Today: Sunday, September, 24, 2017 Last Update: 05:00 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

   

کیجریوال کی سیاست قابل اعتبار نہیں

کیجریوال کی سیاست قابل اعتبار نہیں

 

نریندرمودی اور بی جے پی کی فرقہ وارانہ سیاست کا جواب صرف کانگریس ہی دے سکتی ہے:م۔افضل

جاویدقمر

نئی دہلی،19مارچ،ایس ٹی بیورو: سابق ممبرپارلیمنٹ ،سفارتکار اور کانگریس کے سرکردہ لیڈرم۔افضل نے کہاہے کہ کیجریوال کی سیاست قابل اعتبار نہیں ہے۔ ان کی سیاست سے’’انارکی‘‘(بدامنی اور انتشار) کو تقویت مل رہی ہے۔ وہ ایشوز پر ٹکتے نہیں بلکہ اپنے فائدے کے حساب سے انہیں بدلتے رہتے ہیں۔ م۔افضل نے کہا کہ امیٹھی میں راہل گاندھی کے خلاف امیدوار اتارنے میں تو انہوں نے بڑی جلد بازی کا مظاہرہ کیا لیکن مودی کے خلاف الیکشن لڑنے کے معاملہ میں وہ رائے شماری کی بات کررہے ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ اگر وہ مودی کے خلاف الیکشن لڑنے کا فیصلہ عوام کی رائے لینے کے بعد کریں گے تو امیٹھی میں کماروشواس کی امیدوار ی کے اعلان سے قبل اس طرح کی رائے شماری کیوں نہیں کروائی گئی؟ انہو ں نے کہا کہ اس سے ان کی ڈرامائی سیاست کا راز فاش ہو چکا ہے۔ م۔افضل نے مزید کہا کہ مودی اور بی جے پی کی فرقہ وارانہ سیاست کا جواب دینے کی اہلیت تنہا کانگریس رکھتی ہے اور اس کے لئے اسے بیساکھی کی ضرورت نہیں ہے۔ مودی کی بنارس سے امیدواری کے حوالہ سے انہوں نے کہا کہ مودی کو بنارس سے لڑاکر بی جے پی اترپردیش کی فرقہ وارانہ خیرسگالی کو نقصان پہنچانے کے ساتھ ساتھ عوام کو فرقہ وارانہ خطوط پر تقسیم بھی کرنا چاہتی ہے۔ انہو ں نے کہا کہ مسلمان اب سیاسی طور پر بالغ ہوچکا ہے اس لئے وہ جوبھی سیاسی فیصلہ کرتا ہے وہ جذبات سے نہیں عقل سے کرتا ہے۔م۔افضل نے کہا کہ اترپردیش میں مسلم ووٹ فیصلہ کن طاقت رکھتا ہے اور بی جے پی واس کی حواری تنظیمیں مسلم ووٹ کی اس طاقت کو منتشر کرنا اور توڑنا چاہتی ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ ہم پرامید ہیں کہ پچھلے پارلیمانی الیکشن کی طرح اس بار بھی مسلمان نہ صرف متحدہوکر ووٹنگ کرے گا بلکہ اپنی ٹیکٹیکل ووٹنگ سے وہ فرقہ پرستوں کو بھی دھول چٹادے گا-

...


Advertisment

Advertisment