سوال میں یہ معاملہ اٹھاتے ہوئے حکومت سے جاننا چاہا کہ پرائیو ٹ اور سرکاری گنا ملوں نے ریاست کے گنا کسانوں کی پیرائی سیشن 2013-14کے گنا کی قیمت کی مکمل ادائیگی کر دی ہے یا نہیں۔وزیر رام کر ن آریہ نے حکومت کی طرف سے جواب دیتے ہوئے کہا کہ اس سال12؍فروری تک کی صورت حال کے مطابق پیرائی سیشن 2013-14میں کسانوں کے بقایا 19388.17کروڑ روپے گنا قیمت میں سے18747.93کروڑ روپے ادا کرایا جا چکا ہے جو کل قابل ادائیگی کا 96.70فیصد ہے۔اس سیشن کی 640.24کروڑ روپے گنا قیمت اب بھی واجب الادا ہے۔انہوں نے کہا کہ پیرائی سیشن 2013-14میں کل 119چینی ملوں نے پیرائی کام کیا تھا جس میں نگم اور کو آپریٹیو سیکٹر کی تمام چینی ملوں اور نجی سیکٹر کی 84ملوں نے مکمل گنا قیمت ادا کر دیا ہے۔نجی سیکٹر کی محض 10چینی ملوں پر ہی گنا قیمت کا بقایا ہے۔ان تمام ملوں کو وصولی سرٹیفکیٹ جاری کیا جا چکا ہے اور مقدمے بھی درج کرائے گئے ہیں۔بہرحال بقایا گنا قیمت کی مکمل ادائیگی کا وقت اورطریقہ بتانے کا مطالبہ کرتے ہوئے بی جے پی اور کانگریس کے ا راکین ایوان کے بیچوں بیچ آ گئے اور حکومت مخالف نعرے بازی کرنے لگے۔پارلیمانی امو ر کے وزیر اعظم خاں نے اپوزیشن اراکین کے ذریعہ بحث و تکرار کے درمیان کہا کہ بی جے پی اور کانگریس ایک ہی سکے کے دو پہلو ہیں۔انہوں نے کانگریس کے اراکین سے مذاقیہ لہجے میں کہا کہ آپ دونوں ایک ہی سکے کے الگ الگ پہلو ہیں۔آپ بی جے پی ا رکین کے ساتھ کیوں کھڑے ہیں۔ان کے ساتھ مت کھڑے ہوئیے ،نہیں تو آپ کو سوائن فلو ہو جائے گا۔خاں نے کہا کہ کسانوں کی بقایا گنا قیمت ایک سنگین مسئلہ ہے اور مرکز کی امداد کے بغیر اسے نہیں حل کیا جا سکتا۔پارلیمانی امور کے وزیر نے کہا کہ مرکزی حکومت کو چینی کی درآمد بند کرنی چاہئے ۔وہ تو صرف صنعت کاروں کی مدد کرنے میں ہی مصروف ہے۔وہ غریب کسانوں کی زمین اڈانی جیسے صنعت کاروں کو دے رہی ہے۔انہوں نے بی جے پی کے ممبران اسمبلی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ انہیں اس بات کو یقینی بنانا چاہئے کہ مرکز میں ان کی حکومت تحویل اراضی بل کو واپس لے۔بہرحال حکومت کے جواب سے غیر مطمئن ہو کر بی جے پی اور کانگریس کے اراکین ایوان سے واک آؤٹ کر گئے۔

...


Advertisment

Advertisment