Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 03:05 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سماجوادی سرکار کسان مخالف ،مرکزی حکومت کے منصوبوں کو نافذ کرنے میں ناکام

 

دیوی کنڈ میدان میں منعقدہ کسان میلے میں شرکت کے بعد مقامی ڈاک بنگلے پر صحافیوں سے گفتگو کے دوران مرکزی وزیر سنجیو بالیان کا الزام

یاسرعثمانی

دیوبند ،22؍جنوری (ایس ٹی بیورو) مرکزی وزیر مملکت سنجیو بالیان نے ایس پی سرکار کو کسان مخالف قراردیتے ہوئے کہا کہ الزام عائد کیا کہ مرکزی حکومت کے ذریعہ صوبائی حکومت کو شریک پیداوارکراپ منصوبہ کیلئے 100 کروڑ روپے کی رقم دی گئی تھی، لیکن چھ ماہ گزر جانے کے بعد بھی ریاست کی حکومت نے 100 کروڑ میں سے صرف 60 لاکھ روپے ہی خرچ کئے ہیں۔ سنجیو بالیان آج یہاں دیوی کنڈ میدان میں منعقدہ کسان میلے میں شرکت کے بعد مقامی ڈاک بنگلے پر صحافیوں سے گفتگو کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے چاروں طرف جنگل راج قائم ہے، ترقیاتی کام پور ے طور پر ٹھپ ہیں، اگر تھوڑا بہت ترقی ہو بھی رہی ہے تو صرف لوہیا گاؤں میں ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کا پورا خیال کسانوں کی جانب ہے، ہندوستان کی حکومت نے سوامی ناتھن کمیشن کی سفارشات پر کام کرنا شروع کر دیا ہے، ملوں کے ذریعہ ریجکٹ کی جا رہی گنا پرجاتیوں کو دیکھتے ہوئے جلد ہی میرٹھ میں زراعت کے ماہرین کی میٹنگ بلائی جا رہی ہے، جسمیں گنے کی نئی پرجاتیوں کو تیار کرنے کے سلسلہ میں غور و فکر کیا جائیگا، جس سے کسانوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ کھاد کی کمی کے سوال پر کہا کہ ملک میں کھاد کی کوئی کمی نہیں ہے، ریاستی حکومت کھاد کی کالا بازاری پر روک نہیں لگا پا رہی ہے، جس کی وجہ سے کسانوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔مغربی اترپردیش میں ہائی کورٹ کی بنچ کے قیام کے سوال پر مرکزی زراعت وزیر مملکت سنجیو بالیان نے کہا کہ پارٹی سے ہٹ کر ان کی ذاتی رائے ہے کہ مغربی اتر پردیش میں ہائی کورٹ بنچ کا ہونا انتہائی ضروری ہے۔انہوں کہا کہ مغربی اترپردیش سے الہ آباد ہائی کورٹ اتنی زیادہ فاصلے پر ہے کہ اس کے مقابلے پڑوسی ملک پاکستان کی لاہور کی ہائی کورٹ ڈ نزدیک ہے۔ وزیر نے کہا کہ سستااور جلد انصاف پانا سب کا حق ہے اس لئے مغربی اترپردیش میں ہائی کورٹ بنچ کا قیام بیحد ضروری ہے۔ بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ راگھو لکھن پال شرما نے کہا کہ دیوبند پولیس نے فیس بک معاملہ میں جبراً مارکیٹ بند کرانے والے غیر سماجی عناصر کی مخالفت کرنے والے تاجروں کے خلاف جو جھوٹے مقدمے درج کئے ہیں وہ قابل مذمت ہیں۔ ایم پی نے کہا کہ برسر اقتدار پارٹی کے اشاروں پر تاجروں کے کے خلاف درج کئے گئے جھوٹے مقدموں کو ہر سطح پر مخالفت کی جائے گی۔اس موقع پر سابق رکن اسمبلی سکھبیرسنگھ پنڈیر، رامپال سنگھ ، چودھری راج پال سنگھ، منوج سنگھل ایڈوکیٹ ، نتن گپتا سمیت درجنوں کارکنان موجودرہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment