Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 06:04 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

دہلی کی تقدیر نوجوانوں کے سپرد


وزیراعلیٰ کجریوال نے اپنے پاس نہیں رکھا کوئی محکمہ*اہم وزارتیں سسودیا اور
ستیندر جین کے ذمہ*عاصم خان کو خوراک ورسد کے علاوہ جنگلات وماحولیات کی ذمہ داری 
اروندکجریوال:وزیراعلیٰ،کوئی محکمہ نہیں۔ 
منیش سسودیا: نائب وزیراعلیٰ، خزانہ، تعلیم اور شہری ترقیات ۔
ستیندر جین: بجلی، صحت، صنعت اور پی ڈبلیوڈی۔ 
گوپال رائے: ٹرانسپورٹ، ترقی اور لیبر کی وزارت
عاصم احمد خان: خوارک ورسد اور وزارت جنگلات وماحولیات۔ 
جتیندر تومر: قانون، سیاحت، وزارت داخلہ۔ 
سندیپ کمار: خواتین واطفال اور ایس سی۔ایس ٹی۔ 
نثاراحمدخان 

نئی دہلی، 14فروری (ایس ٹی بیورو) دہلی کے رام لیلا میدان میں ہفتہ کو وزیر اعلی کے عہدے کا حلف لینے کے بعد اروند کجریوال نے اپنے سبھی 6وزراء کے قلمدان بھی تقسیم کر دیا ہے۔ خاص بات یہ ہے کہ کجریوال نے اپنے پاس کوئی محکمہ نہیں رکھا ہے۔ انہوں نے سارے اہم محکمہ نائب وزیراعلیٰ منیش سسودیا اور باقی وزراء کے درمیان تقسیم کئے ہیں۔کجریوال کے اپنے پاس کوئی محکمہ نہیں رکھنے پر منیش سسودیا نے دہلی سکریٹریٹ میں پہلی پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ وزیر اعلی وزارتوں کے درمیان کوآڈینیشن کا کام کریں گے۔ حالانکہ کجریوال کے ذریعہ اپنے پاس کوئی محکمہ نہ رکھنے کے دوسرے معنی بھی نکالے جا رہے ہیں۔ مانا جا رہا ہے کہ کجریوال ساری ذمہ داری وزراء کو سونپ کر پارٹی کو قومی سطح پر توسیع کرنے پر اپنی توجہ مرکوز کر سکتے ہیں۔ 
منیش سسودیا نائب وزیراعلیٰ ہوں گے ۔ اس کے علاوہ تین اہم وزارت خزانہ، تعلیم، شہری ترقی ان کے پاس ہوگی۔ اس کے بعد سب سے اہم ذمہ داری ستیندر جین کو سونپی گئی ہے۔ ستیندر جین کو بجلی، صحت، صنعت، پی ڈبلیوڈی وزارت سونپی گئی ہے۔ بابر پور سے جیت حاصل کرنے والے پارٹی کے بنیادی رکن گوپال رائے کو ٹرانسپورٹ، ترقی اور لیبر کی وزارت دی گئی ہے۔ کجریوال کابینہ میں واحد اقلیتی چہرہ عاصم احمد خان کو خوراک ورسد اور محکمہ جنگلات و ماحولیات کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ جتیندر تومر کوقانون، سیاحت اور وزارت داخلہ کی ذمہ داری سونپی گئی ہے جبکہ سندیپ کمار کوخواتین واطفال اور ایس سی؍ایس ٹی کی وزارت سونپی گئی ہے۔ 
منیش سسودیا نے نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایاکہ وزیراعلیٰ اروند کجریوال سبھی وزراء کے کام کاج کی نگرانی کریں گے۔ ماڈرن ٹیکنالوجی کے ذریعہ گڈ گورننس پر وہ گہری نظر رکھیں گے اور سسٹم میں تبدیلی کیلئے منظم طریقے سے کام کریں گے۔ تیسری اہم ذمہ داری عوام سے سیدھے طور پر رابطہ کریں گے۔ انہوں نے بتایا کہ اروند کجریوال سبھی ممبران اسمبلی سے کام کرانے کیلئے بھی سرکار اور ایم ایل اے کے درمیان رابطہ کا کام کریں گے۔ مسٹر سسودیا کے مطابق اروند کجریوال مکمل طور پر سرکار، ممبران اسمبلی اور عوام کے درمیان ایک کڑی ہوں گے۔ حالانکہ اروند کجریوال نے کسی خاتون پر بھروسہ نہیں جتایا ہے، اس لئے کسی خاتون کو وزیر نہیں بنایاگیاہے۔ گذشتہ سرکار میں منگولپوری کی ایم ایل اے راکھی بڈلان کو وزارت ملی تھی، مگر پارٹی کو ان کی شکایت ملی تھی، جس کی وجہ سے انہیں اس بار وزارت سے باہر رکھاگیا ہے۔ حالانکہ دوسری خواتین ایم ایل اے بھی دعویدار تھیں، مگر کجریوال نے کسی پر بھروسہ نہیں جتایا ہے۔ 

...


Advertisment

Advertisment