Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 09:07 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

سات فروری تک جنت ارضی میں بن سکتی ہے نئی حکومت


راجیہ سبھا کی چار سیٹوں کیلئے ہونے والے انتخابات سے قبل قیاس آرائیوں کا بازار گرم ، بی جے پی سے جلد شروع ہوگی رسمی بات چیت : پی ڈی پی ، سرکار میں شامل ہوکر غلام نبی آزاد کیلئے ایک عدد سیٹ کی متلاشی کانگریس ، ہمیں فی الحال کوئی سیٹ نہیں مل رہی ہے : سیف الدین سوز
محمداحمد
نئی دہلی ،20جنوری( ایس ٹی بیورو)جموں اور کشمیر میں 7 فروری کو راجیہ سبھا کی چار نشستوں کیلئے ووٹنگ ہونی ہے اور ایسے میں بی جے پی اورپی ڈی پی کے درمیان اس سے قبل ہی حکومت بنانے کو لے کر قیاس آرائیوں کا بازار گرم ہو گیا ہے۔ دونوں پارٹیوں کے لیڈروں نے بھی اس سلسلے میں غیر رسمی بات چیت کی بات قبول کی ہے ۔ پی ڈی پی کے چیف ترجمان نعیم اختر نے میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ بی جے پی کے ساتھ رسمی بات چیت ابھی شروع ہونی ہے۔ ہاں، غیر رسمی سطح پر بات چیت جاری ہے۔ریاستی اسمبلی میں پی ڈی پی کے پاس 28 ایم ایل اے ہیں اور بی جے پی کے پاس 25 رکن اسمبلی ہیں۔ نیشنل کانفرنس کو انتخابات میں 15 سیٹیں ملی ہیں اور اسکی سابق اتحادی کانگریس کو 12 سیٹیں ملی ہیں۔ وہیں سات نشستیں چھوٹی جماعتوں اور آزاد امیدواروں کے کھاتہ میں گئی ہیں۔
پی ڈی پی اور بی جے پی کے درمیان کسی قسم کا اتحاد ہوگا یا نہیں، اسے لیکر جاری رسہ کشی کے بعد پی ڈی پی کی صدر محبوبہ مفتی نے میڈیا سے بات چیت کیلئے صرف نعیم اختر کو اختیار دیا ہے۔ وزیر اعظم کے دفتر میں وزیر مملکت جتندر سنگھ نے نامہ نگاروں سے کہا،’آرٹیکل 370 اور اافسپا کو لیکر پارٹی کے ذمہ دار لوگوں کی طرف سے بات چیت چل رہی ہے‘۔پی ڈی پی کے سرپرست مفتی محمد سعید نے اتوار کو گورنر این این ووہرا سے ڈنر کے دوران دو گھنٹے تک ملاقات کی تھی۔ انکی اس ملاقات سے قیاس آرائیاں لگائی جا رہی ہیں کہ مفتی محمد نے گورنر ووہرا سے حکومت بنانے کے امکانات پر بحث کی۔ تاہم پی ڈی پی کے ترجمان ان سوالات سے بچتے ہوئے نظر آئے۔ اختر نے کہاکہ ،’ہاں !مفتی صاحب نے گورنر سے ملاقات کی تھی، لیکن ہم جلدی میں نہیں ہیں‘۔ریاست کی سبکدوش ہونے والی حکومت کی مدت پیر کو ختم ہو گئی ۔ 12 ویں اسمبلی کیلئے ریاستی محکمہ قانون نوٹیفکیشن جاری کر چکا ہے، لیکن ابھی تک منتخب ارکان نے حلف نہیں اٹھایا ہے۔سیاسی گلیاروں میں بحث ہے کہ اس ماہ کے بعد کبھی بھی بی جے پی اور پی ڈی پی کے اتحاد کا اعلان ہو سکتا ہے۔ دونوں پارٹیوں کو اپنی حکمت عملی واضح کرنی ہوگی کہ وہ راجیہ سبھا کا الیکشن ایک ساتھ لڑنا چاہتے ہیں یا الگ الگ۔ ادھر کانگریس پارٹی کے ریاستی صدر سیف الدین سوز نے سیاسی تقدیرسے بات چیت میں کہا کہ ’ہمارے پاس 12ممبر ہیں ۔ ہمیں کوئی سیٹ نہیں ملنے جارہی ہے ۔ آگے کس طرح کا اتحاد ہوگا یہ کہنا مشکل ہے ۔ تاہم انہوں نے کہا کہ ’ آپ انتظار کیجئے وقت ہر چیز کا فیصلہ کردے گا‘ ۔ خبروں کے مطابق کانگریس کے غلام نبی آزادکی یہ خواہش تھی کہ کانگریس کی حمایت سے وادی میں سرکار بن جائے اور ایک عدد راجیہ سبھا کی سیٹ انہیں مل جائے ، لیکن بہ ظاہر ایسا نہیں نظر آرہا ہے ، مگرپی ڈی پی نے اب تک کانگریس کی حمایت لینے سے انکار بھی نہیں کیا ہے ۔ ایسے میں آئندہ دن سیاسی اعتبار سے بڑے دلچسپ ہوسکتے ہیں ۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment