Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 09:59 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

اندر لوک میں کانگریسی امیدوار اجے ما کن کا شاندار استقبال

 

بی جے پی کی پالیسی ملک کو توڑنے والی ہے جو ڑنے والی نہیں:کانگریس کے قومی ترجمان م۔ افضل نے کی لوگوں سے کانگریس کو ووٹ دینے کی اپیل
امیر احمد راجہ

نئی دہلی،27،جنوری(ایس ٹی بیورو) اندرلوک کے معروف کا نگریسی لیڈر عبدالواحد قریشی کی جانب سے کل رات صدر اسمبلی حلاقہ سے کانگریسی امیدوار اجے کی حمایت میں ایک پبلک میٹنگ کا انعقاد اندر لوک میں کیا۔جس میں بڑی تعداد میں کا نگریسی کارکنان کے علا وہ کثیر تعداد میں علا قہ کے لوگوں نے شرکت کی اور اپنے محبوب رہنما کے خیالات سننے بڑی تعداد میں لوگ وہاں اکھٹا ہو ئے۔میٹنگ میں کانگریس پارٹی کے قومی ترجمان م افضل،اجے ماکن کی زوجہ رادھیکا ماکن،فاروق انجنئیر،میو نسپل کونسلر ست بیر شر ما ،ایڈوکیٹ آر سی گوتم،وجے گپتا،عبدالوا حد قریشی ،متین بھائی اور اجے ماکن نے خطاب کیا۔ عبدالواحد قریشی نے اس بات پر خوشی کا اظہار کیا کہ اس بار کانگریس نے صدر اسمبلی حلقہ سے ایسے امیدوار کو میدان میں اتارا ہے جسے کم عمری میں مرکزی وزرات میں وزیر بننے کا شرف حاصل ہے ۔انہوں نے کہا کہ اجے ماکن ہی وہ شخص ہیں جنہوں نے 2021کا ماسٹر پلان لاکر لوگوں کو سیلینگ سے نجات دلائی،غریبوں اور جھگی جھو نپڑی والوں کوپہلے فلیٹوں کی الاٹ مینٹ کرائی بعد میں انکی جھگیاں خالی کرائیں جہاں ملٹی اسٹوری بلڈنگیں بنا کر انہیں اسی جگہ شفٹ کیا جائے گا۔اجے ماکن کی اہلیہ رادھیکا ماکن نے بھی اجے ماکن کو کام کر نے والا شخص بتاکر لوگوں سے کا نگریس کو ووٹ دینے کی اپیل کی۔میٹنگ کی نظامت انیس بھائی نے کی۔
کانگریس کے قو می ترجمان م افضل نے لوگوں کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس نے اجے ماکن کو بہت سوچ سمجھ کر اس حلقہ سے اپنا میدوار بنا یا ہے۔وہ بہت گہری سوچ رکھنے والے سنجیدہ لیڈر ہیں۔انہوں نے کہا کہ اندر لوک کی بستی کوئی معمولی بستی نہیں،یہاں کے باشندگان نے دن رات محنت کرکے ترقی حاصل کی ہے ۔انہوں نے یہاں کے اہالیان کواس ترقی کیلئے مبارکباد دی۔انہوں نے کہ اندر لوک اور اس کے علا قوں سے ہمیشہ کانگریس کو ووٹ ملا ہے۔انہوں بی جے پی اور عآپ پر حملہ کر تے ہوئے کہا کہ اس وقت یہ دونوں پارٹیاں ڈرامے کر نے پر لگی ہو ئی ہیں ،بڑا ڈرا مہ نریندر مودی ہیں اور چھو ٹے ڈرا مے کا نام اوروند کجریوال ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ دونوں پار ٹیاں اندر خانے ایک ہیں،دونوں پار ٹیوں کا ضمیر اور خمیر ایک ہی ہے۔آج عآپ کے لیڈر نکل نکل کر بی جے پی میں لوٹ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کرن بیدی بھی اقتدار کی بھو کی ہیں۔ حالانکہ وہ انا ہزارے کے آندولن میں کجریوال کے ساتھ تھیں لیکن انہیں یقین تھا کہ کجر یوال انہیں چیف منسٹر نہیں بنا ئیں کے۔کرین بیدی کے نام سے مشہور کرن بیدی نے اپنی پار ٹی پر ہی کرین چلادی اور بی جے پی میں شامل ہو گئیں۔انہوں نے کہا کہ کانگریس نے ہمیشہ اقلیتوں اور پسماندہ طبقات کیلئے کام کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ میں جانتا ہوں آپ بی جے پی کو ہرانا چاہتے ہیں کیو نکہ اس کی پالیسی ملک کو توڑنے والی ہیں جو ڑنے والی نہیں۔پارلیمانی انتخابات میں اس نے29%ووٹ حاصل کر282سیٹیں حا صل کیں تھیں لیکن آپ کا 71%ووٹ ہو نے کے باوجود بھی آپکو شکست کا منہ دیکھنا پڑا کیو نکہ آپ کا ووٹ سو چی سمجھی سازش کے تحت تقسیم کرا دیا گیا۔یوپی ،مہا راشٹر،ہریا نہ پنجاب اور جھاڑ کھنڈ سے ایک بھی مسلم امیدوار پار لیمنٹ میں آپکی نما ئندگی کرنے والا نہیں ہے ۔یوپی جیسی ریا ست سے جہاں سے14/15 مسلم امیدوار جیت کر لوک سبھا میں نمائندگی کرتے تھے وہاں سے آج ایک بھی نما ئندہ لوک سبھا میں نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ اپنے ووٹ کو تقسیم ہو نے سے بچانا ہے۔اگر ووٹ تقسیم ہو گا تو اس کا فا ئدہ فرقہ پرستوں کو ہو گا ۔اسلئے کانگریس کو ہی ووٹ دیں۔اپنی تقریر میں اجے ماکن نے کہا کہ الیکشن میں جو سازشیں ہوتی ہیں اس کا آپ کو اندازہ نہیں،ہم انہیں نظر انداز کر دیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف کمار وشواس راہل گاندھی کے خلاف امیٹھی سے چنا ؤ لڑتے ہیں تو دوسری طرف گجرات میں ایک کوی سمیلن میں نریندر مودی کی شان میں کویتا پڑھتے ہیں۔کل تک کرن بیدی ،جر نل وی کے سنگھ انا ہزارے کے آنمدولن میں کجریوال کے ساتھ تھے ان کا کہنا تھا کہ آر یاس ایس بی جے پی کی مدد کرتی ہے۔لیکن انہی کی پارٹی کے ایک آدمی شا نتی بھو شن نے ایک ٹی وی چینل کو دئے گئے انٹر ویو میں ان کی پول کھول دی ۔انہوں نے بتایا کہ انا ہزارے کے آندولن کے دوران رام لیلا گراؤنڈ میں کھا نے کا انتظام آر ایس ایس کے لوگ کرتے تھے۔انہوں نے کہا کہ ابھی کرن بیدی اور جرنل وی کے سنگھ وغیرہ بی جے پی میں شامل ہو ئے ہیں ایک دن کجریوال بھی بی جے پی میں شامل ہو جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ مودی کانگریس مکت بھارت دیکھنا چاہتے ہیں ،کرن بید ی اور کجریوال کی بھی یہی سوچ ہے۔انہوں نے کہا کہ انگریز بھی یہی کہتے تھے وہ تو کانگریس مکت بھارت نہیں کرا سکے لیکن کانگریس نے انگریز مکت بھارت کردیا۔انہوں نے کہا کہ ہم دعوے سے کہتے ہیں ہم سب مل کر بھارت کو مودی مکت کردیں گے ۔ جیسے ہم نے انگریزوں کو بھگایا تھا ویسے ہی مودی کو بھگادیں گے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment