Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 10:06 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سیلاب سے تباہ حال سرینگر کی تعمیر نو کی جائے گی: نیشنل کانفرنس


سری نگر ، 14اکتوبر (یو این آئی) جموں وکشمیر میں برسر اقتدار جماعت نیشنل کانفرنس کے صوبائی صدر ناصر اسلم وانی نے کہا ہے کہ نیشنل کانفرنس سری نگر کی تعمیر نو کرے گی اور ساتھ ہی یہ جماعت سیلاب متاثرین کی راحت کاری اور مکمل بازآبادکاری تک اْن کے شانہ بہ شانہ رہے گی۔انہوں نے کہا کہ ہمارا تعمیر نو کا وعدہ سیاست اور الیکشن سے بالاتر ہے اور اس وقت ہماری سب سے بڑی ترجیح سیلاب متاثرین کی بازآبادکاری ہے۔ ناصر نے کہا کہ ہم اْن لوگوں میں سے نہیں جو لوگ اقتدار کی حوس میں اِن تباہ کاریوں کے بیچ بھی الیکشن کو ترجیح دے رہے ہیں، بلکہ ہم تب تک دن رات کام کریں گے جب تک لوگوں کو ہماری ضرورت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی نے اس وقت، جب پوری ریاست کے عوام پر مصیبت کے پہاڑ ٹوٹ پڑے ہیں، الیکشن کروانے کی مانگ کرکے عوام کے تئیں اپنی جھوٹی فکر مندی اور سیلاب متاثرین کے ساتھ اپنی جھوٹی ہمدری کی اصلیت سب کے سامنے رکھ دی ہے۔ انہوں نے سیلاب کے دوران یہاں کے نوجوانوں کے رول کو سلام پیش کرتے ہوئے یقین دلایا کہ ہم ساتھ مل کر وہ سب پھر سے تعمیر کریں گے جو ہم نے اس قہر انگیز سیلاب کے دوران کھویا۔ ناصر اسلم وانی نے ان باتوں کا اظہار شہر سری نگر کے مختلف علاقوں بشمول کرسو راجباغ، جواہر نگر، نٹی پورہ کے اپنے دورے کے دوران سیلاب متاثرین کے ساتھ کیا۔ انہوں نے اس دوران دکانداروں، مسجد کمیٹی ممبران اور تاجر انجمنوں کے نمائندوں کے ساتھ بھی تبادلہ خیال کیا اور انہیں یقین دہانی کرائی کہ حکومت ریلیف ، بازآبادکاری اور تعمیر نو کے کام کو جنگی بنیادوں پر جاری رکھے گی۔ اس کے علاوہ انہوں نے محلہ کمیٹیوں اور مسجد کمیٹی کے نمائندوں کے ساتھ بھی بازآبادکاری اور راحت کاری کے معاملے پر بات کی اور اْن سے قیمتی مشورے اور تجاویز بھی حاصل کیں۔ دکانداروں اور تاجر انجمنوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے ناصر نے کہا کہ ہم دکانداروں اور تاجروں کو اپنے پیروں پر واپس کھڑا ہونے میں ہر ممکن مدد کریں گے۔ حکومت اس معاملے میں ہر ایک ضروری اقدام کریگی اور حکومت نے اس معاملے میں پہلے ہی 44000ہزار کروڑ ریلیف پیکیج کیلئے مرکز سے رجوع کیا ہے۔ دریں اثنا پارٹی کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ سیلاب کے پہلے روز سے ہی دن رات ایک کرکے بچاؤ کارروائیوں، راحت کارروائیوں اور بازآبادکاری کے کاموں میں جٹے رہے ۔ مسٹرناصر نے کہاکہ جنوبی کشمیر میں سیلاب آنے کے ساتھ ہی نیشنل کانفرنس نے اپنی تمام اکائیوں کو امدادی اکائیوں میں تبدیل کردیا تھا اور پارٹی سے وابستہ بے لوث اور جانباز کارکنان مصیبت کی اس کھڑی میں عوام کے شانہ بہ شانہ رہے۔ ساگر نے حالیہ سیلاب کے دوران کشمیری نوجوانوں کے کام کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ جب سیلاب نے تمام روابط منقطع کئے اور تمام مشنری کو معدوم کردیا اْس وقت یہاں کے نوجوانوں نے اپنے جان کی بازیاں لگا کر ہزاروں لوگوں کی جانین بچائیں۔ انہوں نے کہاکہ یہاں کے نوجوانوں نے نہ صرف لوگوں کی جانیں بچائیں بلکہ رضاکارانہ طور پر متاثرین کیلئے قیام و طعام کے انتظامات کئے۔ انہوں نے کہا کہ محدود وسائل ہونے کے باوجود بھی ریاستی حکومت تعمیر نو اور بازآبادکاری میں جتنا ہوسکتا ہے صرف کررہی ہے۔ ساگر نے کہا کہ حکومت نے جنگی بنیادوں پر بجلی، پینے کے پانی ، سڑک روابطہ ،صحت و صفائی ، غذائی اجناس کی مفت سپلائی اور ہیلتھ سیکٹر کو بحال کیا اور یہ سارے کام وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ اپنی نگرانی میں کروا رہے تھے۔

...


Advertisment

Advertisment