Today: Thursday, November, 15, 2018 Last Update: 03:34 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

اب جے شنکر ہوں گے نئے خارجہ سکریٹری

 

سجاتا سنگھ کی قبل ازوقت برطرفی پر کانگریس کا مودی سرکار پر حملہ ، بی جے پی کا پلٹ وار ، سبرامنیم سوامی نے یاد دلایا راجیو گاندھی کا دور اقتدار
محمداحمد
نئی دہلی،29جنوری( ایس ٹی بیورو) امریکہ میں ہندوستان کے سفیر ایس جے شنکر نے آج ملک کے نئے خارجہ سیکرٹری کا عہدہ سنبھال لیاہے ۔ جے شنکر کو خطہ میں دو طرفہ تعلقات میں کثیر جہت تبدیلی میں غیر معمولی کردار ادا کرنے والی شخصیت کی شکل میں دیکھا جا رہا ہے۔ سجاتا سنگھ کی مدت کار 2 سال تھی جس میں سات ماہ باقی رہتے ہوئے بدھ کو دیر رات انہیں ان کے عہدے سے ہٹا دیا گیا اس کے اگلے دن جے شنکر کو یہ ذمہ داری دی گئی۔ساؤتھ بلاک میں نئی ذمہ داری سنبھالتے ہوئے، جے شنکر نے کہا کہ میری ترجیح وہی ہے، جو حکومت کی ترجیح ہے۔ وزارت خارجہ کا دفتر ساؤتھ بلاک میں ہی واقع ہے۔ جے شنکر کو وزیر اعظم نریندر مودی کے قریبی کے طور پر جانا جاتا ہے۔ ان کی طرف سے سونپی گئی ذمہ داری کو نبھا نے کی صلاحیت سے مودی متاثر ہیں۔سفارتی ذمہ داری سے 31 جنوری کوعہدہ بری ہونے والے جے شنکر نے کہا کہ وہ اس ذمہ داری کیلئے منتخب ہونے پر فخر‘ محسوس کر رہے ہیں۔مسٹر شنکر کے چارج لیتے وقت سجاتا سنگھ موجود نہیں تھیں۔ جے شنکر نے بعد میں وزیر خارجہ سشما سوراج سے بھی ملاقات کی۔نریندر مودی حکومت نے بدھ کی رات 1977 بیچ کے ٹاپر رہے آئی ایف ایس کے افسر جے شنکر کو نئے سیکرٹری خارجہ کے طور پر مقرر کیا۔ کابینہ کی تقرری کمیٹی نے بدھ کی رات کوفوری طور پر سجاتا کی مدت کار کم کرنے کا اعلان کیا۔ خیال رہے کہ اس کمیٹی کی صدرات خود وزیراعظم ہی کرتے ہیں ۔کمیٹی نے اپنے نوٹ میں کہا ہے کہ جے شنکر کو دو سال کیلئے یہ ذمہ داری دی گئی ہے۔ نئے سیکرٹری خارجہ سے ایک بیچ سینئر سجاتا نے اگست 2013 میں یہ عہدہ قبول کیا تھا اور انہیں اس سال اگست میں ریٹائر ہونا تھا۔ سجاتا ایسی تیسری خاتون تھیں جنہیں خارجہ سکریٹری کے عہدے پر مقرر کیا گیا تھا۔اچانک لیا گیا یہ فیصلہ امریکہ کے صدر براک اوباما کے تین روزہ دورہ بھارت کے اختتام کے ایک دن بعد ہوا ہے۔ اسی دوران ہندوستان اور امریکہ کے درمیان غیر فوجی جوہری معاہدے کو لے کر اہم قدم کا اعلان کیا گیا تھا۔ اوباما یوم جمہوریہ کی تقریب میں مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کرنے نئی دہلی پہنچے تھے۔سال 2013 میں امریکہ میں ہندوستانی سفیر کے طور پر مقرر کئے گئے جے شنکر نے دسمبر 2013 میں چارج لینے کے بعد دونوں ممالک کے درمیان فرق پاٹنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔ جے شنکر نے نیویارک میں بھارتی سفارتی اہلکار دیویانی کی نیویارک میں گرفتاری میں اہم کردار ادا کیا ۔ دیویانی کو اپنی نوکرانی کے امیگریشن سے متعلق خر د برد کو لے کر گرفتار کیا گیا تھا۔ اسکے علاوہ جے شنکر نے گزشتہ سال ستمبر میں مودی کے امریکہ سفر کی تیاری میں بڑا کردار ادا کیا تھا۔وزارت خارجہ میں-07 2004 کے درمیان جوائنٹ سکریٹری رہتے ہوئے وہ جوہری معاہدے پر بات چیت کرنے والے افسران میں شامل تھے۔ امریکہ میں سفیر بننے سے پہلے وہ چین میں بھارت کے سفیر رہ چکے ہیں۔ وہ سنگاپور اور چیک جمہوریہ میں بھی سفیر کے طور پر کام کر چکے ہیں ۔ جے شنکر کے خاندان کے رکن انتظامی خدمت میں ہیں اور وہ بھارتی خارجہ پالیسی کے ماہر کے سبرامنیم کے بیٹے ہیں۔سال 2013 کے جولائی میں رنجن متھائی کے ریٹائرڈ ہونے کے بعد سیکرٹری خارجہ کے عہدے کیلئے جے شنکر کے نام پر غور کیا گیا تھا، لیکن اس وقت کی ترقی پسند اتحاد حکومت نے ان کی جگہ سجاتا سنگھ کو تقرری دی ۔ سابق وزیر اعظم مبینہ طور پر جے شنکر کو خارجہ سیکرٹری کے طور پر مقرر کئے جانے کے حق میں تھے لیکن کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے سجاتا سنگھ کے حق میں فیصلہ سنایا۔ سجاتا کے والد ٹی وی راجیشور خفیہ بیورو کے سابق سربراہ تھے اور کانگریس کے حامی بھی بتائے جاتے ہیں ۔محترمہ سجاتا سنگھ کی برطرفی پر کانگریس نے مودی سرکار پر وار کیا ہے ۔ پارٹی کے سینئر رہنما اور سابق مرکزی وزیرمنیش تیواری نے کہا ہے کہ کیا یہ دیویانی کھوبرا گڈے معاملہ میں سجاتا سنگھ کے موقف کا بدلا ہے ۔ ادھر بی جے پی رہنماسبرامنیم سوامی نے کانگریس پر پلٹ وار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کانگریس کو اس تعلق سے بات چیت کرنے کا کوئی حق نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ راجیو گاندھی نے اپنے خارجہ سکریٹری کو ایک پریس کانفرنس کے دوران ہی بر طرف کر دیا تھا ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment