Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 09:15 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

یوم جمہوریہ کے پیش نظر جموں وکشمیر میں انتہائی سخت حفاظتی انتظامات

 

سری نگر؍جموں،20 جنوری (یو این آئی) یوم جمہوریہ کی تقریبات کے پیش نظر ریاست جموں وکشمیر بالخصوص گرمائی دارالحکومت سری نگر میں حفاظتی انتظامات انتہائی سخت کئے جارہے ہیں جبکہ سرمائی دارالحکومت جموں میں جنگجوؤں کے حملوں کے خطرے کے پیش نظر پہلے ہی سیکورٹی ہائی الرٹ ہے ۔ یوم جمہوریہ کے سلسلے میں وادی کشمیر میں سب سے بڑی تقریب بخشی اسٹیدیم جبکہ جموں میں سب سے بڑی تقریب مولانا آزاد اسٹیڈیم میں منعقد ہوگی۔ چونکہ ریاست میں اس وقت گورنر راج نافذالعمل ہے ، اس لئے ظاہری طور پر ریاستی گورنر این این ووہرا مولانا آزاد اسٹیڈیم جموں جبکہ وادی کشمیر کے ڈویژنل کمشنر روہت کنسل بخشی اسٹیڈیم سری نگر میں پرچم کشائی کی رسم انجام دیں گے ۔ دونوں اسٹیڈیموں (سری نگر اور جموں) میں یوم جمہوریہ کی تقریبات کے احسن انعقاد کیلئے گرد ونواح میں سیکورٹی کا سخت بندوبست کیا گیا ہے ۔کسی بھی ناگہانی واقعہ سے نمٹنے کیلئے بخشی اسٹیڈیم کے گردونواح میں ریاستی پولیس اور نیم فوجی دستوں کی بھاری نفری کو تعینات کیا گیا ہے جبکہ جموں کے مولانا آزاد اسٹیڈیم کے داخلی اور خارجی پوائنٹس پر گاڑیوں کی تلاشی کا عمل شروع کردیا گیا ہے ۔ قابل ذکر ہے کہ ملک کی راجدھانی دہلی میں منعقد ہونے والی یوم جمہوریہ کی تقریب میں امریکی صدر بارک اوباما بحیثیت مہمان خصوصی شرکت کرنے والے ہیں جس کے پیش نظر دہلی کے ساتھ ساتھ جموں وکشمیر میں سیکورٹی انتہائی سخت کردی گئی ہے کیونکہ فوج نے گذشتہ ہفتے جموں وکشمیر میں پشاور کے طرز پر حملے کا اندیشہ ظاہر کردیا۔فوج کے وائٹ نائٹ کور (16 کارپس) کے جنرل آفیسر کمانڈنگ(جی او سی) لیفٹیننٹ جنرل کے ایچ سنگھ نے دعویٰ کیا کہ جنگجو امریکی صدر بارک اوباما کے دورہ ہندوستان کے موقع پر جموں وکشمیر میں سافٹ ٹارگیٹس کے مرتکب ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے بتایا تھا کہ ہمارے پاس (فوج کے پاس) حملوں سے متعلق مصدقہ اطلاعات نہیں ہیں مگر ماضی میں انتہائی اہم شخصیات کے دورہ ہندوستان کے موقع پر تخریب کاری کے واقعات پیش آچکے ہیں۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ جنگجوؤں کی جانب سے امریکی صدر بارک اوبامہ کے دورہ ہندوستان کے موقع پر وادی کشمیر میں امن وقانون میں رخنہ ڈالنے کی کوششوں کو ناکام بنانے کیلئے تمام فیلڈ کمانڈروں کے لئے تازہ الرٹ جاری کردیا گیا ہے اور انہیں کہا گیا ہے کہ وہ صورتحال پر قریبی نگاہ بنائے رکھیں۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ اگرچہ وادی کشمیر میں سیکورٹی فورسز پہلے سے ہی الرٹ پر ہیں تاہم مختلف سیکورٹی ایجنسیوں کے فیلڈ کمانڈروں کو اپنے اپنے علاقوں میں صورتحال پر قریبی نگاہ رکھنے کی ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ 21 مارچ 2000 کو اُس وقت جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ کے چھٹی سنگھ پورہ میں نامعلوم بندوق برداروں نے 35 سکھوں کا قتل عام انجام دیا تھاجب اُس وقت کے امریکی صدر بل کلنٹن ہندوستان کے دورے پر آئے ہوئے تھے ۔ کسی بھی جنگجو تنظیم نے اُس قتل عام کی ذمہ داری قبول نہیں کی تھی جبکہ وادی کشمیر کے علیحدگی پسند لیڈروں کا ماننا رہا ہے کہ وہ قتل عام کشمیریوں کو بدنام کرنے کی ایک سازش کے تحت انجام دیا گیا تھا۔ بہر کیف چھٹی سنگھ پورہ واقعہ کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے وادی کشمیر کے اُن دیہات جن میں اقلیتی فرقوں سے وابستہ لوگ خاص طور پر کشمیری پنڈت اور سکھ اچھی خاصی تعداد میں رہتے ہیں، میں سیکورٹی انتہائی سخت کردی گئی ہے ۔ ایسے دیہات زیادہ تر جنوبی کشمیر کے شوپیان اور پلوامہ اضلاع اور وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام میں پڑتے ہیں۔ باخبر ذرائع نے بتایا کہ سیکورٹی ایجنسیاں سخت حفاظتی انتظامات یقینی بنانے میں کوئی دقیقہ نہیں چھوڑ رہی ہیں۔ اگرچہ یوم جمہوریہ کی تقریبات پانچ دن کی دوری پر ہیں لیکن سخت حفاظتی انتظامات کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ سری نگر اور وادی کے دوسرے اضلاع میں راہگیروں کی جامہ تلاشیوں اور گاڑیوں کی چیکنگ کا باضابطہ عمل شروع کردیا گیا ہے ۔مختلف اضلاع کو سری نگر سے جوڑنے والی سڑکوں پر سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں کو تعینات کردیا گیا ہے جو شہر کی طرف آنے والی گاڑیوں اور ان میں سوار مسافروں کی تلاشی لے رہے ہیں۔ مسافروں کی جامہ تلاشی لینے کے علاوہ اُن کے شناختی کارڈ بھی چیک کئے جارہے ہیں۔کئی ایک حساس مقامات پر مشتبہ افراد کی نقل وحرکت پر قریبی نگاہ رکھنے کیلئے بلیٹ پروف گاڑیاں تعینات کردی گئی ہیں۔ یوم جمہوریہ کی تقریبات کے حوالے سے جموں اور اس کے ملحقہ علاقوں میں بھی سیکورٹی سخت کردی گئی ہے جبکہ باضابطہ طور پر ہائی الرٹ جاری کردیا گیا ہے ۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ جموں میں سیکورٹی فورسز کی اضافی نفری تعینات کی گئی ہے ، چیک پوائنٹس قائم کردیئے گئے جبکہ مولانا آزاد اسٹیڈیم کے داخلی اور خارجی پوائنٹس پر گاڑیوں کی تلاشی کا عمل شروع کردیا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ حفاظتی اہلکاروں اور خاص طور پر لائن آف کنٹرل اور بین الاقوامی سرحد پر فوجی جوانوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ ڈیوٹی کے دوران چوکنا رہیں۔ انسپکٹر جنرل بی ایس ایف سرحدی جموں راکیش شرما نے یو این آئی کو بتایا کہ امریکی صدر بارک اوباما کے دورہ ہندوستان کے پیش نظر بین الاقوامی سرحد پر کڑی نگاہ رکھی جارہی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ فورسز کو الرٹ پر رکھا گیا ہے اور تخریب کاری کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کیلئے وسیع انتظامات کئے گئے ہیں۔ دریں اثنا انتظامیہ نے سری نگر میں یوم جمہوریہ منانے کی تقریبات کے لئے انتظاما ت کو حتمی شکل دے دی ہے ۔
سرکاری ترجمان کے مطابق بخشی سٹیڈیم سری نگر میں26جنوری کو یوم جمہوریہ منانے کی غرض سے انتظامات کا حتمی جائزہ لینے کی غرض سے پیر کے روز ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر فاروق احمد شاہ نے ضلع افسران کی ایک میٹنگ طلب کی تھی۔میٹنگ میں یوم جمہوریہ کی تقریبات احسن اور پرامن طریقے سے منانے کے سلسلے میں ضلع ترقیاتی کمشنر نے متعلقین سے تفصیل سے جانکاری حاصل کی۔اس موقعہ پر انہیں بتایا گیا کہ یوم جمہوریہ کی تقریبات پر محکمہ تعلیم کی طر ف سے کہا گیا کہ اس دن مختلف سکولوں کے 11دستے جن میں400 طلباء وطالبات شامل ہیں مارچ پاسٹ میں شرکت کریں گے۔اس کے علاوہ میٹنگ میں بتایا گیا کہ ان بچوں کے قیام وطعام کا انتظام یوتھ ہوسٹل سری نگر میں کیا جائے گا۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ مارچ پاسٹ میں جموں وکشمیر پولیس،سی آر پی ایف،فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز،آئی آر پی ،این سی سی ،فارسٹ پروٹیکشن پولیس اور دوسرے دستے حصہ لیں گے ۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے محکمہ تعلیم کے افسران سے کہا کہ وہ سکولی طلباء کے لئے ٹرانسپورٹ کا خصوصی انتظام رکھیں انہوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں سے کہا کہ وہ سیکورٹی کا مکمل انتظام رکھیں تاکہ کسی قسم کا ناخوشگوار واقعہ پیش نہ آسکے ۔انہوں نے تمام افسران سے کہا کہ وہ یوم جمہوریہ کی تقریبات کامیاب بنانے کے لئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لائیں اوراپنی حاضری کو اس دن یقینی بنائیں۔انہوں نے کہاکہ کسی بھی طرف سے اس ضمن میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ بخشی سٹیڈیم میںیوم جمہوریہ منانے کے سلسلے میں تیاریاں مکمل کرنے کے لئے 24جنوری صبح10بجے ایک فُل ڈریس ریہرسل کا انعقاد کیا جائے گا۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment