Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 05:34 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

عام آدمی پارٹی کی جیت سے حکومت محتاط


سست پڑسکتی ہے اقتصادی ترقی کی رفتار
نئی دہلی۔ 12فروری (یو این آئی) دہلی اسمبلی انتخابات میں عام آدمی پارٹی کی زبردست جیت سے محتاط ہوئی مودی حکومت اقتصادی ترقی کی کو رفتار کو سست کرنے کے ساتھ ساتھ آئندہ بجٹ میں عوام کے لئے دلکش اسکیمیں اور پروگرام پیش کرنے پر توجہ مرکوز کرسکتی ہے لیکن اس کے لئے مالی خسارہ کو کنٹرول میں رکھنا بھی ایک چیلنج ثابت ہوگا۔گزشتہ تقریباًً نو مہینوں کے دوران مودی حکومت نے راست غیرملکی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے لئے اقتصادی سدھار کے کئی اقدامات کئے ہیں جن کی مزدوروں، کسان اور دیگر اداروں نے سخت مخالفت کی ہے ۔ ا ن میں تحویل اراضی ایکٹ اور مزدوری میں بہتری لانے کے نام پر مالکان کو دی گئی ڈھیل شامل ہے ۔ راست غیرملکی سرمایہ کاری کے لئے سرکاری کمپنیوں میں سرمایہ کشی میں بھی تیزی لائی گئی ہے جس کی مخالفت میں تقریباًً چار دہائیوں کے بعد کانکنوں نے ملک گیر ہڑتال کی جس کی بینک اور بجلی ملازمین کے اداروں نے حمایت کی۔دہلی میں عام آدمی پارٹی سے ملنے والی زبردست شکست کی وجہ سے مودی حکومت اپنی پالیسیوں پر پھر سے غور کرنے پر مجبور ہوسکتی ہے ۔ سودیشی جاگرن منچ نے کہاکہ حکومت کی اولین ترجیح عام آدمی کی اس سے ضروری توقعات کو پورا کرنا ہونا چاہئے ۔ جمہوریت میں تمام شہریوں کو بنیادی حقوق حاصل ہوتے ہیں جس کے لئے جمہوری حکومت جوابدہ ہوتی ہے ۔ منچ کے ترجمان پروفیسر اشونی مہاجن نے کہاکہ حکومت کو فلاح وبہبود کی اسکیموں اور سبسڈی جیسی سہولیات کو تب تک جاری رکھنا چاہئے جب تک لوگوں کے ان پر منحصر ہونے میں کمی نہیں آجاتی۔سودیشی جاگرن منچ کا خیال ہے کہ حکومت کو لوگوں کومرحلہ وار طریقہ سے روزگار کے مواقع پیدا کرنے چاہئیں ، بنیادی ڈھانچے اور بنیادی سہولیات میں بہتری لانی چاہئے ۔ یہ سب اتنی جلدی ممکن نہیں ہے اس لئے حکومت کو منطقی سبسڈی جاری رکھنی چاہئے اور فلاحی اسکیموں کو موثر طریقہ سے نافذ کرنا چاہئے ۔عام آدمی کی ضرورتوں کو گناتے ہوئے منچ نے کہاکہ اسے عام سہولیات کی ضرورت ہوتی ہے ۔کھانے پینے کی چیزوں کی قیمتیں اس کے قابو میں ہوں اور پروقار زندگی جینے کا موقع ملے ، انتظامیہ بدعنوانی سے پاک ہو اور پینے کا پانی، بجلی ، سڑک ، تعلیم، رہائش اور طبی سہولیات آسانی سے دستیاب ہونی چاہئیں۔عام آدمی پارٹی کے لیڈر اروند کیجریوال نے یہی سہولیات فراہم کرنے کا وعدہ کرکے دہلی میں اقتدار حاصل کیا ہے اور بھارتیہ جنتا پارٹی کی قیادت کو بھی اس سمت میں سنجیدگی سے غور و خوض کرنا چاہئے ۔جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں اقتصادی پالیسی کے پروفیسر ارون کمار نے کہاکہ ہندوستان جیسے مختلف مذاہب اور تہذیب والے ملک میں حکومت یکساں پالیسیاں نافذ نہیں کرسکتی ۔ علاحدہ علاحدہ علاقوں اور فرقوں کے لئے الگ الگ پالیسی بنانی ہوگی۔دہلی میں بی جے پی نے لوگوں کی امیدوں پر کھرا نہ اترنے کی قیمت ادا کی ہے ۔ پارٹی بدعنوانی، مہنگائی اور بلیک منی جیسے امور پر کئے گئے اپنے وعدوں کو پورا کرنے میں ناکام رہی ہے ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment