Today: Saturday, November, 17, 2018 Last Update: 06:05 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

دہلی میں آپ کی کامیابی ہندستان کیلئے اہم تھی

 

عوام کے جذبات کا احساس دلانے کیلئے بی جے پی کی شکست ضروری تھی:مانک سرکار
اگرتلہ، 11 فروری (یو این آئی) عام آدمی پارٹی کے سربراہ اروند کیجریوال کو دہلی اسمبلی انتخابات میں شاندار کامیابی کے لئے مبارک باد دیتے ہوئے تریپورا کے وزیراعلی مانک سرکار نے آج کہا کہ عوامی جذبات کو سمجھنے کے لئے بی جے پی کے لئے ایسا ہونا ضروری تھا۔خیال رہے کہ مانک سرکار ملک میں کمیونسٹ پارٹی کی واحد حکومت والی ریاست کے وزیراعلی ہیں۔مسٹر سرکار نے کہا کہ الیکشن سے قبل صرف بڑے بڑے وعدے ہی سیاسی پارٹی کو اقتدار میں برقرار رہنے کے لئے ضروری نہیں ہے ۔ جب تک وعدے عملی جامہ نہیں پہن لیتے اس وقت تک کوئی بھی شخص اس پر اعتماد نہیں کرسکتا ہے اور بی جے پی اور کانگریس کو دہلی کے الیکشن سے ہی سبق سیکھنا چاہئے ۔مسٹر سرکار نے کہا کہ پارلیمانی الیکشن کے بعد بی جے پی نے کئی ریاستی انتخابات میں کامیابی حاصل کی اور اس غلط فہمی کا شکار ہوگئی کہ وہ خواہ کچھ کرے یا نہ کرے عوام اسے ہی ووٹ دیں گے لیکن کم از کم اب نریندر مودی کو ان وعدوں پر توجہ دینی چاہئے جو انہوں نے انتخابی مہم کے دوران کئے تھے ۔انہوں نے الزام لگایا کہ نریندر مودی حکومت ترقیاتی محاذ پر ناکام ہوگئے ہیں۔دریں اثنا اگرتلہ 11فروری (یو این آئی) دہلی اسمبلی انتخاب میں اروند کجری وال کی قیادت میں عام آدمی پارٹی کی یک طرفہ اور شاندار جیت کو وقت کی اہم ضرورت قرار دیتے ہوئے اگر تلہ کے وزیر اعلیٰ مانک سرکار نے کہا کہ شکست کے بعد اب بی جے پی کو عوام کے جذبات کا احساس ہوگا ۔مانک سرکارنے کہا کہ لوک سبھا انتخابات کے بعد مسلسل کئی ریاستوں میں بی جے پی کو کامیابی ملنے کے بعدبی جے پی اس غلط فہمی میں مبتلا ہوگئی تھی کہ وہ جو کچھ کرے گی عوام قبول ہے ۔اس لیے دہلی اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی شکست ضروری تاکہ اسے عوام کے جذبات کا احساس ہوسکے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کو اپنے ایجنڈے پر از سرنو غور کرنا چاہیے تری پورہ کے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ کانگریس اور بی جے پی کو دہلی کے نتائج سے یہ سبق سیکھنا چاہیے کہ صرف وعدؤں سے کام نہیں چلتا ہے بلکہ جو وعدے کیے جاتے ہیں اس پر عمل کیا جاناضروری ہے ۔اگر وعدؤں کی تکمیل نہیں کی گئی تو یہ حشر دیکھنا پڑتا ہے ۔پورے ملک میں صرف مانک سرکار کی قیادت میں ہی کمیونسٹ حکومت چل رہی ہے ۔مانک سرکار نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ 8مہینوں میں نریندر مودی کے کاموں کو دہلی کے عوام نے رد کردیا ہے ۔بی جے پی کے ووٹ فیصد میں 8اور بی جے پی کا ایک فیصد ووٹ کم ہوا ہے جب کہ عام آدمی کے ووٹ فیصد میں 25فیصدکمی آئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ نریندر مودی کی قیادت والی حکومت ملک کے عام آدمی کے دلوں کو جیتنے میں ناکام ہے ۔مودی نے بہترین حکمرانی اور سب کا ساتھ کا وعدہ کیا تھا مگر گزشتہ 8مہینوں میں مودی حکومت کی بیشتر پالیسوں سے عام آدمی کو مایوسی ہی ہاتھ لگی ۔ تحویل اراضی آرڈی نینس ، مزدور سے متعلق حکومت کی پالیسی سے عام آدمی ناخوش ہے ۔مسلسل مذہبی منافرت نے بھی مودی حکومت کی پول کھول دی ہے ۔دہلی میں چرچوں پر حملہ ہوئے مگر مودی خاموش ہی نظر آئے ۔مانک سرکار نے الزام عائد کیا کہ مودی حکومت نے امریکہ کے مفادات کے سامنے خودسپردگی کردی ہے ۔انہوں نے کہا کہ مودی فرقہ واریت کی بنیاد پر ترقیاتی پروجیکٹ پر کام کررہے ہیں یہ بہت ہی شرمناک بات ہے ۔مانک سرکار نے کہا کہ اس بات تسلیم کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے کہ کجری وال نے گزشتہ تین سال میں جو کام کرکے دکھایا ہے وہ سی پی ایم تین دہائی میں نہ کرسکی۔دہلی میں تین سیٹوں پر سی پی ایم کے امیدوار بھی انتخاب لڑرہے تھے مگر شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔مگر ہمیں یہ بات معلوم ہونی چاہیے کہ ہم انتخابات میں جیتنے کیلئے نہیں بلکہ اپنے آئیڈلوجی کے اشتہار کیلئے انتخاب میں حصہ لیتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ عام آدمی پارٹی حکومت کی کار کردگی کے بعد ہی ہم یہ فیصلہ کریں گے کیا عام آدمی پارٹی بایاں محاذ کا حصہ ہوں گے یا نہیں ۔اور ملک میں غیر کانگریسی اور غیر بی جے پی اتحاد کیلئے کوشش کی جائے گی ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment