Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 10:42 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

بہار کی صورتحال بی جے پی کی ملی بھگت کا شاخسانہ:نتیش کمار

 

پٹنہ، 10 فروری (یو این آئی) جنتا دل یونائٹیڈ(جے ڈی یو) کے سینئر لیڈر اور بہار کے سابق وزیر اعلی نتیش کمار نے آج کہا کہ وہ ریاست میں پچھلے آٹھ برسوں سے جوکچھ اچھا کام ہوا ہے ، اسے وہ بے بس اور لاچار ہو کر بگڑتا ہوا نہیں دیکھ سکتے تھے ، کیونکہ اسے برباد ہوتا ہوا دیکھ کر بہار کے باشندوں میں لگاتار بے چینی بڑھ رہی تھی اور ایسی صورتحال میں وہ لوگوں کو بے چین اور تڑپتے ہوئے نہیں چھوڑ سکتے ہیں۔ اسی لئے انہوں نے پھرسے وزیر اعلی کی ذمہ داری سنبھالنے کا فیصلہ کیا اور اس بار وہ پوری لگن اور صلاحیت سے تمام خامیوں کو دور کرنے کا کام کریں گے ۔ مسٹر نتیش کمار نے کہا کہ بہار میں ان دنوں جو کچھ بھونچال جاری ہے وہ واضح طورپر اکساوا اور ملی بھگت کا معاملہ ہے ۔ بی جے پی کے لوگ اسے جے ڈی یو کا اندرونی معاملہ بتارہے ہیں ۔ اگر ایسا ہے ، تو بی جے پی کے لوگ جے ڈی یو کے لیڈروں کو وزیر بنانے اور آئندہ انتخابات میں بی جے پی کا ٹکٹ دینے کا وعدہ کیوں کر کررہے ہیں؟جے ڈی یو کے لیڈر نے کہا کہ بی جے پی کے لوگ راجیہ سبھا انتخابات کے وقت سے ہی پارٹی میں توڑ پھوڑ اور خرید و فروخت میں لگے ہوئے ہیں۔ انہوں نے جے ڈی یو نے پھر سے انہیں اپنا لیڈر منتخب کیا ہے اورراشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی )، کانگریس اور سی پی آئی کے لیڈروں نے بھی انہیں حکومت بنانے کے لئے حمایت دی ہے ۔ ان کے پاس اکثریت کی حمایت ہے ، اس کے باوجود 7 فروری سے ہی اس معاملے کو اٹکاکر رکھا گیا ہے ، تاکہ خرید و فروخت کاکام ہوسکے ۔ سابق وزیر اعلی نے مزاحیہ لہجے میں کہا کہ بی جے پی کو 'ہارس ٹریڈنگ' (خرید و فرورخت) کا لائسنس حاصل ہے اور جسے یہ لائسنس حاصل ہو وہ اس کا استعمال تو کرے گا ہی۔ انہوں نے کہا کہ اب بی جے پی کو واضح طورپر اعتراف کرنا چاہئے کہ وہ مسٹر مانجھی کے ساتھ ہے ، اس لئے مانجھی کو حمایت دینے والے لیڈروں کو بی جے پی کا ٹکٹ دینے کا وعدہ کیا جارہا ہے ۔ مسٹر نتیش کمار نے کہا کہ گورنر اگر آج فیصلہ نہیں سناتے ہیں، تو وہ اپنے حامی لیڈروں کے ساتھ شام دہلی کوچ کریں گے اور ضرورت پڑنے پر صدر جمہوریہ کے سامنے ان لیڈروں کا پریڈ بھی کرائیں گے ۔ پارٹی کے قومی صدر شرد یادو اس کے لئے صدر جمہوریہ سے وقت بھی مانگ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کے حامی ایم ایل اے آج شام ہی پانچ اور چھ بجے کی فلائٹ سے دہلی روانہ ہوجائیں گے ۔ مسٹر نتیش کمار نے کہا کہ دستوری روایت اور عدالت کے ایسے متعدد فیصلے ہیں، جن کے تحت انہیں حکومت سازی کے لئے مدعو کیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے سوالیہ لہجے میں کہا کہ آخر گورنر کس بات کے لئے مسٹر مانجھی کو مہلت دے رہے ہیں۔ اس معاملے میں زیادہ وقت نہیں دیا جانا چاہئے ۔

 

...


Advertisment

Advertisment