Today: Thursday, November, 15, 2018 Last Update: 02:52 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

مہاراشٹر کو عالمی سطح کی شہر ت ملنی چاہئے : نریندر مودی

 

کنکاولی امراوتی (مہاراشٹر)، 13 اکتوبر (یو این آئی)وزیراعظم نریندر مودی نے آج مہاراشٹر کے ووٹروں سے اپیل کی ہے کہ ریاست کوبین الاقوامی نقشے پر پہچان دلانے کے لئے وہ ریاستی اسمبلی انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے حق میں ووٹ کریں۔ مسٹر مودی نے مہاراشٹر اسمبلی انتخابات کی انتخابی مہم کے آخری دن آج کنکاولی میں پارٹی امیدوار کے حق میں ایک انتخابی ریلی کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مہاراشٹر کے عوام کو اگر کانگریس اور نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی ) کی 15 برس پرانی ناکارہ حکومت سے نجات حاصل کرنی ہے تو اس کے لئے انہیں 15 اکتوبر کو اس کا موقع ملنے والا ہے۔ مسٹر مود ی نے کہا کہ اگر مہاراشٹر میں بی جے پی کی حکومت آتی ہے تو نہ صرف ہندوستان میں بلکہ عالمی سطح پر مہاراشٹر کی شناخت قائم کی جائے گی ۔مسٹر مودی نے دعویٰ کے ساتھ کہا کہ ہندوستان بہت تیزی سے اور بڑے پیمانے پر بین الاقوامی سطح پر ابھر رہا ہے ۔ آج پوری دنیا ہندوستان اور ہندوستان کی ترقی کے سلسلے میں بات کرررہی ہے۔ انہوں نے مزید دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی ہندوستان اور مہاراشٹر کو عالمی سطح پر تیزی سے اوپر لے جائے گی۔ مسٹر مودی نے چھترپتی شیواجی مہاراج کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ مہاراشٹر کانگریس اور این سی پی کی بدعنوانیوں کی وجہ سے زوال کی راہ پر چلا گیا۔انہوں نے کہا کہ ان دونوں پارٹیوں نے گذشتہ قیمتی 15 برس گنوا دئے ۔ انہوں نے کہا کہ مہاراشٹر قدرتی وسائل کے ذخیرے سے بھرا ہوا ہے لیکن اس کے باوجود مہاراشٹر دیگر چھوٹی چھوٹی ریاستوں سے بھی پسماندہ ہوگیا ہے۔ مسٹر مودی نے کہا کہ بی جے پی بغیر کسی تفریق کے ملک کے تمام فرقوں کی ترقی و بہبود چاہتی ہے۔بی جے پی کسی ذات ،پات یا مذہبی تفریق کئے بغیر تمام اہل وطن کے معیار زندگی کو بہتر کرنا چاہتی ہے۔مسٹر مودی نے کہا کہ لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کو مکمل اکثریت دے کر حکومت بنوائی اور میں چاہتا ہوں کہ مہاراشٹر کے عوام بھی بی جے پی کو مکمل اکثریت دے کر ریاست میں برسراقتدار لائیں تاکہ مہاراشٹر سے ملک کی ترقی کو تقویت مل سکے۔ مسٹر مودی آج یہاں کنکاولی سے قبل رتناگری میں ایک عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ رتناگری پوری دنیا میں اپنے الفانسو آم کے لئے مشہور ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے یوروپ کے بازار میں الفانسو آم پر پابندی کے لئے اس وقت کی مرکزی اور مہاراشٹر کی ریاستی حکومتوں کو نشانہ بنایا۔ مسٹر مودی نے کہا کہ یوروپ کے بازار میں الفانسو آم کے ایکسپورٹ پر پابندی کی وجہ سے غیرملکی ریونیو کا زبردست نقصان ہوا اور اس کے ساتھ ہی مقامی الفانسو آم پیدا کرنے والوں کو بھی نقصان اٹھانا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ غیرملکی کرنسی کمانے والے اس پھل کو یوروپ کے بازار میں داخل ہونے کی اجازت نہ ملنا اس وقت کی مرکزی اور ریاستی حکومتوں کے لئے کافی شرم کی بات تھی۔ مسٹر مودی نے کہا کہ رتناگری کونکڑ علاقہ میں واقع ہے اور یہاں پر بڑی مقدار میں قدرتی وسائل کے ذخیرہ موجودہیں لیکن سابقہ حکومتوں نے اس کا مناسب طریقہ سے استعمال نہیں کیا ۔ وزیراعظم نے کہا کہ کانگریس اور این سی پی نے گذشتہ 15 برس کی اپنی حکومت کے دوران مہاراشٹر کو برباد کرنے کے ساتھ ساتھ دو نسلوں کا بھی مستقبل خراب کردیا۔ ریاست کے لیڈر بدعنوانی بدعنوانی کا کھیل کھیلنے میں مصروف تھے اور عوام کو ان کی قسمت کے بھروسے چھوڑ دیا۔ مسٹر مودی نے عوام کو یاد دلاتے ہوئے کہا کہ چھترپتی شیواجی نے غیرملکی حملوں سے حفاظت کی ۔ اب کانگریس اور این سی پی سے مہاراشٹر کو بچانا یہاں کے عوام کی ذمہ داری ہے۔ ملک میں کانگریس کے 60 سالہ دور حکومت میں قبائلیوں کو ہمیشہ نظرانداز کئے جانے کا الزام لگاتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) ان کے مسائل اور پریشانیوں کو حل کرنے کے لئے زندہ ہے اور اب وہی ان کے نقصانات کی تلافی کرسکتی ہے۔ مہاراشٹر میں آدی واسیوں کی اکثریتی آبادی والے نوتشکیل شدہ ضلع پلگھر میں 15اکتوبر کے اسمبلی انتخابات کے لئے مہم چلانے کے آخری روز ایک انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک میں آدی واسیوں کی آبادی نامعلوم تاریخ سے موجود ہے یہاں تک کہ بھگوان رام کے زمانے میں وہ موجود تھے ،لیکن کانگریس حکومت نے انہیں مکمل طورپر نظر انداز کردیا۔ مسٹر مودی نے دعوی کیا کہ ایک وقت میں اٹل بہاری واجپئی کی زیر قیادت این ڈی اے حکومت نے ہی قبائلیوں کی ترقیات کے لئے ایک وزارت تشکیل دی تھی۔انہوں نے کہا کہ میری حکومت بھی قبائلیوں اور سماج کے دیگر محروم طبقوں کی خدمت کے لئے وقف ہے۔ بہتر مستقل کے لئے بی جے پی کو ووٹ دینے کی اپیل کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ نوتشکیل شدہ ضلع پلگھر کے لئے اب تک کچھ بھی ٹھوس طورپر نہیں کیا گیااور وہ اب بھی ترقیات کے لئے ترس رہا ہے۔ مقامی افراد کو بی جے پی کے حق میں دینے کی درخواست کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ قبائلی علاقوں کی ترقی میری ڈیوٹی ہے۔

...


Advertisment

Advertisment