Today: Wednesday, September, 26, 2018 Last Update: 10:30 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

BUSINESS NEWS   

ایس بی آئی کا اسلامک ایکوئیٹی فنڈ جاری کرنے کا فیصلہ

ایس بی آئی کا اسلامک ایکوئیٹی فنڈ جاری کرنے کا فیصلہ

 

یکم دسمبر کو لانچ ہونے کی توقع ، شریعت کے مطابق کاروبار کرنے والوں کیلئے بینک کا تاریخی قدم

نئی دہلی ،27نومبر( ایس ٹی بیورو)اسٹیٹ بینک آف انڈیا اگلے ماہ اسلامک ایکوئٹی فنڈ جاری کرنے جا رہا ہے۔ ملک بھر کے 17 کروڑ مسلمانوں کیلئے یہ سرمایہ کاری کا اچھا موقع ہو گا۔ سیکورٹی اینڈ ایکسچینج بورڈ آف انڈیا (سیبی) نے حال ہی میں اسٹیٹ بینک آف انڈیا اور چین دیگر باہمی فنڈ کو شریعت فنڈ جاری کرنے کی اجازت دی۔گذشتہ روز اسٹیٹ بینک آف انڈیا کے ایک اہلکار نے کہا کہ بینک کو امید ہے کہ وہ اس فنڈ میں ایک ارب روپے کی سرمایہ کاری کرے گا۔ اس کی شروعات یکم دسمبر سے ہوگی ۔ذرائع کا ماننا ہے کہ کافی تعداد میں مسلمان اپنے مال کی سرمایہ کاری نہیں کرتے ہیں ، کیونکہ شریعت کے قانون کے مطابق سود لینا اور دینا دونوں حرام سمجھا جاتا ہے۔اس فنڈ میں ان کمپنیوں کے حصص نہیں رکھے جائیں گے جو شراب، تمباکو، جوئے اورکسینووغیرہ کے کام میں لگی ہوئی ہیں۔ اتنا ہی نہیں وہ مالی ادارے جو سود کا کا رو بار کرتے ہیں، اس سے وہ دور رکھے جائیں گے۔ ایس بی آئی میچول فنڈ کے سی ای او دنیش کھارا نے کہا کہ یہ ایسا ایکوئٹی فنڈ ہوگا جس میں چھوٹے، درمیانے اور بڑے سائز کے کیپٹل فنڈ ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ شریعت کے معیار پر کھرا اترنے والے فنڈ کی ہم نشاندہی کریں گے۔ ہندوستان کے اسٹاک ایکسچینجوں میں 600 سے 700 ایسی کمپنیاں ہیں جو شریعت قانون کے تحت کام کرتی ہیں۔اس فنڈ کو آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ سے اجازت ملی ہوئی ہے ۔ گزشتہ سال مئی میں بامبے اسٹاک ایکسچینج نے ملک کا پہلا شریعت انڈیکس لانچ کیا تھا جو شریعت کے مطابق چلنے والی کمپنیوں کے اسٹاک سے منسلک تھا۔ ان کمپنیوں نے 46 فیصد کا ریٹرن دیا تھا جبکہ بی ایس ای انڈیکس نے 41 فیصد کا۔اسلامی ملکوں کو چھوڑ کر بھارت دوسرا ملک ہے جس نے شریعت سے منسلک ایک فنڈ جاری کیا ہے۔ اس کے پہلے انگلینڈ نے اسلامی بانڈ جاری کیا تھا۔

...


Advertisment

Advertisment