Today: Thursday, September, 20, 2018 Last Update: 01:49 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

مقالہ لکھنے سے قبل عمیق مطالعہ کرنا انتہائی ضروری: وہاج الدین علوی

 

شعبۂ اردو، دہلی یونیورسٹی میں ریسرچ اسکالرز کے تقریری امتحان کے موقع پر پروفیسر وہاج الدین اور پروفیسر شہپررسول کو استقبالیہ *جامعہ کے ذکر کے بغیر عہدحاضر کا ادب مکمل نہیں: پروفیسر ابن کنول

نئی دہلی،30ستمبر:(ایس ٹی بیورو) ہمیں کچھ بھی لکھنے سے قبل عمیق مطالعہ کرنا چاہئے کیونکہ اس کے بعدہی قلم کو جنبش دینا درست معلوم ہوتا ہے۔ اور لکھنے کے بعد کئی دفعہ چیزوں کو پڑھا جائے ورنہ غلطیاں بہت زیادہ پیش آتی ہیں۔ ان خیالات کااظہار جامعہ ملیہ اسلامیہ کے شعبۂ اردو کے صدر پروفیسر وہاج الدین علوی نے دہلی یونیورسٹی کے شعبۂ اردو میں اسکالروں کی اصلاح کرتے ہوئے کیا۔ واضح رہے کہ دہلی یونیورسٹی کے شعبۂاردومیں ریسرچ اسکالروں کی تربیت کی غرض سے اہم تبدیلیوں کا سلسلہ مستقل جاری ہے۔ آج شعبہ کے تمام اساتذہ ، اسکالر اور طلباء کے سامنے ڈاکٹر ارجمند آرا کی زیر نگرانی میں پی ایچ ڈی کے ریسرچ اسکالر عارف اشتیاق اور ڈاکٹر علی جاوید کی زیر نگرانی میں فرخندہ یاسمین کا تقریری امتحان (وائیوا)جامعہ ملیہ اسلامیہ کے شعبۂ اردو کے صدر پروفیسر وہاج الدین علوی اور پروفیسر شہپر رسول نے لیا۔ اس موقع پر پروفیسر وہاج الدین علوی نے کہاکہ اکثر یہ ہوتا ہے کہ دوبارہ پڑھے بغیر ہی چیزوں کو آخری شکل دے دی جاتی ہیں، جو مناسب نہیں ہے۔ پروفیسر وہاج الدین علوی نے مزید کہاکہ دوحوں کو زندہ رکھنا ہماری روایت رہی ہے، لیکن ایسا نہیں ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ڈاکٹر علی جاوید اس بات کیلئے قابل ستائش ہیں کہ وہ عہد حاضر کے مسائل پر دوحے قلم بند کر رہے ہیں۔ اس موقع پر صدر شعبہ اردو دہلی یونیورسٹی پروفیسر ابن کنول نے دونوں مہمانوں کا والہانہ استقبال بھی کیا۔ پروفیسر ابن کنول نے کہاکہ دونوں ہی جامعہ کے اہم اساتذہ ہیں اور ان کے ذکر کے بغیر عہد حاضر کا ادب مکمل نہیں۔ ان دونوں حضرات کو بلانے کا مقصد یہ ہے کہ شعبے کے طلباء ان کی شاعری سماعت کریں اور محسوس کریں کہ موجودہ عہد کی شاعری کا معیار کیا ہے۔ پروگرام کی صدارت پروفیسر وہاج الدین علوی نے کی جبکہ نظامت کے فرائض شعبہ کے استاذ ڈاکٹر ابو بکر عباد نے انجام دیئے۔ ان کے علاوہ پروفیسر شہپر رسول نے اپنی غزلیں پیش کیں جبکہ شعبہ کے سینئر استاذ ڈاکٹر علی جاوید نے ’لو جہاد‘ کے حوالے سے طنزیہ دوحہپیش کیا اورغزل و نظم بھی پیش کی۔ ڈاکٹر نجمہ رحمان اور ڈاکٹر مظہر احمد نے نظمیں پیش کیں۔ ڈاکٹر احمد امتیاز اور رضوان خان نے غزل پیش کی۔ اس موقع پر دیگر اساتذہ میں سابق صدر شعبہ پروفیسر توقیر احمد خاں،ڈاکٹر محمد کاظم، ڈاکٹر ارجمند آرا، ڈاکٹر نجمہ رحمانی، ڈاکٹر علی احمدادریسی، ڈاکٹر ارشاد نیازی وغیرہ بھی موجود تھے۔ اس موقع پر بڑی تعداد میں شعبہ کے ریسرچ اسکالرز اور طلباوطالبات بھی موجود تھے۔

...


Advertisment

Advertisment